رمضان المبارک کی آمد آمد۔۔!! ماہ صیام میں عبادات کے حوالے سے ایرانی سپریم لیڈرآیت اللہ خامنہ ای کا ناقابل یقین بیان سامنے آ گیا

تہران(ویب ڈیسک)ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کہتے ہیں کہ کورونا وائرس کی وجہ سے ماہ رمضان میں عبادات کو محدود کیا جاسکتا ہے۔ خیال رہے ایران دنیا کے ان ممالک میں شامل ہے جہاں کورونا وائرس کے باعث بڑی تعداد میں ہلاکتیں ہوئی ہیں۔ تازہ ترین اعداد وشمار کے مطابق اب تک

ایران میں اس موذی وائرس کی وجہ سے چارہزار افرادلقمہ اجل بن چکے ہیں جبکہ مریضوں کی تعداد چھیاسٹھ ہزار سے تجاوز کرچکی ہے۔امریکی خبررساں ادارے کے مطابق خامنہ ای نے قوم سے خطاب کے دوران کہا ہے کہ اس مرض کی وجہ سے رمضان المبارک میں اجتماعی عبادات پر پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔ ایسوی ایٹڈ پریس کے مطابق اجتماعی عبادات پر پابندی کااشارہ انہوں نے نو اپریل کو دیا ہے۔انہوں نے کہاکورونا کی وجہ سے لوگ ماہ مقدس میں اجتماعی عبادات سے محروم ہوجائیں گے اس لئے وہ گھروں پر عبادت کااہتمام کریں۔ایرانی سپریم لیڈر کے بیان سے قبل مصرنے بھی ماہ مبارک میں عبادات کے حوالے سے نئی ہدایات جاری کی ہیں جن میں اجتماعی عبادت پر پابندی شامل ہے۔دوسری جانب ایک کبر کے مطابق سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود ، روسی صدر ولادی میر پوتین اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ٹیلی فون پر مشترکہ رابطے میں توانائی کی عالمی منڈیوں کے استحکام پر بات چیت ہوئی،مشترکہ بات چیت میں اوپیک پلس گروپ کے اجلاس کی روشنی میں حالیہ کوششوں کا جائزہ لیا گیا۔ اس کے علاوہ توانائی کی منڈیوں کے استحکام کو برقرار رکھنے کے لیے تیل پیدا کرنے والے ممالک کے درمیان مشترکہ تعاون کی اہمیت پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔اس سے قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بتایا کہ انہوں نے سعودی فرماں روا اور روسی صدر کے ساتھ ٹیلی فون پر مشترکہ بات چیت کی۔ ٹرمپ کے مطابق تیل پیدا کرنے والے ممالک جن میں سعودی عرب سرفہرست ہے اور اوپیک تنظیم تیل کی قیمتوں میں اضافے کے لیے پیداوار کم کرنے کے حوالے سے ایک سمجھوتے کے قریب پہنچ چکے ہیں۔