کورونا وائرس کے شکار سعید غنی اس وقت کہاں اور کس حال میں ہیں؟ صوبائی وزیر بارے سنسنی خیز انکشاف ہوگیا

کراچی(ویب ڈیسک) کورونا وائرس نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے۔ پاکستان میں بھی داخل ہوتے ہی کورونا وائرس نے اب تک 1100 سے زیادہ افراد کو متاثر کر دیا ہے جبکہ 8 افراد ابھی تک اس کا شکار ہو کر ہلاک ہو چکے ہیں۔ کچھ دن قبل سندھ کے صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی میں

بھی کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی تھی جس کے وہ قرنطینہ میں چلے گئے تھے۔ایک نجی ٹی وی چینل پر ویڈیو لنک میں گفتگو کرتے ہوئے سعید غنی کا کہنا تھا کہ میری طبیعت بالکل ٹھیک ہے، ابھی تک کوئی علامات ظاہر نہیں ہوئیں اور بس کمرے میں رہنا تکلیف کا عمل ہے ۔ بات کرتے ہوئے ان کا مزید کہنا تھا کہ میری رپورٹ 22 مارچ کو آگئی تھی جس کے بعد میں نے 23 مارچ کو لوگوں کو بتایا، ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ بہت جلد میری ٹیسٹ رپورٹ منفی آ جائے گی اور میں صحت یاب ہو جاؤں گا۔انہوں نے بتایا کہ اب تک صحت یاب ہونے والے مریضوں کو 12 دن کا وقت لگا ہے، ،لیکن ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اگر میں اسی طرح احتیاط کرتا رہا تو اس سے پہلے ہی ٹھیک ہو جاؤں گا۔یاد رہے کہ پوری دنیا میں تباہی مچانے کے بعد مہلک کورونا وائرس نے اب پوری دنیا میں اپنے قدم جما لئے ہیں جس کے بعد ہر گزرتے دن کے ساتھ اس کی تباہی میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔پاکستان میں اب تک متاثری افراد کی تعداد1100 ہو گئی ہے جبکہ 8 افراد اس کا شکار ہو کر ہلاک ہو چکے ہیں۔حکومت کی جانب سے اسے روکنے کی ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔ اسی سلسلے میں ملک کےچاروں صوبوں میں مکمل لاک ڈاؤن کر دیا گیا تھا جس پر عمل کیا جا رہا ہے۔اس کے علاوہ حکومت کی جانب سے ملک بھر میں فوج تعینات کر دی گئی تھی تا کہ لوگو ں کو ان کے گھروں سے نکلنے سے روکا جا سکے۔ کورونا وائرس سے بچنے کا یہی ایک طریقہ ہے کہ لوگ ایک دوسرے سے دور رہیں تا کہ یہ مزید نہ پھیلے۔