بریکنگ نیوز: وہی ہوا جس کا ڈر تھا۔۔۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی کرونا ٹیسٹ رپورٹ منظرعام پر آتے ہی پوری دنیا میں ہلچل ، الگ کمرے میں رہنے کا حکم دے دیا گیا

واشنگٹن (ویب ڈیسک) صدر ٹرمپ کیکرونا خطرے کے پیش نظر گزشتہ روز بلڈ ٹیسٹ کئے گئے، وائٹ ہاوس کا کہنا ہے کہ ٹرمپ میں کرونا وائرس کی کوئی علامت نہیں پائی گئی البتہ ڈاکٹروں نے ان کو الگ کمرے میں رہنے کا حکم دے دیا ہے، ان کا ٹیسٹ منفی آیا ہے۔ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہائوس میں

بریفنگ کے دوران بتایا کہ لوگوں کے بار بار سوال پوچھنے پر انہوں نے گزشتہ روز کرونا وائرس ٹیسٹ کروا لیا۔ امریکی صدر حال ہی میں برازیل کے آفیشل سے ملے تھے جس میں بعد ازاں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی۔ ایک امریکی رکن پارلیمان نے ٹرمپ کے ساتھ طیارے ائیرفورس ون میں سفر بھی کیا تھا۔اس کے بعد وائٹ ہائوس نے ڈونلڈ ٹرمپ اور امریکی نائب صدر سے ملنے والے تمام افراد کے درجہ حرارت چیک کرنے کا اعلان کیا تھا تاہم صدر ٹرمپ کے حوالے سے وائٹ ہاوس کا کہنا ہے کہ ان کے بلڈ ٹیسٹ کے رزلٹ آ گئے ہیں جو منفی پائے گئے، اس کا مطلب صدر ٹرمپ میں کرونا کی علامت نہیں پائی گئی۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان میں کرونا وائرس کے ٹیسٹ کے نام پر نجی لیبارٹریوں نے معصوم پاکستانیوں کے ساتھ جعلسازی شروع کردی ۔وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی نے بتا یا ہے کہ حکومتی مشاہدے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ پرائیویٹ لیبارٹریوں نے کرونا وائرس کے ٹیسٹ شروع کردئیے ہیں اور یہ لیبارٹریاں دعویٰ کر رہی ہیں کہ ان کے پاس کرونا وائرس ٹیسٹ کی کٹس موجود ہیں ،ان میںسے چند لیبارٹریوں کے پاس کرونا ٹیسٹ کی کٹس موجود ہیں لیکن بہت سی پرائیویٹ لیبارٹریوں کے پاس کٹس موجود ہی نہیں ہے اور وہ دوسرے ٹیسٹ کر کے لوگوں کو کہہ رہے ہیں کہ کرونا کا ٹیسٹ ہے ۔انہوں نے کہا کہ پرائیویٹ لیبارٹریوں کا ڈیٹا اکٹھا کیا جا رہا ہے جن لیبارٹریوں کے پاس کرونا کٹس موجود ہیں ،ان کی معلومات اکٹھی کرنے کے بعد ان سے رابطہ کر کے قیمت طے کی جائے گی کیونکہ ابھی پرائیویٹ لیبارٹریاں بہت زیادہ پیسے وصول کر رہی ہیں ۔