ان صحافیوں کی ساکھ پوری دُنیا میں متاثر ہوئی ہے۔۔!! پاکستانی صحافیوں کے وزیر اعظم عمران خان پر براہ راست حملے، بین الاقوامی خبر رساں ادارے ’گلف نیوز‘ نے پاکستانی میڈیا کو آڑھے ہاتھوں لے لیا

لاہور( نیوز ڈیسک) کورونا وائرس پر پاکستانی میڈیا کی سیاست کرنے کی کوششیں ، مشہور بین الاقوامی خبر رساں ادارے نے پاکستانی میڈیا کو آڑھے ہاتھوں لے لیا، حکومتی اقدامات کی تعریف ۔

تفصیلات کے مطابق مشہور خبر رساں ادارے ” گلف نیوز” نے اپنے اداریے میں پاکستانی میڈیا کو آڑھے ہاتھوں لیا ہے، اداریے کے مطابق “بہت سے ممالک میں میڈیا کا ایک نکاتی ایجنڈا ہے، کورونا وائرس سے بچاؤم لیکن پاکستان میں ، میڈیا میڈیا نے اس پر ایک نیا ایجنڈا تششکیل دیا ہے کہ کورونا وائرس پر سیاست کیسے کریں اور کس طرح حکومتی اقدامات پر تنقید کی جائے۔

اداریے میں چند روز قبل سینئر صحافیوں کی وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کا بھی ذکر کیا گیا، جس میں کہا گیا کہ بریفنگ میں صحافی یہ جانتے ہہی نہیں تھے کہ یہ کورونا وائرس سے متعلق بریفینگ ہے ، کیونکہ پاکستانی صحافی حضرات نے جو سوال پوچھے ہیں ان میں سے بیشتر سوالات طنزیہ ، سنجیدہ اور مذاق اڑانے یا مذموم کرنے کے لئے تھے۔صحافیوں نے یہ بھی ملحوظ خاطر نہیں رکھا کہ کم از کم ملک کے وزیر اعظم کے ساتھ بات چیت کے لئے کیا اقدار ہیں ، انہیں ہی اپنا لیا جائے۔

اداریے میں مزید لکھا گیا کہ جب دنیا ایک صدی کی وبائی وبائی بیماری میں مبتلا ہے، دنیا دہشت میں مبتلا ہے نوجوان ، بوڑھے ، امیر اور کمزور ، صحتمند اور کمزور امتحان لڑنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بین الاقوامی میڈیا نے اپنی تمام تر کوریج اور رپورٹنگ کورونا پوائرس پر کر رہا ہے لیکن 24 مارچ کو پاکستان کے میڈیا ایونٹ میں سوالات اور تبصرے تھے جن کا تعلق کورونا وائرس سے نہیں تھا۔24 مارچ کو صحافی صر

انہوں نے کہا کہ جن سوالوں نے ٹویٹر کی شہ سرخیاں بنائیں وہ سب اپنا اپان شہرہ چمکانے کی کوشش میں تھے، وزیر اعظم پاکستان عمران خان پر براہ راست حملے کیے گئے ۔ انہیں سوالات نے پوری دنیا میں پاکستان صحافیوں پر سوالیہ نشان کھڑا کردیا ہے۔