بھارتی فوجی آپس میں ہی لڑ پڑے، ایک دوسرے پر فارئنگ کر دی، کئیں ہلاک

چھتیس گڑھ(نیوز ڈیسک) بھارتی فوجی ذہنی الجھن، نیند کی کمی اور دباؤ کی وجہ سے نہ صرف خودکشیاں کر رہے ہیں بلکہ اپنے ہی ساتھیوں کو بھی مار رہے ہیں، ایسے ہی ایک واقعے میں دو فوجی ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا۔

بھارتی فوج مسلسل چار ماہ سے مقبوضہ کشمیر کے محلوں، مارکیٹوں اور مساجد کا محاصرہ کیے ہوئے ہے۔ اس وجہ سے وادی کشمیر اور جموں و لداخ کے مسلم اکثریتی علاقوں میں خوف و دہشت کا ماحول اور غیر یقینی صورتحال بدستور برقرار ہے۔

بھارتی فوجی بھی اب محاصرے اور کرفیو سے تنگ آچکے ہیں، وہ کشمیر سے جان چھڑانا چاہتے ہیں۔ حال ہی میں سنٹرل آرمڈ پولیس فورس کی 72 کمپنیاں کشمیر میں بے یقینی کی صورتحال کو دیکھ کر واپس آنے کو تیار ہیں، ان حالات میں بھارتی فوجی ذہنی اذیت میں مبتلا ہوچکے ہیں، اور آپس میں ہی جھگڑنا شروع کردیا اور ایک دوسرے کی جان کے دشمن بن گئے۔

اسی حوالے سے بھارت کی ریاست چھتیس گڑھ میں ایک واقعہ پیش آیا ہے، نارائن پور گھاٹی کیمپ میں تعینات فوجیوں کے مابین جھگڑے میں ایک جوان نے ساتھی جوانوں پر فائرنگ کردی جس سے دو جوان ہلاک اور ایک جوان شدید طور پر زخمی ہوگیا۔

ذرائع کے مطابق فوجیوں کے مابین تنازعہ معمولی بات پر ہوا تھا جس میں ایک پلاٹون کمانڈر اور ایک حوالدار کی موت واقع ہوگئی جبکہ ایک پلاٹون کمانڈر کو شدید زخمی حالت میں علاج کے لئے رائے پور روانہ کردیا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے میڈیا کے مطابق دراصل معاملہ سی اے ایف نویں بٹالین کا تھا، گذشتہ رات فوجیوں کے مابین کسی بات پر جھگڑا ہوگیا تھا۔ بات تلخ کلامی سے ہوتی ہوئی ہاتھا پائی تک پہنچ گئی اور معاملہ اس حد تک ہوگیا کہ ایک جوان نے اپنی سروس رائفل سے ساتھی فوجیوں پر فائرنگ کردی۔

گولی لگنے کی وجہ سے دو جوانوں نے موقع پر ہی دم توڑ دیا جبکہ ایک جوان بری طرح زخمی ہوا ہے، زخمی جوان کو بہتر علاج کے لئے رائے پور ریفر کردیا گیا ہے۔