ریمنڈ ڈیوس کا خصوصی طیارے میں امریکہ کس کے حکم پر روانہ کیا گیا ؟ مری میں اجیت ڈوڈل کی سالگرہ کا کیک کس نے کٹوایا تھا ؟ ارشاد بھٹی نے کلبھوشن کے معاملہ پر عمران خان کو تنقید کا نشانہ بنانے والوں کے پلے کچھ بھی نہ چھوڑا

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار ارشاد بھٹی اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔ماشاء اللہ، ذرا سوچئے، چیئرمین نیب کی گرفتاری کااختیار ختم ہونے، سزا ہونے تک ملزم کو گرفتار نہ کرنے، گرفتاری کے بعد ملزم کو عدالت سے رجوع کرنے کا آپشن ملنے کے بعد نیب کیا خاک کسی بڑے،

بااختیار، پیسے والے کا کیس چلا سکے گا،نیب ریمانڈ 14دن، سیاستدان تو 14روزہ ریمانڈ پروڈکشن آرڈر پر اسمبلی اجلاس میں ہی بھگتا آئیں گے۔ملزم کیخلاف اسی صوبے میں تحقیقات، جہاں سے منتخب ہوا یاجہاں خدمات سر انجام دیں، اب بھلا بتائیے پی پی کے کسی سیاستدان کیخلاف سندھ میں تحقیقات، کس میں اتنی جرأت، زرداری اینڈ کمپنی کیخلاف کیس تب آگے بڑھے جب کیس کراچی سے اسلام آباد، پنڈی ٹرانسفر ہوئے، نیب نے یہ کہہ کر کراچی میں تحقیقات کرنے سے انکار کر دیا تھا کہ ہمارے افسروں کی جانوں کو خطرہ، یہاں تو پانامہ جے آئی ٹی ارکان، جعلی اکاؤنٹس، منی لانڈرنگ، جے آئی ٹی والے۔دونوں سپریم کورٹ پہنچ چکے کہ ہماری جانوں کو خطرہ، تحفظ دیاجائے، نیب کیس سے متعلق میڈیا کو نہیں بتائے گا، جو نیب افسر بتائے گا، اسے سزا ملے گی، مطلب اند رواندر مک مکا، ریکارڈ تبدیلی، سکون واطمینان سے کیس کو اپنی مرضی کے نتائج، کیس، کب چلا، کب ختم ہوا،کیوں ختم ہوا،موجاں، نیب افسر کیخلاف تشدد، ہراساں کرنے کا مقدمہ درج ہو سکے گا،مطلب اب نیب افسر تفتیش کے بعد پوچھے گا، سر مجھ سے کوئی گستاخی تو نہیں ہوئی،سر آپ خوش تو ہیں نا، نیب ایک ارب سے زیادہ کی کرپشن پرکیس بنا سکے گا، 90فیصد ملزم اسی شق کی وجہ سے چھوٹ جائیں گے۔نیب سزا یافتہ رکن اسمبلی بن سکے گا، نیب قوانین کا اطلاق 15نومبر 1999سے ہو، مطلب پوری اپوزیشن ایک جھٹکے میں پاک صاف، ابھی بظاہر ڈیڈ لاک، ترمیمی ڈرافٹ میںکافی ردوبدل ممکن، لیکن اپوزیشن کی یہ مجوزہ تجاویز خودبتارہی ہیں

اپوزیشن کیا چاہ رہی، اگر ان میں سے 50فیصد تجاویز پر بھی اتفاق ہوگیا تو نیب گڈبائے، احتساب گڈ بائے۔ماشاء اللہ، عدالت لگا کر، دیت کے پیسے خود دے کرایک نچلے درجے کے سی آئی اے ایجنٹ ریمنڈ ڈیوس کو جہاز میں بٹھاکر امریکہ بہادر کو اوکے کی رپورٹ دینے والے شور مچار رہے کہ کلبھوشن کو این آر اور دیا جارہا، مودی کو ہمراہ اجیت ڈوول گھر بلا کر ہیپی برتھ ڈے کیک کٹوانے اور سجن جندل کو بنا ویزا مری جا کر لنچ کروانے والے کہہ رہے کہ بھارت کشمیریوں پر ظلم کررہا ہے اور آپ واہگہ بارڈر تجار ت کھول رہے، ماشاء اللہ، اب کوئی ان سے پوچھے، کلبھوشن کیس عالمی عدالت میں کون لیکر گیا۔لیگی حکومت، مطلب اس این آر او کی بنیاد رکھی مسلم لیگ نے، اب کلبھوشن آرڈیننس اسی عالمی عدالت کی requirementsپوری کرنے کیلئے لایا جارہا، چلو یہ بھی چھوڑدیں، کیا اس آرڈیننس کے بعد کلبھوشن کی سزاختم ہوجائے گی، کیا اس آرڈیننس کے بعد کلبھوشن رہا ہوجائے گا، کیا اس آرڈیننس کے بعد کلبھوشن سے دہشت گردی کا لیبل اترجائے گا۔کیااس آرڈیننس کا مطلب کلبھوشن کو بھارت بھجوانا، کیا آپ اس پوزیشن میں ہیں کہ عالمی عدالت انصاف کی بات نہ مانیں، کیا سستی سیاستیں، کیا لایعنی باتیں، کسی اگلے کالم میں لکھوں گا کہ ملیحہ لودھی کے خط سے سجن جندل کے آنے تک کلبھوشن معاملے پر خفیہ خفیہ کیا ہوا، ماشاء اللہ، اس وقت خوشی یہ، کلبھوشن کا نام آتے ہی جوتوتلے ہوجاتے تھے،ماشاء اللہ، اب وہ توتلے نہیں رہے۔(ش س م)