اسکول کھولنے کا فیصلہ

کراچی (ویب ڈیسک) آل پرائیوٹ اسکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے چیئرمین طارق شاہ کہتے ہیں کہ جب مارکیٹیں کھلی ہیں تو تعلیمی ادارے بند کیوں ہیں؟ عید کے بعد اسکول کھولے جائیں۔ تفصیلات کے مطابق آل پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن نے چیف جسٹس آف پاکستان سے نوٹس لے کر اسکول کھلوانے کا مطالبہ کیا ہے۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین آل پرائیوٹ اسکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن طارق شاہ کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت نے 6 ماہ اسکول بند کرنے کی بات کر کے بے چینی پیدا کر دی۔ پریس کانفرنس کے دوران ان کا کہنا تھا کہ عید کے بعد اسکول کھولنے کی اجازت دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے والدین کو فیسوں میں 20 فیصد رعایت دی، چند اسکول ایسے ہیں جو رعایت نہیں دے رہے۔ واضح رہے کہ طارق شاہ نے وزیرِ تعلیم سے اپیل کی ہے کہ عید کے بعد اسکول کھولے جائیں، اسکول مسلسل بند رکھنے سے چھوٹے اسکول مالی بحران کا شکار ہیں۔امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمٰن سے ادارہ نورحق میں الائنس آف پرائیویٹ اسکول سندھ کے وفد نے چیئرمین علیم قریشی کی قیادت میں مٍلاقات کی اور لاک ڈاؤن میں اسکولوں کے مسائل کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا۔وفد میں الائنس آف پرائیویٹ اسکول سندھ کے جنرل سکریٹری حنیف جدون،فائنانس سکریٹری محمد وہاب،وائس چیئرمین شاہد خمیسہ، جوائنٹ سیکریٹری شکیل سیف ودیگربھی موجود تھے۔ملاقات میں پبلک ایڈ کمیٹی جماعت اسلامی کے صدر سیف الدین ایڈوکیٹ اور دیگر بھی موجود تھے۔حافظ نعیم الرحمٰن نے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت اسکولوں سمیت تمام تعلیمی ادارے کھولنے کے حوالے سے فوری اورواضح مؤقف کا اعلان کرے،اگر موجودہ صورتحال 2سے 3ماہ مزید برقراررہتی ہے تو سندھ حکومت اس حوالے سے بھی لائحہ عمل طے کرنے کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ میٹنگ کرے۔انہوں نے کہاکہ،اس ساری صورتحال میں جو فنڈز وفاقی اور صوبائی حکومت کے پاس آئے ہیں،ان سے اسکولوں کے نقصانات کی بھی تلافی کی جائے اور اسکولوں کو بلا سود قرضے دیئے جائیں۔انہوں نے کہاکہ موجودہ صورتحال میں والدین کے لیے بھی مشکل حالات ہیں اور وہ اسکول فیس ادا نہیں کرسکتے، والدین کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے فیسوں میں بھی کمی کی جائے۔