بہتی گنگا میں ہاتھوں کے ساتھ سر پیر دھونا : بینظیر انکم سپورٹ کے گھن چکر میں خوبصورت غریب لڑکیوں کو گھیر گھار کر ان سے کیا کام لیے جاتے رہے ؟ معاشرے کو آئینہ دکھا دینے والا انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک) بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں میگا کرپشن سیکنڈل سے متعلق تحقیقات کا دائرہ کار مزید وسیع کرد یا گیا ہے۔ مالی امداد کے حصول کے لئے آنیوالی خوبرو خواتین سے خفیہ شادیاں کر کے مالی امداد کے کارڈز دینے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔ ذرائع کے مطابق بینظیر پروگرام میں

ایسے کیسز بھی سامنے آ چکے ہیں جنہوں نے خوبرو عورتوں سے شادیاں کر کے انہیں مالی امداد دی گئی۔ دوسری اور تیسری شادیوں کا سیکنڈل سامنے آنے پر ادارہ کے بااثر افسران ایک جانب نوکری سے محروم ہونے کے دہلیز پر پہنچ گئے تو دوسری جانب انکے گھروں میں بھی شدید لڑائیاں شروع ہو گئی ہیں۔ متعدد ایسے افسران و سٹاف کے لوگ شامل ہیں جنہوں نے اپنی شادیوں کو خفیہ رکھا ہوا تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ بی آئی ایس پی نے ایسے کرپٹ افراد کے خلاف عدم برداشت کی بنیاد پر کارروائی کرنے کے لیے ایک اعلیٰ سطعی کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے جس کی رپورٹ کی روشنی میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کی جائیگی۔ جنوبی پنجاب میں ہزاروں ایسے گھر بھی موجود ہیں جن کو ان کی بھینٹ چڑھا دیا گیا اور انکی امداد بند کر کے میگا بجٹ بھی بچانے کی خواہش درپے ہیں۔ اس حوالہ سے معلوم ہوا ہے کہ بھکر، لیہ، ڈی جی خان، کوٹ ادو، مظفر گڑھ سمیت دیگر متعدد اضلاع میںایسی خواتین کو بھی بھینٹ چڑھا دیا گیا جن کے نام ایک مرلہ زمین نہیں اور وہ کسمپرسی کی زندگی گزار رہے تھے۔ متعدد سینٹ ملازمین نے اپنے گھروںکو نوازنے کے لیے ایک ایک گھر میں چھ چھ افراد کو بھی نواز رکھا تھا اور جو کہ اس سے متعلق بھی فوری اقدامات کرنے کی ضرورت ہے اور حقداران کو انکے حق سے محروم کیا گیا..