جسینڈ ا آرڈرن نے ایک بار پھر مسلمانوں کے دِل جیت لیے، شاندار کام سر انجام دے ڈالا

کرائسٹ چرچ (نیوز ڈیسک) نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے مسجد النور کے احاطے میں سانحےکے شہدا کی یادگار پر تختی کی نقاب کشائی کی ۔ تفصیلات کے مطابق نیوزی لینڈ کے وزیراعظم نے جمعرات کو مسجد النور کے احاطے میں کچھ عرصہ قبل پیش آنے والے افسوسانک واقعے کے شہدا کی یاد گار پر تختی کی نقاب کشائی کی

۔ پتھر سے بنی بلیک رنگ کی تختی پر گولڈ کلر میں تحریر کی گئی ہے جس پر دعا مانگتے ہوئے ہاتھوں کی تصاویر کیساتھ قرآنی آیات بھی لکھی گئی ہیں۔کورونا وائرس کی وجہ سے تختی کی نقاب کشائی کی تقریب دو دفعہ ملتوی ہوئی ۔ مسجد النور کے امام جمال فودا سمیت مسلم ایسوسی ایشن آف کنٹربری کے عہدیداران اور بڑی تعداد میں مسلم کمیونٹی کے افراد نے وزیراعظم کا پرتپاک استقبال کیا۔وزیراعظم نے نقاب کشائی کے موقع پر یادگار پر پھول رکھے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اس سانحے میں ہونیوالے نقصان کو کسی بھی طرح پورا نہیں کیا جا سکتا ۔انہوں نے کہا کہ واقعہ میں زندہ بچ جانیوالوں کو دیکھ کر خوشی ہوتی ہے یہ یادگار ہمیں 15 مارچ کے سانحہ کی یاد دلاتی رہے گی ۔ مسجد النور کے امام جمال فودا نے کہا کہ مسجد پر فائرنگ ہماری زندگی کا سب سے مشکل لمحہ تھا کسی نے سوچا بھی نہیں ہو گا کہ ایسا خوفناک واقعہ نیوزی لینڈ میں بھی ہو گا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اظہار خیال اور نفرت انگیز تقریر میں فرق کرنے کیلئے ایک نیا قانون بنایا جائے۔امام مسجد کے شہدا کی یاد میں کلمات پر کئی لواحقین آبدیدہ ہو گئے۔جسینڈا آرڈرن نے شرکاء کے ساتھ چائے پی،تصاویر بنوائیں اور شکریہ ادا کیا۔اس موقع پر انہیں چادر بھی دی گئی،جسینڈا آرڈرن سر پر دوپٹہ اوڑھے تقریب میں شریک ہوئیں۔