’’ حنیف عباسی ، دانیال عزیز اور طلال چوہدری اب مسلم لیگ (ن) نہیں بلکہ ۔۔۔‘‘ آئندہ چند روز میں کیا ہونے والا ہے؟ ارشاد بھٹی نے بڑی خبر بریک کر دی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) تجزیہ کار ارشادبھٹی نے کہاہے کہ اگر جسٹس قیوم آج ہوتے تو حنیف عباسی کبھی نہ چھوٹ سکتے ، حنیف عباسی ، دانیا ل عزیز، طلال چودھری مسلم لیگ ن میں ہیں لیکن یہ مسلم لیگ ن نہیں ہیں۔تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام

میں گفتگو کرتے ہوئے ارشاد بھٹی نے کہاکہ حنیف عباسی کے حق میں جو فیصلہ رات کی تاریکی میں آیا تھا ، اس پر تنقید کی تھی اور جوفیصلہ دن کی روشنی میں آیاہے ، اس کی تعریف کی جانی چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ اگر جسٹس قیوم آج ہوتے تو حنیف عباسی کبھی چھوٹ نہ سکتے ، حنیف عباسی ، دانیا ل عزیز، طلال چودھری مسلم لیگ ن میں ہیں لیکن یہ مسلم لیگ ن نہیں ہیں، مسلم لیگ ن ہاﺅس آف شریفس کا نام ہے ، ہاﺅس آف شریفس مشکل میں ہے تو مسلم لیگ ن مشکل میں ہے ، ہاﺅس آف شریفس آسانی میں ہیں تو مسلم لیگ ن آسانی میں ہے ۔دوسری جانب پروگرام میں شریک سلیم صافی نے کہا کہ حنیف عباسی کا کیس باقی سیاسی لیڈر وں کے کیس سے مختلف ہے ، یہ جس دور کا کیس تھا تو اس وقت وہ حکومت میں نہیں تھے ، ان کے ساتھ جو ننگی زیادتی کی گئی ، اس کی عدالتی تاریخ میں مثال نہیں ملتی ، سالوں سے کیس چل رہا تھا ،اس پر کوئی فیصلہ ہورہا تھا اور نہ سماعت ہورہی تھی لیکن جب الیکشن آگئے تو رات کوفیصلہ سنا دیا گیا ، یہ فیصلہ نا انصافی اور ظلم پر مبنی فیصلہ تھا ۔ان کا کہنا تھا کہ اب ان کو ریلیف ملاہے ، یہ بھی کافی نہیں ہے ، سو ال یہ ہے کہ ان کے ساتھ جو زیادتی کی گئی ہے ، اس پرہمارے ہاں کوئی ایسا نظام نہیں ہے کہ جس نے زیادتی کی ہو، اس سے کوئی باز پرس کی جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے اچھے دن آرہے ہیں اور مکافات عمل کے تحت تحریک انصاف والوں کے برے دن آنیوالے ہیں۔