’’پی آئی سی میں حسان نیازی شامل نہیں تھے ۔۔۔‘‘ویڈیو میں نظرآنے والے حسا ن نیازی کون نکلے؟ حکومت نےحسان نیازی کو کلین چٹ دے دی

لاہور (ویب ڈیسک) وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ پی آئی سی واقعے میں ن لیگ یا حسان نیازی شامل نہیں، حکومت ، عدلیہ، فوج اور اپوزیشن نے مل بیٹھ کر فیصلہ کرنا ہے کہ ہم نے اس ملک کو کس طرف لے کرجانا ہے،اسی طرح لڑتے رہنا ہے یاآبادی کی ترجیحات

کے مطابق فیصلے کرنے ہیں۔انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ واقعے سے نمٹنے کا ایک طریقہ یہ ہے کہ ہم اپوزیشن کی طرح باتیں کرلیں، دوسرا طریقہ یہ ہے کہ ہم اس کا سنجیدگی سے جائزہ لیں۔انہوں نے کہا کہ پہلی بات یہ ہے کہ اس میں نہ ہی ن لیگ لوگ ملوث ہیں اور نہ ہی اس میں عمران خان کا بھانجا ملوث ہے۔عمران خان کے بھانجے سے پہلے حسان نیازی حفیظ اللہ نیازی کا بیٹا ہے، اور حفیظ اللہ نیازی کے تاثرات کا بھی سب کو علم ہے۔مجھے نہیں پتا تھا کہ طلال چودھری حفیظ اللہ نیازی کے اتنے خلاف ہیں، اور ان کی اتنی ذاتی لڑائی ہے کہ واقعے کا ذمہ دار اسی کو قراردے دیں گے۔انہوں نے کہا کہ جب ہم 80ء کی دہائی سے ہی فیصلہ کرلیا کہ ریاست نے ہرجگہ پاورگروپس کو جگہ دینی ہیں، پھر چاہے وکیل، تاجر ، ڈاکٹرزہوں ہر کوئی اپنی طاقت کے مطابق زور دکھاتا ہے۔فواد چودھری نے کہا کہ حکومت ، عدلیہ، فوج اور اپوزیشن نے مل بیٹھ کر فیصلہ کرنا ہے کہ ہم نے اس ملک کو کس طرف لے کرجانا ہے۔یا پھر ہم اسی طرح لڑتے رہیں،اور ہماری آبادی کی ترجیحات ویسے ہی رہیں،یا پھر مل کرطے کرنا ہوگا کہ ہم نے کیا کرنا ہے۔اگر یہ کہا جائے کہ حکومت کی ایک جماعت فیصلہ کرلے گی اور باقی سارے اس کے ساتھ ہوں گے یہ نہیں ہونا،نہ ہی ایسے ہونا ہے کہ اگر مخالفین فیصلے کرلیں اور کوئی کام حکومت کی مرضی کے بغیر نہیں ہوگا۔مسلم لیگ ن کے رہنماء طلال چودھری نے کہا کہ حکومت جان بوجھ کر سب کچھ کررہی ہے حکومت نے پہلے صورتحال کو ٹھیک سے ہنڈل ہی نہیں کیا، اپوزیشن کے گھر پر چھاپہ ماریں تو کامیاب ہوتالیکن حسان نیازی کوگرفتارکرنے کیلئے چھاپے ناکام ہورہے ہیں۔