ہر حد پار ۔۔۔۔ گندی کتاب لکھنے والی ریحام خان نے شرم و حیا کو ایک طرف رکھ کر سابق شوہر عمران خان کے حوالے سے شرمناک ترین انکشاف کر دیا

لاہور (ویب ڈیسک) گذشتہ روز وزیراعظم پاکستان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت میں تین سال کی توسیع کی۔ چونکہ عمران خان کے مخالفین کی طرف سے یہ عمران خان کی حکومت پر “سلیکٹڈ ” کا الزام عائد کیا جاتا ہے۔ اور کہا جاتا ہے کہ عمران خان کو وزیراعظم

بننے میں اسٹیبلشمنٹ کی سپورٹ حاصل رہی۔ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے بعد یہ بھی کہا گیا کہ یقینا اب اگلی حکومت بھی عمران خان کی ہو گی۔ اسی حوالے سے وزیراعظم عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے بھی ان پر تنقیدی وار کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرے لیے جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع کوئی اچھنبےکی بات نہیں ۔ اپنا تھوکا ہوا چاٹنا سلیکٹڈ کی عادت ہے۔ سلیکٹر کی مدت ملازمت میں توسیع سے سلیکٹڈ کی مدت ملازمت میں کوئی اضافہ نہیں ہو گا۔ میرے لیے جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع کوئی اچنبےکی بات نہیں ۔ اپنا تھوکا ہوا چاٹنا سلیکٹڈ کی عادت ہے۔ سلیکٹر کی مدت ملازمت میں توسیع سے سلیکٹڈ کی مدت ملازمت میں کوئی اضافہ نہیں ہو گا۔ خیال رہے کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں تین سال کی توسیع کر دی گئی ہے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ مزید تین سال کے لیے آرمی چیف کے عہدے پر مقرر رہیں گے۔ جنرل قمر جاوید باجوہ 29 نومبر 2019ء کو اپنے عہدے سے ریٹائر ہو رہے تھے لیکن اب ان کی مدت ملازمت میں مزید تین سال کی توسیع کر دی گئی ہے جس کے تحت جنرل قمر جاوید باجوہ نومبر 2022ء تک چیف آف آرمی اسٹاف کے عہدے پر برقرار رہیں گے۔اس سے پہلے ہمیشہ کہا جاتا رہا تھا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت میں توسیع نہیں کی جائے گی اور وہ ریٹائر ہو جائیں گے۔آرمی چیف کا موقف تھا کہ فوج ایک پروفیشنل ادارہ ہے، اس کا نظام قوائد کے مطابق ہی چلنا چاہیئے۔ تاہم پھر 15 روز قبل ان کی اہلیہ نے انہیں اپنا فیصلہ تبدیل کرنے کیلئے راضی کیا۔