کیا عاصمہ رانی قبائلی رسم غگ کا شکار بنی، غگ کی رسم کیاہے؟ تفصیلات آپ کو دنگ کر ڈالیں گی

کیا عاصمہ رانی قبائلی رسم غگ کا شکار بنی، غگ کی رسم کیاہے؟ تفصیلات آپ کو دنگ کر ڈالیں گی
پشاور (ویب ڈیسک) قبائلی علاقہ میں ایک رسم ”غگ” آج بھی موجود ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ایسا معلوم ہوتا ہے کہ کوہاٹ کی ڈاکٹر عاصمہ رانی بھی اسی رسم کا نشانہ بنی۔ اس ضمن میں سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث کا آغاز ہو گیا ہے۔ قبائلی علاقہ میں رسم ”غگ” کے تحت کوئی بھی مرد کسی بھی لڑکی کے گھر کے سامنے رسم چار فائر کرنے پر شادی کا دعویدار ہو جاتا ہے ،

یہ بھی پڑھیں:عمران خان کو الیکشن سے پہلے نا اہل کروانے کا پلان کامیاب ہونے کے قریب، (ن) لیگ اب کونسا کارڈ کھیلنے والی ہے ؟حامد میر کی ایسی پیش گوئی جس پر وقت نے سچائی کی مہر ثبت کر دی
ایسا کرنے سے وہ مرد لڑکی سے شادی کا دعویدار ہو جاتا ہے اور لڑکی پر بھی اس کے دعویدار کا حق ہو جاتا ہے۔اگر لڑکی اس مرد سے شادی نہ کرنا چاہے تب بھی دشمنی کے خوف سے لڑکی سے کوئی اور مرد شادی نہیں کرتا اور اگر ”غگ” کا دعویدار خود مکر جائے تب بھی اس لڑکی سے کوئی شادی نہیں کرتا اور یوں پختوں معاشرے میں لڑکی بن بیاہے بیٹھی رہتی ہے ۔ نجی ٹی وی چینل کے مطابق آر پی او کوہاٹ نے اس رسم ”غگ” کی موجودگی سے متعلق ایک مبہم بیان دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر عاصمہ رانی کا قتل ”غگ” جیسا ہے لیکن ”غگ” نہیں ہے۔ تاہم اس انوکھی رسم نے سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث کا آغاز کر دیا ہے۔
یہ بھی پڑھیں: وزیر اعلیٰ پنجاب کی سپریم کورٹ پیشی کے موقع پر کمرہ عدالت میں کیا کچھ ہوتا رہا ؟معتبر صحافی نے اصل کہانی بیان کر دی
یہ بھی پڑھیں:الحمد للہ ۔۔۔ہم نکالتے رہیں گے ۔۔۔ہمیں کوئی نہیں نکال سکتا ۔۔۔جسٹس ثاقب نثار کا دبنگ بیان