میں غمزدہ ضرور ہوں مگر یہ مت سمجھنا کہ میں ۔۔۔۔ والدہ کی وفات کے چند گھنٹوں بعد ہی جنرل حمید گل مرحوم کی صاحبزادی کا بیان سامنے آگیا

راولپنڈی(ویب ڈیسک) والدہ کی جدائی کا غم اپنی جگہ لیکن ڈی چوک سے ایف نائن پارک تک کشمیر ملین مارچ میں ضرور شرکت کروں گی ۔ کیونکہ جہاں روزانہ ناحق نعشیں اٹھائی جا رہی ہوں اس عظیم قوم کے سامنے میرا غم بہت چھوٹا ہے۔عظمٰی گل نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ والدہ کی وفات ہمارے

خاندان کے لئے کسی سانحہ سے کم نہیں اس موقع پر ان تمام افراد کی شکر گزار ہوں جو میرے ساتھ غم میں شریک ہوئے ۔جنرل (ر)حمید گل مرحوم کی اہلیہ انتقال کر گئیں ان کی نماز جنازہ کل آرمی بارڈ گرائونڈ راولپنڈی میں ادا کی گئی ۔ نیشنل لیبر الائنس کے مرکزی چیئرمین غازی احمد حسن کھوکھر نماز جنازہ میں شرکت کے لیے راولپنڈی روانہ ہوگئے دریں اثناء نیشنل لیبر الائنس کا تعزیتی اجلاس چیئرمین غازی احمد حسن کھوکھر کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں جنرل حمید گل کی اہلیہ کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا گیااور لواحقین کے لیے صبر و جمیل اور مرحومہ کے لیے دعاء مغفرت کی گئی۔جموں و کشمیر سالیڈیرٹی موومنٹ کی چیئر پرسن عظمی گل نے واضح کیا ہے۔ کہ کشمیر مارچ ضرور ہو گا۔عظمیٰ گل نے کہا میرے والد جنرل حمید گل کا کشمیریوں سے وعدہ تھا کہ کشمیر رگ جاں نے بلایا تو جان ہتھیلی پر رکھ کر پہنچوں گا ۔ میری والدہ بھی آخری سانس تک کشمیر کی آزادی کی نوید سننے کے لئے بے تاب رہیں میں والدین کے مشن کو لے کر چل رہی ہوں ۔ یہ کشمیر مارچ مقبوضہ کشمیر کی 80 لاکھ اسیر آبادی کے لئے ہے۔یاد رہے اسلام آباد کی 100 سے زائد تنظیمات کی نمائندگی کرتے ہوئے عظمیٰ گل دختر جنرل حمید گل، ڈاکٹر سید مجاہد گیلانی،تاجر رہنما اجمل بلوچ،حریت رہنما شیخ عبدالمتین،نے دیگر رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر 20 اکتوبر کو کشمیر ملین مارچ کا اعلان کیا تھا جس میں کشمیر کا پانچ کلومیٹر لمبا پرچم لہرانے کا اعلان کیا تھا۔ جائے جس کا وزن 80 من، چوڑائی 12 میٹر ہوگی، جو کہ عالمی ریکارڈ بنے گا، اس سے قبل سب سے بڑے پرچم کا اعزاز کویت کے پاس ہے۔