بھارت سے نکلو۔!! بھارتی شہری اپنی ہی حکومت سے تنگ آکر اپنا ہی ملک چھوڑنے پر مجبور ہوگئے، 96 فیصد ریکارڈ اضافہ

حیدرآباد (ویب ڈیسک) بھا رتی شہری اپنی حکومت سے تنگ آ کر اپنا ہی ملک چھو ڑ نے پر مجبو ر ہو گئے ،اپنے جا ن وما ل کے تحفظ کے لیے ہزا رو ں شہریو ں نے دیگر ممالک میں سیا سی پنا ہ لے لی ۔بھا رت کے موجودہ حالات ہندوستانی شہریوں کو

دیگر ممالک میں سیاسی پناہ حاصل کرنے پر مجبور کرنے لگے ہیں۔ہندوستانی شہری اپنی شہریت ترک کرکے دنیا کے دیگر ممالک میں سیاسی پناہ حاصل کرنے لگے ہیں جو ملک کے حالات کے غیر یقینی ہونے کا ثبوت ہے ۔ سال 2009 میں 4 ہزار 722 ہندوستانی شہریوں نے دنیا کے دیگر ممالک میں سیاسی پناہ حاصل کرنے درخواست داخل کی تھی اور ہندوستان میں اپنے جان ومال کے تحفظ سے متعلق خدشات کا اظہار کیا تھا لیکن سال 2018 میں یہ تعداد بڑھ کر 51 ہزار769 تک پہنچ چکی ہے اور 10سال کے دوران 996 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔ہندوستانی شہری جو دنیا کے مختلف ممالک میں سیاسی پناہ حاصل کرنے درخواست داخل کر رہے ہیں ان میں بڑی تعداد ہندوستان میں خود کو عدم تحفظ کا شکار محسوس کررہی ہے ۔ بین الاقوامی ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ہندوستان کے موجودہ حالات میں اس تعداد میں مزید اضافہ ریکارڈ کیا جاسکتا ہے ۔ یو این ایچ آ ر سی کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کا جائزہ لینے پر اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ ہندوستانی شہری نہ صرف امریکہ و کینیڈا بلکہ ساؤتھ افریقہ’ آسٹریلیا’ برطانیہ’ سائوتھ کوریا کے علاوہ جرمنی میں بھی سیاسی پناہ کیلئے درخواستیں داخل کرنے لگے ہیں۔ سال2009میں امریکہ میں 1321 ہندوستانی شہریوں نے سیاسی پناہ کیلئے درخواست داخل کی تھی ، کینیڈا میں اس مدت کے دوران 1039 ہندوستانیوں نے سیاسی پناہ کیلئے درخواست داخل کی تھی لیکن سال 2018کے اعداد و شمار کا جائزہ لینے پر اس میں زبردست اضافہ ریکارڈ کیا گیا ۔ سال 2018 میں 28 ہزار489 ہندوستانیوں نے امریکہ میں سیاسی پناہ کے لئے درخواست داخل کی ہے ،کینیڈا میں سیاسی پناہ کیلئے درخواست داخل کرنے والوں کی تعداد میں بھی اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔ اترپردیش کے دارالحکومت لکھنو کے گھنٹہ گھر میں شہریت ترمیمی قانون کے خلاف مسلسل 52 دنوں سے احتجاج جاری ہے ۔ احتجاج کے دوران بارش میں بھیگنے کی وجہ سے فریدہ نامی خاتون کی موت ہوگئی ۔فریدہ کی عمر 50 سے 55 سال کے درمیان بتائی جارہی ہے ۔ ترک ملک کرنیوالے ہندوستانیوں کی تعداد میں تقریباً 1000فیصد اضافہ ہو گیا لکھنو میں شہریت قانون کیخلاف 52دنوں سے احتجاج جاری ، مسلمان خاتون ہلاک ہو گئی۔