بریکنگ نیوز: ڈکیتی مزاحمت پر جان سے جانے والی مصباح کے قاتل افغانی نوجوان نکلے ، کراچی سے دھماکہ خیز انکشافات پر مبنی خبر

کراچی (ویب ڈیسک) ڈکیتی کی واردات میں مزاحمت پر قتل ہونے والی کراچی کی میڈیکل کی طالبہ کے قاتلوں کا سراغ مل گیا ، تفصیلات کے مطابق کراچی پولیس نے ایک ریڈ میں مصباح کے قاتل افغانی نوجوانوں کو گرفتار کیا ہے جو کچرا چننے والوں کے روپ میں چھوٹی موٹی وارداتیں کرتے تھے ۔

بتایا جا رہا ہے کہ میڈیکل کی طالبہ مصباح کو کچرا چننے والے انہی افغانی نوجوانوں نے قتل کیا ۔ ان میں سے ایک ملزم کو گرفتار کرکے لڑکی کے والد سے چھینا گیا موبائل فون، واردات میں استعمال ہونے والی موٹر سائیکل اور اسلحہ بھی پولیس نے برآمد کر لیا ہے ۔ ایس ایس پی ایسٹ غلام اظفر مہیسر نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ گرفتار ملزم محمد نبی افغانی اسٹریٹ کرمنل ہے، جس کا ساتھی قاری بشیر افغانی تاحال فرار ہے، پولیس مفروضہ ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار رہی ہے۔ گرفتار ملزم نے اعتراف کیا ہے کہ وہ ایک سال پہلے تک اس علاقے میں کچرا چنتا تھا جس کے بعد ملزم گاڑیوں کی بیٹریاں چوری کرنے لگا، پانچ ماہ قبل ملزم نے اپنے ساتھیوں فضل، نعمت اور قاری بشیر کے ساتھ مل کر اسٹریٹ کرائم کی وارداتیں شروع کیں۔ یاد رہے کہ مصباح اطہر ہمدرد یونیورسٹی میں تھرڈ ائیر کی طالبہ تھی، چند روز قبل وہ صبح اپنے والد کیساتھ گھر سے کار میں بیٹھ کر اسٹاپ پر یونیورسٹی کے پوائنٹ کے انتظار میں تھی کہ اس دوران موٹر سائیکل پر سوار مسلح ملزمان آئے اور اس کے والد سے لوٹ مار کی اور دوران فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں گولی مصباح کی آنکھ کے قریب لگی تھی، جس کے نتیجے میں مصباح شدید زخمی ہوئی تھی۔ اور بعد میں زخموں کی تاب نہ لا کر جانبحق ہو گئی ۔