سمندر سے اسامہ بن لادن کی باقیات برآمد ۔۔۔۔ ایک خبر نے پوری دنیا کو حیران کر ڈالا

لاہور(ویب ڈیسک) کسی کے لئے ہیرو تو کسی کے لئے دہشت گرد سمجھے جانے والے بین الاقوامی شدت پسند تنظیم القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن پاکستان کے شہر ایبٹ آباد میں ڈرامائی انداز اور پُر اسرار انداز میں ایک فوجی کاروائی کے دوران ہلاک ہوگئے تھے ۔ ان کی ہلاکت ایک متنازعہ حیثیت اختیا ر کر

گئی کیونکہ اب تک اس کی لاش سامنے نہیں آئی جب کہ اس حوالے سے بہت سی قیاس آرائیاں بھی کی جاتی رہی ہیں لیکن اب ایک برطانوی جوڑے کے ہاتھوں سمندر سے ایسی چیز لگی ہے جو نہ صرف اسامہ بن لادن سے مشابہ ہے بلکہ ایک نظر میں دیکھ کر اسی کی صورت کا گمان ہوتا ہے۔برطانیہ کے ایک علاقے ایسٹ سسیکس میں 60 سالہ خاتون ڈیبرا اولیور کو سمندر سے ایسی سی پی ملی ہے جو القاعدہ کے سابق سربراہ اسامہ بن لادن سے مشابہت رکھتی ہے۔ڈیبرا اپنے 62 سالہ شوہر کے ساتھ 42 ویں شادی کی سالگرہ منانے کے لیے ساحل سمندر ونچلیسا میں موجود تھیں جہاں انہیں پانی سے ایک چھوٹی سی پی ملی جسے وہ دیکھ کر حیران رہ گئیں۔اس پرڈیبرا کا کہنا ہے کہ جب انہوں نے پہلی مرتبہ سی پی کو پانی میں جاتے دیکھا تو وہ تذبذب کا شکار ہوگئیں اور انہیں خیال ہوا کہ یہ کسی کی شکل سے ملتی جلتی ہے جس کے لیے انہوں نے سمندر میں تیرنا شروع کر دیا اور اسے پکڑنے کے لیے بھرپور کوشش کی۔ڈیبرا نے بتایا کہ ’آخر میں بہت کوششوں کے بعد جب میں نے شکل والی سی پی کو حاصل کرلیا تو اسے دیکھ کر میں بالکل چونک گئی تھی، کیونکہ جب میں نے اسے اپنے ہاتھ میں اٹھایا تو غور کیا کہ ایک پگڑی ہے، لیکن زیادہ غور کرنے پر مجھے سمجھ آیا کہ اس پر بنی شبیہ اسامہ بن لادن سے مماثلت رکھتی ہے‘۔انہوں نے بتایا کہ میں نے سی پی کو دیکھ کر اسامہ بن لادن کا نام لیا جب کہ دیگر لوگوں نے اس کی مشابہت ایران کے سابق سپریم لیڈر سے کی۔ڈیبرا نے بتایا کہ ان کے لیے سب سے حیران کن بات یہ ہے کہ اسامہ بن لادن کو بھی سمندر برد کیا گیا تھا اور ہوبہو ان کی شکل والی سی پی بھی سمندر سے ملی ہے۔