بریکنگ نیوز: تحریک انصاف کے اہم ترین رہنما و رکن قومی اسمبلی کے گھر پر راکٹ حملہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک )تحریک انصاف کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی حلقہ این اے 40 گل داد خان کے گھر پر راکٹ حملہ ہوا ۔تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا واقعہ گزشتہ رات 12 بجے تحصیل خارکے علاقے شنڈئی موڑ باجوڑ سپورٹس کمپلیکس کے قریب پیش آیا۔قومی اخبار کی رپورٹ کے مطابق حملے سے ان کے

رہائش گاہ کے مین گیٹ کو جزوی طور پر نقصان پہنچا ہے۔تاہم حملے میں وہ اور ان کے خاندان محفوظ رہیں۔رکن قومی اسمبلی گل داد خان نے راکٹ فائر ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ہم سب خیریت سے ہیں فاٹا مرجر کے بعدچونکہ علاقے کے عوام تعمیر و ترقی کے دور میں شامل ہو چکیں ہیں،اس لئے ترقی کے دشمن عناصر نہیں چاہتے کہ علاقے کے عوام ترقی کریں انہیں تعلیم،صحت اور روزگار کے مواقع مل سکیں۔انہوں نے مزید کہا کہ علاقے کے ترقی کا پہیہ اسی طرح چلتا رہے گا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق عالمی سطح پر جبری برطرفیوں کے خلاف انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن کا خصوصی سیشن ہوا، وزیراعظم عمران خان نے عالمی فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ملک کو کورونا سے نمٹنے کیلئے مشترکہ لائحہ عمل کی ضرورت ہے، ہمیں دو قسم کے چیلنجز کا سامنا ہے، ایک طرف کورونا کاپھیلاؤ روکنا اور دوسری طرف معیشت کوسنبھالنا تھا۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان نے غیررجسٹرڈ لیبر کی بڑی تعداد ہے اور غیر روایتی معیشت میں لوگوں کی بڑی تعداد کام کرتی ہے، وبا کےدوران لاک ڈاؤن سے مزدور طبقہ زیادہ متاثر ہوا، چیلنجز سے نمٹنےکیلئے ہم اسمارٹ لاک ڈاؤن کی طرف آئے ، پہلے ہم نے عوامی مقامات کو بند کیا پھر کنسٹرکشن کا شعبہ کھولا، عوامی اجتماعات پرپابندی لگائی ، اسکول کالجزبند کیے۔عمران خان نے کہا کہ غیرروایتی لیبر کی مدد کیلئے کیش ایمرجنسی پروگرام شروع کیا ، کیش پروگرام کے ذریعےغربت کی لکیر سے نیچے لوگوں کی مدد کی ، پاکستان کی تاریخ میں نچلے طبقےکیلئےاتنابڑا کیش پروگرام نہیں ہوا۔ان کا کہنا تھا کہ سخت لاک ڈاؤن کی وجہ سے غربت میں اضافہ ہوا ، حتمی طورپر کوئی نہیں کہہ سکتا کہ معیشت کب سنبھلے گی، ہماری ترجیح مزدور طبقے کا تحفظ کرنا ہے۔وزیرزعظم نے کہا کہ چھوٹی اور درمیانی صنعتیں مشکل کا شکار ہیں،انھیں بچانا ہوگا، تمام ممالک کورونا کے باعث مشکل صورتحال سے گزررہےہیں، دنیا بھر کے ممالک سے اپیل ہے مزدور طبقے کا خیال رکھیں۔عمران خان کا کہنا تھا کہ بھارت میں سخت لاک ڈاؤن کی وجہ سے غربت میں اضافہ ہوا ، مزدورطبقے کے تحفظ کیلئےملکر اقدامات کرنا ہوں گے۔خیال رہے آئی ایل او کا سیشن پاکستان کی دراخواست پر بلایا گیا ہے، زلفی بخاری نے اوورسیز پاکستانی محنت کشوں کی بیروزگاری کا معاملہ اٹھایاتھا۔