You are here
Home > خبریں > پاکستان کا وہ علاقہ اور حلقہ جہاں سےتاریخ میں پہلی بار ایک خاتون نے الیکشن لڑنے کے لیے درخواست جمع کرو ادی، یہ محترمہ کون ہیں اور ان کا تعلق کس جماعت سے ہے؟ جانیے

پاکستان کا وہ علاقہ اور حلقہ جہاں سےتاریخ میں پہلی بار ایک خاتون نے الیکشن لڑنے کے لیے درخواست جمع کرو ادی، یہ محترمہ کون ہیں اور ان کا تعلق کس جماعت سے ہے؟ جانیے

پاکستان کا وہ علاقہ اور حلقہ جہاں سےتاریخ میں پہلی بار ایک خاتون نے الیکشن لڑنے کے لیے درخواست جمع کرو ادی، یہ محترمہ کون ہے اور ان کا تعلق کس جماعت سے ہے؟ جانیے

دیر(ویب ڈیسک) دیر میں پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار تحریک انصاف کی حمیدہ شاہدہ نامی خاتون نے الیکشن لڑنے کا اعلان کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کی 70 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ،

دیر کی رہائشی حمیدہ شاہدہ نے این اے 5 اور پی کے 10 سے تحریک انصاف کے ٹکٹ کے حصول کے لئے درخواست جمع کروا دی ہے جس سے خواتین کے انتخابی عمل میں حصہ نہ لینے کی علاقائی روایت ٹوٹ گئی ہے جبکہ تحریک انصاف کے پارٹی ٹکٹ کی خواہشمند شاہدہ حامدہ الیکشن جیتنے کے لئے پرعزم ہیں ۔ جبکہ دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف نے نگراں سیٹ اپ کیلئےنام فائنل کرلئے، نگران وزیراعظم کیلئے عبدالرزاق داؤد ، تصدق جیلانی اور عشرت حسین کے نام تجویز کئے گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق سیاسی جماعتوں میں نگران وزیراعظم کے ناموں کیلئے مشاورت کا عمل جاری ہے تاہم پاکستان تحریک انصاف نے نگراں سیٹ اپ کیلئے نام فائنل کرلئے۔ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی کی جانب سے نگراں وزیراعظم کے لئے 3ناموں کوحتمی شکل دی گئی ہے، جن میں عبدالرزاق داؤد،تصدق جیلانی اورعشرت حسین کےنام تجویز کئے گئے ہیں۔عمران خان نے مشورے سے نگراں وزیراعظم کیلئے نام فائنل کیے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شاہ محمودقریشی تینوں نام خورشیدشاہ کو پیش کریں گے، عبدالرزاق داؤد پرویزمشرف کی کابینہ میں وزیر تجارت رہ چکے ہیں، تصدق جیلانی چیف جسٹس کی حیثیت سے خدمات انجام دے چکے ہیں جبکہ عشرت حسین1999سے 2006تک گورنراسٹیٹ بینک رہے۔

یاد رہے کہ اپوزیشن لیڈر اور پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما خور شید شاہ کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے نگران سیٹ اپ ماننے یا نہ ماننے سے کوئی فرق نہیں پڑتا، اخلاقی طور پر شاہ محمود قریشی اور شفقت محمود سے بات کی، کوشش ہوگی ایسا نام آئے جو سب کے لیے قابل قبول ہو۔خیال رہے کہ 30مئی 2018 کو موجودہ اسمبلی کی آئینی مدت ختم ہورہی ہے، آئین کی 18ویں ترمیم کے مطابق اگر کوئی حکومت اپنی آئینی مدت مکمل کرلے تو 60دنوں کے اندر انتخابات کروانا ضروری ہوتا ہے۔ انتخابات کی نگرانی کے لئے ایک نگران حکومت کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔اسمبلی کی آئینی مدت ختم ہونے سے قبل وزیراعظم اور قائدِ حزب اختلاف کو مل بیٹھ کر نگران وزیر اعظم کا انتخاب کرنا ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:مشرف سے معافی ۔۔۔۔ ڈاکٹر عبدالقدیر نے خود پر الزام لے کر کتنی بڑی قربانی دی ؟شیخ رشید کو سنائی جانے والی کوڑوں کی سزا کیسے ٹلی ؟ چوہدری شجاعت حسین کی کتاب “سچ تو ہے میں “تہلکہ خیز انکشافات

یہ بھی پڑھیں:پولیس گردی کی انتہا ۔۔۔ ڈیرہ غازی خان میں پنجاب پولیس کے فریادی خاتون کے ساتھ ایسے شرمناک سلوک کی تصویریں منظر عام پر آ گئیں کہ دیکھ کر آپ بھی شرم سے پانی پانی ہو جائیں گے

ٹاپ نیوز: ناقابل یقین خبر : ایک عادی مجرم پولیس کے تمام حربوں کے باوجود زبان سے کچھ بول کر نہیں دے رہا تھا ۔۔۔پھر تفتیشی کے منہ سے ایک ایسا جملہ نکل گیا کہ پاٹے خان نے اپنے تمام جرائم کا اعتراف کر لیا، یہ ایک جملہ کیا تھا ؟ آپ بھی پڑھیے


Top