غیر ملکی ملازمین کے لیے بڑا ریلیف !!! سعودی حکومت نے زبردست اعلان کردیا

ریاض(ویب ڈیسک) سعودی حکومت نے نجی اداروں میں کام کرنے والے غیر ملکی ملازمین کے لیے انشورنس اسکیم کی منظوری دے دی، اسکیم پر عملدر آمد کے جملہ اخراجات سعودی حکومت برداشت کرے گی۔ سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی حکومت نے نجی اداروں میں کام کرنے والے غیر ملکی

ملازمین کے بقایا جات کی ادائیگی کے لیے انشورنس اسکیم کی منظوری دے دی ہے۔ وزیر افرادی قوت و سماجی بہبود انجینیئر احمد الراجحی کا کہنا ہے کہ شاہ سلمان نے نجی اداروں کے غیر ملکی ملازمین کے حقوق و بقایا جات کے لیے انشورنس اسکیم کی منظوری دی گئی ہے۔ اس اسکیم پر عملدر آمد کے جملہ اخراجات سعودی حکومت برداشت کرے گی۔ الراجحی نے اسکیم کی منظوری پر شاہ سلمان اور ولی عہد کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اسکیم کی بدولت نجی اداروں میں غیر ملکی ملازمین کے معطل حقوق اور بقایا جات کا مسئلہ ٹھوس بنیاد پر حل ہوجائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسکیم کی بدولت سعودی عرب کے نجی اداروں میں غیر ملکی ملازمین کے حقوق کو تحفظ حاصل ہوگا، اگر کسی غیر ملکی ملازم کےحقوق اور بقایا جات کو خطرہ لاحق ہوا تو اس انشورنس اسکیم کے باعث اول تو خطرات کا خاتمہ ہوجائے گا یا کم ازکم خطرات کا دائرہ بے حد محدود ہوجائے گا۔ سعودی وزیر کے مطابق سعودی قیادت کی خواہش تھی کہ نجی ادارے ملک و قوم کی فلاح اور تعمیر و ترقی میں کلیدی کردارادا کریں اور درپیش مسائل سے نجات حاصل کریں۔ انہوں نے بتایا کہ سعودی کابینہ نے انشورنس اسکیم کی منظوری کے ساتھ ایک کمیٹی بھی تشکیل دی ہے جو وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود، وزارت خزانہ اور سعودی عریبین مانیٹری اتھارٹی (ساما) کے نمائندوں پر مشتمل ہوگی۔ کمیٹی نجی اداروں میں ان غیر ملکی ملازمین کے زمروں کا تعین کرے گی جن پر مبینہ انشورنس اسکیم لاگو ہوگی، کمیٹی انشورنس اسکیم پر عمل درآمد کے قاعدے، ضابطے اور طریقہ کار ترتیب دے گی اور انشورنس پالیسی کی فیس متعین کرے گی۔