نشے کے عادی طوطوں نے ات مچا دی ….. پورے علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا

بھارتی ریاست مدھیہ پردیش میں کسان اپنی افیون کی فصل بچانے کے لیے دن رات پہرہ دے رہے ہیں۔ افیون کے ان کھیتوں میں نشے کے عادی طوطوں نے حملہ کر دیا ہے۔نیموچ ضلع میں افیون کی پیداوار بارشوں کی و جہ سے پہلے ہی کافی متاثر ہوئی ہے۔رہی سہی کسر نشے کے عادی طوطے پوری کر رہے ہیں۔کسانوں کو حکام کی طرف سے افیون کی کاشت کے لیے مقرر کیا گیا کوٹہ کا ہدف حاصل کرنے میں بھی کافی مشکلات ہیں۔کسان لاؤڈ سپیکر اورپٹاخے

استعمال کر کے طوطوں کو بھگانے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن طوطوں پر کسی چیز کا اثر نہیں ہورہا۔طوطے دن میں اپنے مقرر کیے ہوئے اوقات میں درجنوں بار کھیتوں میں آتے ہیں۔پوست کے ایک پھول یا ڈوڈے سے 20 سے 25 گرام افیون پیدا ہوتی ہے لیکن طوطوں کا ایک بڑا جھنڈا ہر روز 30 سے 40 بار کھتیوں میں آ کر انہیں برباد کر رہا ہے۔بعض طوطے پورا ڈوڈا توڑ کر اپنے ساتھ اڑا لےجاتے ہیں اور دوسر درختوں پر بیٹھ کر افیون کھاتےہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ افیون پرندوں میں ایسے ہی اثر کرتی ہے جیسے انسان کافی یا سبز قہوہ پی کر ایک دم چست ہو جاتا ہے۔انسانوں کی طرح پرندے بھی اسے محسوس کرتے ہیں اور ا س کے عادی ہو جاتے ہیں۔افیون کے کھیتوں میں طوطوں کےحملوں کا یہ پہلا واقعہ نہیں۔ پچھلے سال راجھستان میں افیون کےکھیتوں پر طوطوں نے اسی طرح حملہ کیا تھا۔ اس سے پہلے 2015 میں چتٹور گڑھ اور پرتاب گڑھ میں بھی ایسے ہی واقعات سامنے آئے تھے۔