آسیہ بی بی بریت پر نظر ثانی کیس : نئے چیف جسٹس نے آتے ہی اہم ترین کیس کا فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)آسیہ بی بی کی بریت کے خلاف نظر ثانی اپیل کو پاکستان کے سب سے بڑی عدالت سپریم کورٹ نے سننے کے بعد خارج کر دیا پاکستان کے سینئر جج آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی ۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جھوٹے گواہوں کو عمر قید

کی سزا ہوسکتی ہے ۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے آسیہ بی بی کی بریت کے خلاف نظرثانی درخواست کی سماعت کی۔ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ریمارکس جاری کرتے ہوئے کہا کہ جھوٹے گواہوں کوعمر قید کی سزا ہو سکتی ہے ۔ مقدے کی حساسیت کے باعث اتنی تفصیل سے سن رہے ہیں ۔ وکیل فیصلے میں کسی غلطی کی نشاندہی نہیں کر سکے ۔درخواست گزار ایک بھی وجہ نہیں بتا سکا جس کی بنیاد پر نظر ثانی کی جا سکے ۔سماعت کے دوران وکیل غلام مصطفی ایڈوکیٹ نے کہا کہ معاملہ مسلم امہ کا ہے، عدالت مذہبی سکالرزکو بھی معاونت کےلئے طلب کرے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا اسلام کہتا ہے کہ جرم ثابت نہ ہونے پرسزا دی جائے، عدالت نے فیصلہ صرف شہادتوں پردیا ہے، کیا ایسی شہادتیں قابل اعتبار نہیں اور اگرعدالت نے شہادتوں کاغلط جائزہ لیا تودرستگی کریں گے۔وکیل غلام مصطفی نے کہا کہ سابق چیف جسٹس نے کلمہ شہادت سے فیصلہ کروایا، جسٹس ثاقب نثار نے کلمہ شہادت کا غلط ترجمہ کیا جس پرچیف جسٹس نے کہا کہ سابق چیف جسٹس اس وقت بینچ کا حصہ نہیں، وہ آپ کی بات کا جواب نہیں دیں گے اورلارجر بینچ کاکیس بنا ہوا تو ضروربنے گا۔