بھارت کے برے دن شروع:چین کیساتھ سرحدی تنازعے کے حل کیلئے روس اور امریکا نے بھارت کی مدد کرنے سے انکار کردیا

نئی دہلی (ویب ڈیسک) چین کیساتھ سرحدی تنازعے کے حل کیلئے روس اور امریکا نے بھارت کی مدد کرنے سے انکار کردیا، مودی سرکار کی منتیں کسی کام نہ آئیں، امریکی اور روسی قیادت نے دونوں ممالک کے تنازعے میں مداخلت کرنے سے معذرت کر لی۔ تفصیلات کے مطابق چینی فوج سے مار کھانے کے بعد

بھارت کو ایک مرتبہ پھر منہ کی کھانا پڑ گئی ہے۔چینی فوج کے ہاتھوں اپنے فوجیوں کی ہلاکت کے بعد مودی سرکار پر سکتہ طاری ہے۔ نریندر مودی کی حکومت اب تک چین کو کوئی جواب نہیں دے پائی۔ چین کی جانب سے جارح حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے لداخ پر اپنا حق جتایا گیا ہے۔ چین نے بھارت کو واضح پیغام دیا ہے کہ اپنی فوج کو قابو میں رکھو ورنہ اب پہلے سے زیادہ سخت جواب دیا جائے گا۔چین کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج نے مذاکراتی عمل کے دوران وعدہ خلافی کرتے ہوئے چین کے زیر کٹرول علاقوں پر حملہ کیا، جس کے جواب میں چینی فوج نے کاروائی کی۔اس تمام صورتحال میں بھارت نے اپنے دوست ممالک امریکا اور روس سے مدد مانگ لی۔ بھارت کی جانب سے ان دونوں ممالک سے اپیل کی گئی کہ وہ چین کیساتھ بگڑنے ہوئے معاملات کو بہتر بنانے میں بھارت کی مدد کریں۔ تاہم امریکا اور روس نے بھارت کو اس کی توقعات کے برعکس جواب دیا ہے۔ دونوں ممالک کی حکومتوں نے بھارت اور چین کے تنازعے کے حل کیلئے براہ راست مداخلت کرنے سے معذرت کر لی ہے۔بتایا جا رہا ہے کہ امریکا اور روس سے مدد نہ ملنے کے بعد نریندر مودی سرکار مکمل طور پر تنہاء ہوگئی ہے۔ مودی کو جہاں کسی بھی بیرونی امداد سے محروم ہونا پڑا ہے، وہیں اندرونی طور پر بھی بھارت کی حکومت کو عوام اور اپوزیشن جماعتوں کے شدید دباو کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ واضح رہے کہ پیر کی شب کو لداخ میں ہونے والے جھڑپوں کے دوران چینی فوج نے 20 بھارتی فوجیوں کو ہلاک کر دیا۔ بھارت اپنے فوجیوں کی ہلاکت کی تصدیق کر چکا، جبکہ کئی بھارتی فوجی تاحال لاپتہ بھی ہیں۔