بریکنگ نیوز: مسئلہ کمشیر برطانوی الیکشن پر اثر انداز ۔۔۔۔۔ لندن سے حیران کن خبر آگئی

بریڈ فورڈ( ویب ڈیسک)ٓ مسئلہ کشمیر برطانوی الیکشن میں اثر انداز ہو رہا ہے ۔ایک رپورٹ کے مطابق بریڈ فورڈ کی 43 فیصد آبادی جنوبی ایشیائی نسل کی ہے۔ ان میں سے زیادہ تر کا تعلق پاکستان کے زیر انتظام کشمیر سے ہے۔ اس شہر سے دو امید وار انتخاب لڑ رہے ہیں۔ چونکہ یہاں

جنوبی ایشیائی لوگ زیادہ ہیں اس لیے مسئلہ کشمیر اہم ہوگا۔ یہ مسئلہ بلواسطہ یا بالا واسطہ ان لوگوں کو متاثر کریگا۔وہاں کےباشندون کا کہنا ہے کہ بنیادی مسئلہ انڈیا اور پاکستان کا ہےاور اگر اس میں کشمیرکو بھی شامل کیا جائیگا تو یہ مسئلہ حل ہوگا۔ جو کشمیر کی مدد کریگا اور جو کشمیر کی حمایت کریگا ہم اسکو ووٹ دینگے۔اکثر کاروباری خاندانوں کا تعلق پاکستان سے ہے اور انکا کہنا ہے کہ انکے لیے انتخابات میں کشمیر کا مسئلہ اہم ہے۔انکا مزید کہنا ہے کہ ہمارے دو ارکان پارلیمان کا تعلق کشمیر سے ہے، انھیں اس بات کی فکر ہے کہ کشمیر میں کیا ہو رہا ہے، ان کے ووٹرز ان سے یہ مطالبہ کرینگے کہ ان کی آواز اٹھائی جائے،پالیمان میں بھی انکی آواز اٹھائی جائے۔ بریڈ فورڈ میں رہنے والے پاکستانی اور بھارتیوں کے درمیان ختلافات ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ایک برادری کی وجہ سے ہم ایک دوسرے کو برداشت کرتے ہیں، ہم مسئلہ کشمیر کی وجہ سے ایک دوسرے سے فاصلے پر رہتے ہیں۔ جبکہ وہاں پر موجود ہندوستانیوں کا کہنا ہے کہ یہاں پر لیبر پارٹی کے ارکان کا یہ کہنا ہے کہ کشمیر میں آرٹیکل 370 کا خاتمہ غیر آئینی ہے، جو کہ درست نہیں ہے۔ اس لیے ہندوبرادری کا لیبر پارٹی کو ووٹ نہیں دے گی۔ جبکہ لیبر پارٹی نے اپنے منشور میں لکھا ہے کہ وہ مسلئہ کشمیر پر برطانیہ کے کردار کر بڑھانے کی کوشش کریگی۔اس کے بعد بھی بہت سے ہندوستانیوں کا یہ کہنا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو برطانیہ میں نہیں لانا چاہئے۔