کورونا کے آخری دن آگئے : وائرس کی نئی قسم کے بارے میں ایسی حقیقت سامنے آگئی کہ پوری دنیا میں اطمینان کی لہر دوڑ گئی

کراچی(ویب ڈیسک) پتہ چلا ہے کہ کوروناوائرس کی نئی قسم زیادہ لوگوں کو بیمار کرتی ہے مگر نقصان اور اموات کے حوالے سے کم خطرناک ہے۔ نئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ کورونا وائرس کی نئی قسم تیزی سے پھیلتی ہے، لیکن یہ لوگوں کو زیادہ بیمار نہیں کرتی۔ کورونا وائرس کی نئی

قسم یورپ سے امریکا آئی ہے۔دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق یورپی یونین میں کورونا وائرس کی پہلی دوا کی فروخت کی مشروط منظوری دے دی گئی۔اس دوا کا نام(Remdesivir) ہے اور یہ امریکی کمپنی(Gilead) کی تیار کردہ ہے ۔ اس حوالے سے یورپین کمشنر برائے صحت اور فوڈ سیکورٹی سٹیلا کیریاکیڈیس نے بتایا کہ یورپین میڈیسن ایجنسی کے مشورے سے یورپ بھر میں اس دوا کی فروخت کی اجازت دی گئی ہے تاکہ اسے کورونا وائرس کے 12 سال سے زائد عمر کے مریضوں کے علاج کیلئے استعمال کیا جا سکے۔معلوم ہوا ہے کہ یہ دوا 1976 اور بعد ازاں 2014-2016 میں افریقہ میں پھیلنے والے ای بولا وائرس کے علاج کیلئے استعمال کی جا چکی ہے۔ خصوصی طور پر پنیومونیا اور آکسیجن تھراپی کے دوران اس کا استعمال مفید پایا گیا ہے۔ اس دوا کے منظر عام پر آنے کے بعد کورونا سے ہونے والے جانی نقصان کو روکا جا سکے گا ۔