کیسے کیسے لوگ : دنیا کا وہ ملک جس کا حکمران جنرل اسمبلی اجلاس میں خطاب سے پہلے سیفلیاں بناتا رہا؟ ملک کا نام آپ کو حیران کر ڈالے گا

نیویارک سٹی(ویب ڈیسک) اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 74 ویں اجلاس میں ایل سیلواڈور کے صدر نائیک بوکیلے نے ڈائس پر پہنچ کر کیمرہ نکالا اور سب سے پہلے سیلفی لی اور پھر تقریر کا آغاز کیا۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں اس وقت دلچسپ صورت حال پیدا ہوگئی جب ایل سیلواڈور کے صدر

نائیک بوکیلے کو خطاب کے لیے مدعو کیا گیا، نائیک بوکیلے نے ڈائس پر پہنچ کر سب سے پہلے اپنی جیب سے آئی فون 11 نکالا اور سامعین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’ ایک منٹ ٹھہریں ! میں ذرا سیلفی لے لوں‘۔اتنے اہم اور سنجیدہ فورم پر ایل سیلواڈور کے صدر نے سیلفی لینے کے لیے اپنی تقریر کو کچھ لمحے کے لیے موخر کرتے ہوئے مزید کہا کہ ’یقین کریں کہ سوشل میڈیا پر بہت سے لوگ اس سیلفی دیکھیں گے اور پھر میری تقریر سنیں گے، مجھے امید ہے کہ میں ایک اچھی سیلفی لوں گا۔‘ سیلواڈور کے صدر نے سیلفی میں اجلاس کے صدر اور بیک گراؤنڈ کو بھی شامل کیا اور پھر اپنی تقریر کا آغاز کیا۔ نائیک بوکیلے جو حال ہی میں ایل سیلواڈور کے صدر منتخب ہوئے ہیں اپنے ملک کے ایک کامیاب تاجر ہیں اور وہ اس سے قبل میئر بھی رہ چکے ہیں۔ آپ نے اکثر اوقات سیلفی کے جنون میں مبتلا نوجوان لڑکے لڑکیوں کو تقریبات میں سیلفیاں لیتے دیکھا ہوگا لیکن ایل سلواڈور کے صدر نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنا شوق پورا کیا۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں جہاں دنیا بھر کی حکومتوں کے سربراہان اور عہدیداران دنیا کی توجہ مختلف مسائل کی طرف دلارہے تھے وہیں وسطی امریکا کے ملک ایل سلواڈور کے صدر نے اس موقع کا فائدہ اپنے انداز میں اٹھایا۔ایل سلواڈور کے صدر نائب بوکیلی جب خطاب کے لیے جنرل اسمبلی کی ڈائس پر پہنچے تو انہوں نے خطاب شروع کرنے سے قبل اپنا سیلفی کا شوق پورا کیا۔صدر نائب بوکیلی نے ڈائس پر آکر حاضرین سے کہا کہ اگر آپ مجھے صرف ایک سیکنڈ برادشت کریں اور اس کے بعد انہوں نے اپنی جیب سے فون نکالا اور سیلفی لی۔صدر بوکیلی نے اس تصویر کو اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر بھی پوسٹ کیا جہاں ان کے ایک ملین سے زائد فالوورز ہیں۔انہوں نے کہا کہ یقین کریں جب میں اس سیلفی کو شیئر کروں گا تو بہت سے لوگ اسے دیکھیں گے اور پھر میرا خطاب سنیں گے، مجھے امید ہے میں نے اچھا کیا۔اس موقع پر لگے ہاتھوں نے انہوں نے دنیا بھر کے رہنماؤں کو ایک مشورہ بھی دیا اور کہا کہ عالمی رہنماؤں کا یہ سالانہ اجلاس ویڈیو کانفرنس کے ذریعے بھی کیا جاسکتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ انسٹاگرام پر ڈالی گئیں کچھ تصاویر اسمبلی میں کی جانے والی تقاریر سے زیادہ پراثر ہوسکتی ہیں۔سیلواڈور کے صدر نے سیلفی میں اجلاس کے صدر اور بیک گراؤنڈ کو بھی شامل کیا اور پھر اپنی تقریر کا آغاز کیا۔ نائیک بوکیلے جو حال ہی میں ایل سیلواڈور کے صدر منتخب ہوئے ہیں اپنے ملک کے ایک کامیاب تاجر ہیں اور وہ اس سے قبل میئر بھی رہ چکے ہیں۔