صدر ٹرمپ کو ” نکی ہیلی“ نے ہی بڑا جھٹکا دیدیا، اچانک انتہائی حیران کن فیصلہ سنادیا

نیویارک(ویب ڈیسک) اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی مستعفی ہوگئی ہیں جن کا استعفیٰ صدر ڈونلڈ جے ٹرمپ نے منظور کرلیاہے ۔ نکی ہیلی کے مستعفی ہونے کا اعلان بھی خودٹرمپ نے سوشل میڈیا پر کیا اور لکھاکہ اقوام متحدہ میں امریکی سفیر کی حیثیت سے نکی ہیلی نے اپنا استعفیٰ دیدیا ہے اور رواں سال کے آخرتک وہ عہدے سے الگ ہوجائیں گی ۔
امریکی میڈیا رپورٹس کے مطابق جنوبی کیرولینا کی سابق گورنر نکی ہیلی ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد اقوام متحدہ میں امریکا کی سفیر مقرر ہوئی تھیں اور وہ مختلف ممالک کے حوالے سے اپنے سخت مو¿قف کی وجہ سے مشہور تھیں اور اچانک عہدہ سے الگ ہونے کا فیصلہ سنانا ٹرمپ انتظامیہ کیلئے بھی حیران کن ہوگا۔اے پی کے مطابق صدر ٹرمپ نے نکی ہیلی کو سراہتے ہوئے کہاکہ اس نے چھ ماہ قبل ہی مجھے بتادیاتھاکہ وہ کچھ وقت سکون سے گزارناچاہتی ہیں، وہ ہمارے ساتھ مستقل رابطے میں رہیں گی ، چین ، بھارت اور روس سمیت کئی ممالک کو یہ اچھی طرح جانتی ہیں اور نکی ہیلی کیساتھ پریس کانفرنس میں ان کا شکریہ اداکرتے ہوئے الوداع کردیا۔بلوم برگ کیلئے وائیٹ ہاو¿س کی رپورٹرجینیفر جیکبز نے بتایاکہ نکی ہیلی 2020سے قبل واپسی کا کوئی ارادہ نہیں رکھتیں، ان کاموقف ہے کہ اقوام متحدہ میں ملک کا سفیر ہونا بڑا اعزازہے، وہ آئندہ عام انتخابات میں ٹرمپ کی انتخابی مہم چلانے واپس آئیں گی ۔
خیال رہے کہ رواں برس اپریل میں وائٹ ہاو¿س اور نکی ہیلی کے درمیان معاملات خراب ہوگئے تھے جب ٹرمپ کے ایک قریبی ساتھی نے نکی ہیلی کے حوالے سے کہا تھا کہ انہوں نے روس کے خلاف نئی پابندیوں کے اعلان میں جلد بازی سے کام لیا۔