دبئی : کئی مہینوں سے مزے لوٹنےوالے جعلساز کو گرفتار کر لیا گیا ؟

دُبئی(ویب ڈیسک ) دُبئی پولیس نے ایک غیر مُلکی نوجوان کو جعل سازی کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ 28 سالہ فلپائنی نوجوان مفت پارکنگ کے مزے لینے کی خاطر کئی مہینے سے جعلی ٹکٹ تیار کرنے کا مرتکب پایا گیا۔ ملزم نے گرفتاری کے بعد اعتراف کر لیا کہ اُس نے یہ جعلی پارکنگ ٹکٹ خود ہی تیار کر کے اس کا پرنٹ نکال لیا تھا ۔

اس جعلسازی کا مقصد پارکنگ فیس کی ادائیگی سے بچنا تھا۔ ملزم نے بتایا کہ اس مقصد کے لیے اُس نے روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی جانب سے جاری کی گئی ایک پارکنگ ٹکٹ کا استعمال کیا۔ اس نے ٹکٹ کو کمپیوٹر میں کاپی کر کے اس کی جعلی کاپی تیار کی۔ اور پھر اسے ایک ٹرانسپیرنٹ سٹیکر لگانے کے بعد اسے اپنی کار پر چپکا دیا تاکہ اتھارٹی کے انسپکٹرز کو یہی گمان ہو کہ ملزم نے پارکنگ کا ٹکٹ لے رکھا ہے۔اس جعلی ٹکٹ کی تیاری میں ملزم نے ایک اور شخص کی مدد لینے کا بھی اعتراف کیا۔ روڈز اتھارٹی کے ایک انسپکٹر نے عدالت کو بتایا کہ وہ ایک روز اپنے معمول کی چیکنگ کی خاطرجمیرہ کے الوصل روڈ پر گشت پر تھا جب اُسے فلپائنی نوجوان کی گاڑی نظر آئی۔ اس گاڑی پر ٹکٹ تو لگا ہوا تھا مگر تحریر بالکل غیر واضح تھی۔ جس پر میں نے اتھارٹی کے پرمٹ سیکشن سے رابطہ کر کے اس ٹکٹ کی تفصیلات طلب کیں تو مجھے بتایا گیا کہ اس پارکنگ ٹکٹ کی مُدت ختم ہو چکی ہے اور فلپائنی نوجوان نے اس پارکنگ زون میں گاڑی کھڑی کرنے کے لیے کوئی پرمٹ نہیں بنوایا تھا۔جس پر میں نے فوری طور پر وہاں پولیس بُلوا لی۔ تھوڑی دیر میں ملزم بھی اپنی گاڑی کے پاس آیا تو پولیس نے اُسے جعل سازی اور دھوکا دہی کے الزام میں گرفتار کر کے اس کے خلاف بُر دُبئی پولیس اسٹیشن میں مقدمہ درج کر لیا۔ اس سلسلے میں روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی جانب سے بھی ایک خط موصول ہوا جس میں بتایا گیا کہ ملزم کے زیر استعمال پارکنگ ٹکٹ میں جعلسازی کر کے اسے دوبارہ قابلِ استعمال بنانے کی کوشش کی گئی تھی۔ اس مقدمے کا فیصلہ 28 جنوری 2020ء کو سُنایا جائے گا جس میں ملزم کو سزا سُنائے جانے کا قوی امکان ہے۔