ٹرمپ تو واقعی وعدے کا سچا نکلا۔۔۔ پاکستان کو بڑی پیشکش کرتے ہوئے ناقابل یقین حکم جاری کردیا، پاکستانیوں کو تاریخ کی سب سے بڑی خوشخبری دے دی گئی

واشنگٹن (ویب ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر مسئلہ کشمیر حل کرانے کی پیش کش کر دی۔ صدر ٹرمپ نے افغان امن مذاکرات پر کہا کہ طالبان کے ساتھ مذاکرات مکمل طور پر ختم ہو چکے ہیں۔وائٹ ہاﺅس میں صحافیوں سے گفتگو کے دوران صدر ٹرمپ نے ایک بار پھر مسئلہ کشمیر کے حل کی

پیش کش کرتے ہوئے کہاکہ بھارت اور پاکستان کے درمیان تنازعہ جاری ہے، کشمیر پر میری پیشکش اپنی جگہ موجود ہے، مسئلے کے حل کےلئے دونوں ملکوں کی مدد کرنا چاہتے ہیں۔ امریکی صدر نے افغان امن مذاکرات پر کہا کہ بات چیت مکمل طور پر ختم ہو چکی ہے، ان کا مزید کہنا تھا طالبان کےساتھ مذاکرات منسوخ کرنے کا فیصلہ میں نے خود کیا، طالبان کو کیمپ ڈیوڈ آنے کی دعوت دینا میرا فیصلہ تھا، اسے منسوخ کرنا بھی میرا فیصلہ تھا، افغانستان سے نکلنا چاہتے ہیں تاہم یہ کام کسی مناسب وقت پر کیا جائے گا۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق دنیا بھر میں لوگ کام کی غرض سے جاتے ہیں لہٰذا جن کے پاس شہریت نہیں ہوتی وہ اپارٹمنٹ کرائے پر لیتے اور ہنسی خوشی زندگی بسر کرتے ہیں۔یہی نہیں بلکہ کئی مقامی لوگ بھی اتنے غریب ہوتے ہیں کہ وہ اپنا گھر خرید نہیں سکتے لہٰذا وہ بھی کرائے کے مکان پر رہتے ہیں۔کرائے پر اپارٹمنٹ لینے کے لیے ہمیشہ سے چند ایک شرائط رہی ہیں جس میں ایڈوانس سکیورٹی کی مد میں کچھ پیسے رکھنے کے علاوہ آئی ڈی کارڈ کی کاپی دینا بھی لازم ہے۔جب کہ بیرون ملک کے لوگوں کو اپنے پاسپورٹ اور جس آفس میں ملازمت کرتے ہیں وہاں کا کارڈ دینا بھی لازمی ہوتا ہے۔تاہم آپ یہ جان کر حیران ہوں گے کہ یواے ای میں اب اگر آپ نے اپارٹمنٹ کرائے پر لینا ہے تو آپ کو سیلری سلپ دکھانا ہو گی بلکہ تین ماہ تک بینک میں اپنی سیلری بھی شو کرنا ہو گی کہ آپ کو باقاعدہ ہر ماہ تنخواہ بھی ملتی ہے۔یواے ای میں رہنے والے افراد پریشان ہو گئے ہیں کیونکہ ان میں سے اکثر سے زیادہ افرادکیش پر کام کرتے ہیں اور ان کے اکاؤنٹ میں ماہانہ سیلری ٹرانسفر نہیں ہوتی۔یو اے ای میں رہنے والے ایک دوسرے ملک کے باشندے نے بتایا کہ وہ ایک کمپنی میں روزانہ تنخواہ کی بنیا دپر کام کرتا ہے لہٰذا نہ تو اس کا بینک اکاؤنٹ ہے اور نہ ہی اس میں سیلری آتی ہے لہٰذا اسے پراپرٹی ایجنٹ نے گھر کرائے پر دینے سے انکار کر دیا۔بعدازاں اس نے اپنی بیوی کے اکاؤنٹ کی ڈیٹیل بتا کر گھرائے کرائے پر لیا۔یو اے ای میں رہنے و الے غیر ملکی افراد کا کہنا تھا کہ اس قسم کی پالیسی درست نہیں اور اسے فی الفورختم ہونا چاہیے۔یاد رہے کہ گھر کرائے پر حاصل کرنے کے لیے سیلری سلپ اور بینک تفصیل کی شرط حکومت کی طرف سے عائد نہیں کی گئی بلکہ یہ مقامی پراپری ڈیلر افراد کی طرف سے شرط ہے۔