پاکستان کے قومی جانور مارخور کو بقاء کی جنگ لڑنا پڑ گئی ، افسوسناک حقائق منظر عام پر

اسلام آباد (ویب ڈیسک)پاکستان میں مارخور اور اینڈس ڈولفن بدستور خطرے سے دوچار ۔ انڈس ڈولفن اور مار خور ابھی بھی بین الااقوامی ادارے آئی یو سی این کی ریڈ لسٹ میں شامل ہیں۔انڈس ڈولفن معدومیت کے خطرے سے دوچار ہے جبکہ مارخور کی مجموعی آبادی میں بہتری آئی ہے

جس کے بعد اس کو ایک درجہ بہتری دی گئی اور اس کو ’معدوم ہونے کے خطرے‘ سے نکال کر ’معدوم ہونے کے خطرے کے قریب‘ کی فہرست میں رکھا گیا ہے۔ڈبلیو ڈبلیو ایف کے مطابق پورےخطے میں 5754مارخور موجود‘ملک میں انڈس ڈولفن کی تعداد تقریباً 1800 ہے،آئی یو سی این کمیشن آن ایکو سسٹم مینجمنٹ کے ممبر ندیم میر بحر نےبتایا کہ انڈس ڈولفن کی پاکستان اور انڈیا میں مجموعی آبادی پانچ ہزار سے بھی کم ہے۔ اسی طرح مارخورکی افغانستان‘انڈیا‘ تاجکستان‘ترکمانستان‘ ازبکستان اور پاکستان میں مارخور کی مجموعی تعداد 5754 بتائی گئی تھی۔