’پولیس والوں نے گولیاں چلائیں اور بڑے پاپا مرگئے۔‘ بزرگ شہری کی لاش کے اوپر بیٹھے 3 سالہ بچے نے واقعے کا آنکھوں دیکھا حال سُنا دیا

مقبوضہ کشمیر (ویب ڈیسک) مقبوضہ کشمیر کے علاقہ سوپور میں بھارتی سرکاری دہشگردوں کی جانب سے ظلم و ستم کی انتہا کر دی گئی جب3 سالہ بچے کے سامنے اس کے نانا کو فائرنگ کر کے شہید کر دیا گیا۔ بھارتی کو یہاں نہ روکاگیاتو اس کے بھیانک نتائج نکلیں گے۔

اقوام متحدہ سمیت انسانی حقوق کے اداروں کو اس ظلم کا نوٹس لینا چاہئیے۔ مقبوضہ کشمیر میں سیکیورٹی فورسز اور عسکریت پسندوں کے درمیان جھڑپ کی زد میں آ کر جاں بحق ہونے والے بزرگ شہری کی لاش کے اوپر بیٹھے 3 سالہ بچے نے واقعے کا آنکھوں دیکھا حال سُنا دیا۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر زیر گردش ویڈیو میں جھڑپ کے دوران معجزانہ طور پر بچنے والے 3 سالہ عیاد سے ان کے گھر کی کوئی خاتون واقعے کا حال پوچھ رہی ہیں۔ سوشل میڈیا پر زیر گردش عیاد کی20 سیکنڈ پر مشتمل بات چیت کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے۔ ویڈیو میں یہ عیاد سے خاتون پوچھ رہی ہیں کہ ” بڑے پاپا تھے نا صبح آپ کے ساتھ ، ان کے ساتھ کیا ہوا؟ عیاد نے خاتون کو جواب دیتے ہوئے کہتا دکھا دے رہا ہے کہ پولیس والے نے گولی ماری اور وہ مر گئے ، وہ مرگیا تھا۔ ویڈیو میں خاتون نے پوچھتی ہے کہ بڑے پاپا کو کس نے مارا؟ 3 سالہ عیاد نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ پولیس والے نے ٹھک ٹھک کیا ۔ ننھے عیاد کو اونچی آواز میں ٹھک ٹھک کہتے ہوئے دیکھا اور سنا جا سکتا ہے۔ گزشتہ روز سے وائرل بھارتی اقواف کی معصوم کشمیریوں پر جاری جارحیت کی ایک اور تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ” کشمیریوں کی حآلت زار کو اس تصوید سے بہتر کوئی چیز بیان نہیں کر سکتی”۔ شاہد آفریدی نے لکھا کہ ” ایک بچہ اپنے نا نا کے گولیوں سے چھلنی جسم اورر فوجوں کے مابین پھنس گیا”۔