کورونا کے دوران ہزاروں کم لڑکیا ں بغیر شادی کے حاملہ ۔۔۔لاک ڈاؤن کے دوران ان کو کس نے کس طرح استعمال کر کے چھوڑ دیا؟ حیرت انگیز انکشاف

نیروبی (ویب ڈیسک) کینیا میں کورونا کی عالمی وباءکے دوران کم عمر لڑکیوں میں حمل ٹہرنے کے واقعات میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوا ہے۔ غیر ملکی خبررساں ایجنسی نے اس حوالے سے ہزاروں متاثرہ کم عمر لڑکیوں میں سے چند سے انٹرویوز بھی کئے ہیں۔ ان لڑکیوں نے بتایا کہ انہیں شاپنگ کروانے کے بعد لڑکوں نے

ان کیساتھ ہم بستری کی اور اس دوران ان کے اصرار کے باوجود کنڈوم بھی استعمال نہیں کیا۔یہ لڑکیاں غریب گھرانوں سے تعلق رکھتی ہے تاہم اب حمل ٹہرنے کے بعد انہیں اپنے ہونے والے بچوں کے دودھ وغیرہ اور ان کی پرورش کی فکر لاحق ہوگئی ہے۔ کینیا میں کم عمر لڑکیوں میں حمل ٹہرنے کے واقعات ہمیشہ سے مسئلہ رہے ہیں اور اس کا تناسب دیگر ممالک کے مطابق میں کئی زیادہ ہے۔