شیم شیم نریندر مودی ۔۔۔ وزیراعظم عمران خان کے خطاب کے دوران بھارتی وزیراعظم کے خلاف کونسے اہم سربراہاں مملکت نے نعرے لگائے ؟ جان کر آپ یقین نہیں کریں گے

نیویارک (ویب ڈیسک) جنرل اسمبلی میں کشمیرمیں کرفیوکے ذکر پر’’شیم شیم‘‘ کے نعرے لگ گئے، کشمیر پر قبضے اور بھارتی مظالم کے خلاف نعرے بھی لگے، وزیراعظم عمران خان کے خطاب کے دوران بھارتیوں کے منہ لٹکے رہے۔ وزیر اعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے 74 ویں جنرل اسمبلی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں آج

یہاں چار اہم امورپربات کروں گا۔پاکستان کی نمائندگی اپنے لیے اعزاز سمجھتا ہوں۔ سمجھتا ہوں کہ ماحولیات سے نمٹنے کیلئے بہت سے لیڈرسنجیدگی نہیں دکھا رہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ماحولیاتی تبدیلی سے متاثر 10 ممالک میں شامل ہے۔ پاکستان میں بھی گلیشئرزتیزی سے پگھل رہے ہیں۔ پاکستان میں 80 فیصد پانی گلیشیئرزسے آتا ہے۔اقوام متحدہ کو موسمی تبدیلی پر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ گلیشئرزپگھلتے رہے اور کچھ نہ کیا تو بڑی تباہی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے کے پی میں ایک ارب سے زیادہ درخت لگائے۔ صر ف ایک ملک کچھ نہیں کرسکتا، سب ملکوں کی ذمے د اری ہے۔ امید کرتا ہوں اقوام متحدہ ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے میں قدم اٹھائے گا۔ گرین ہاؤس گیسز میں پاکستان کا حصہ انتہائی کم ہے۔عمران خان نے منی لانڈرنگ کے حوالے سے بتایا کہ ہر سال اربوں ڈالر غریب ملکوں سے ترقی یافتہ ملکوں میں چلے جاتے ہیں۔ امیر افراد اربوں ڈالر غیر قانونی طریقے سے یورپ کے بینکوں میں منتقل کردیتے ہیں۔ ہمارے ملک کا قرضہ 10برسوں میں چار گنا بڑھ گیا۔ غریب ملکوں کو اشرافیہ طبقہ لوٹ رہا ہے۔ اس کے نتیجے میں ٹیکس کی آدھی رقم قرضوں کی ادائیگی میں چلی جاتی ہے۔ہمیں مغربی ملکوں میں بھیجی گئی رقم واپس لینے میں مشکلات کا سامنا رہا۔ امیر ممالک کو چاہیے کہ وہ غیر قانونی ذرائع سےآنیوالی رقم کے ذرائع روکیں۔ غریب ملکوں سے لوتی گئی رقم غریبوں کی زندگیاں بدلنے پر خرچ ہوسکتی ہے۔ ہم نے مغربی دارالحکومتوں میں کرپشن سے لی گئی جائیدادوں کا پتا چلایا۔ امیر ممالک میں ایسے

قانون ہیں جوکرمنلز کو تحفظ فراہم کرتے ہیں۔کرپٹ حکمرانوں کو لوٹی گئی رقم بیرون ممالک بینکوں میں رکھنے سے روکا جائے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میرے خطاب کا تیسرا نکتہ اسلام فوبیا ہے۔ نائن الیون کے بعد سے اسلام فوبیا میں اضافہ الارمنگ ہے۔ اسلام فوبیا کی وجہ سے دنیا میں تقسیم بڑھی۔ افسوس کی بات ہے مسلم ملکوں کے سربراہوں نے اس بارے میں توجہ نہیں دی۔ انہوں نے کہا کہ اسلام صرف ایک ہے جو حضورﷺ نے ہمیں سکھایا۔اسلام فوبیا کی وجہ سے بعض ملکوں میں مسلم خواتین کا حجاب پہننا مشکل بنا دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کا کسی بھی مذہب کیساتھ کوئی تعلق نہیں۔ کچھ عالمی لیڈرز نے دہشتگردی کو اسلام سے جوڑا۔ ماضی میں خود کش حملوں اور اسلام کوجوڑا گیا۔ بنیاد پرست اسلام یا دہشتگرد اسلام کچھ نہیں ہوتا۔ لیکن بھی افسوس کی بات ہے بعض سربراہان اسلامی دہشتگردی اور بنیاد پرستی کے الفاظ استعمال کرتے ہیں۔کوئی مذہب بنیاد پرستی نہیں سکھاتا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ماضی میں حکومت نے روشن خیال اسلام کی اصطلاح استعمال کی۔ جبکہ مسلم لیڈرز نے ماضی میں اسلامو فوبیا کے بارے میں بات نہیں کی۔ عمران خان نے کہا کہ نائن الیون سے پہلے تامل ٹائیگرز نے بڑی دہشتگردی کی لیکن تامل ٹائیگرز ہندو تھے۔ اس کسی نے ہندوازم کو دہشتگردی سے نہیں جوڑا؟ عمران خان نے کہا کہ مغربی لوگوں کوسمجھ نہیں آتا کہ پیغمبرﷺکی توہین مسلمانوں کیلئے بہت بڑ ا مسئلہ ہے۔جب اسلام کی توہین پرمسلمانوں کاردعمل سامنے آتا ہے تو ہمیں انتہا پسند کہہ دیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسلام پہلا مذہب ہے جس نے غلامی ختم کی۔اور اقلیتوں کو برابر کے حقوق دیے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میرے خطاب کا چوتھا نکتہ اور یہاں آنے کا اہم مقصد مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بتانا ہے کہ وہاں کیا ہو رہا ہے۔2001ء کے بعد پاکستان نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں شمولیت اختیار کی۔میں نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کے شامل ہونے کی مخالفت کی تھی۔ جب ہم اقتدار میں آئے تو پہلی ترجیح تھی کہ پاکستان خطے میں امن لے کرآئے۔ پاکستان میں 70 ہزارافراد دہشتگردی کیخلاف جنگ میں جان کی بازی ہار چکے ہیں۔ جبکہ نائن الیون واقعے میں کوئی پاکستانی ملوث نہیں تھا۔ پھر بھی ہزار پاکستانی ایسی جنگ میں مارے گئے جن کا اس سے تعلق ہی نہیں تھا۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر بات سے پہلے میں واضح کرنا چاہتا ہوں کہ ہماری حکومت جنگ کیخلاف ہے۔ بھارت نے 80لاکھ کشمیریوں کو کرفیو لگا کر محصور کررکھا ہے۔ اقوام متحدہ سے درخواست کرتا ہوں کہ اپنا مشن بھیج کر چیک کرا لیں۔ انہوں نے کہا کہ پلوامہ واقعہ کرویا گیا۔ مودی کی الیکشن مہم میں کہا گیا کہ یہ ٹریلر ہے مووی ابھی باقی ہے۔ مودی آر ایس ایس کے رکن ہیں جو ہٹلر اور مسولینی کی پیروکار تنظیم ہے۔آر ایس ایس بھارت میں مسلمانوں کو ختم کرنے کیلئے ان کی نسل کشی پر یقین رکھتی ہے۔ آرایس ایس کی نفرت انگیز نظریے کی وجہ سے گاندھی کا قتل ہوا۔ کشمیری نوجوان خودکش حملہ آور کے والد نے کہا بھارتی مظالم کی وجہ سے بیٹا یہ کرنے پرمجبور ہوا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے مودی سے کہا ہمیں بھارت کی دہشتگردی کا سامنا ہے۔ مودی کو بتایا کہ ہمارے مشترکہ چیلنجز ہیں۔ہم حکومت میں آکر مذاکرات کی پیشکش کی لیکن بھارت نے مذاکرات کی پیشکش ٹھکرا دی گئی۔ کرکٹ پلیئر کی وجہ سے بھارت میں میری بہت فین فالوئنگ ہے۔ پاکستان نے تمام انتہا پسند گروپس ختم کر دیے ہیں۔ ہمیں پتا چلا بھارت پاکستان کوایف اے ٹی ایف کی بلیک لسٹ میں شامل کرنے کی سازش کررہا ہے۔بھارت نے سلامتی کونسل کی 11قراردادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی۔بھارت نے مقبوضہ وادی میں اضافی فوجی نفری تعینات کی۔ بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں کرفیو لگا کر80لاکھ افراد کو گھروں میں جانوروں کی طرح محصور کردیا ہے۔ اگر لاکھوں یہودیوں کو اس طرح محصور کیا جائے تو کیا ہوگا۔ مودی کی انا اور تکبر نے انہیں نابینا بنا دیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ اقوام متحدہ کا امتحان ہے کہ کشمیریوں کو ان کاحق خودداریت دلوایا جائے۔

Prime Minister of Pakistan Imran Khan Speech at 74th United Nations General Assembly Session

جنرل اسمبلی کے طویل خطاب سے چند اقتباساتبِسْمِ اللّٰہ ِالرَّحْمٰنِ الرَّحِیْماِيَّاكَ نَعۡبُدُ وَاِيَّاكَ نَسۡتعيۡنُشروعات موحولیات سے …. اس کے بعد منی لانڈرنگاسلامو فوبیا…. ڈیڑھ ارب مسلمان دنیا میں موجود ہیں…. نائن الیون کے بعد اسلاموفوبیا ایک خطرناک رحجان بن کر سامنے آیا ہے…. مسلمان تمام ترقی یافتہ ممالک میں رہتے ہیں… اور ان کیلئے خطرات پیدا ہو چکے ہی….. مسلمان عورتوں کیلئے حجاب لینا مشکل بنا دیا گیا….مغرب میں ایک عورت کو کپڑے اتارنے کی تو اجازت ہے…. لیکن حجاب کی نہیں…. اسلام کو دہشتگردی سے جوڑا جارہا ہے اور یہ غلط ہے….. اسلام صرف ایک ہے جو کہ حضرت محمد ﷺ لے کر آئے… انتہاپسند اسلام یا ماڈیریٹ اسلام کا کوئی تصور نہیں… اسلام صرف ایک ہے جو ہمارے دلوں میں ہے….دنیا کی تمام کمیونیٹیز میں ہر طرح کے لوگ پائے جاتےہیں…. انتہا پسند سے لے کر ماڈریٹ تک…. لیکن آپ اس وجہ سے عیسائیوں یا یہودیوں کو تو انتہاپسند نہیں کہتے…. تو پھر مسلمانوں کو انتہا پسند کیوں کہا جاتا ہے….دنیا میں سب سے زیادہ خودکش دھماکے مسلمانوں کی بجائے تامل ٹائیگرز نے کئے جو کہ ہندو ہیں…. آپ ہندوؤں کو تو دہشتگرد نہیں کہتے لیکن مسلمانوں کو کہتے ہیں….ہر دو تین سال بعد ہمارے نبی ﷺ کی توہین کی جاتی ہے…. اور جب ہمارا ردعمل آتا ہے… تو ہمیں انتہا پسند یا اسلام کو انتہاپسند کہنا شروع کردیا جاتا ہے…. یہ رحجان مغرب سے شروع ہوا ہے…. مغرب میں جان بوجھ کر ہمارے نبی ﷺ کی توہین کی جاتی ہے…. تاکہ ہمارے ردعمل کو جواز بنا کر اسلام کو نشانہ بنایا جاسکے….جو ویلفئیر کا ماڈل آج اقوام متحدہ پیش کرنے کی کوشش کررہا ہے….. اس سے کہیں بہتر ویلفئیر سٹیٹ ہمارے نبی ﷺ نے چودہ سو سال قبل مدینہ میں قائم کردی تھی…..ہمارا چوتھا خلیفہ راشد، اپنی خلافت کے دور میں ایک مقدمہ یہودی سے ہارگئے… انصاف کی اس سے بڑی مثال آپ ڈھونڈ کر دکھا دیں….اگر ہولوکاسٹ کا ذکر بھی کیا جائے تو یہودیوں کو تکلیف پہنچتی ہے….. ہم بھی صرف یہی چاہتے ہیں کہ ہمارے نبی ﷺ کی توہین مت کی جائے کیونکہ اس سے ہمیں تکلیف پہنچتی ہے….میری انڈیا میں فین فالوؤنگ ہے…. انڈیا میں مجھے پسند کیا جاتا ہے…. میں چاہتا تھا کہ بھارت سے تعلقات بہتر ہوں…… باوجود اس کے کہ ہم نے بھارتی دہشتگرد کلبھوشن یادیو کو پکڑا جو ہمارے ملک میں دہشتگردی کرتا تھا…. میں نے دوستی کا ہاتھ بڑھایا… بھارت نے ہماری سرحدوں پر اٹیک کردیا…ہ م نے ان کے دو طیارے مار گرائے… ان کا پائلٹ گرفتار کرلیا… پھر امن کی خاطر ہم نے پائلٹ واپس کردیا….میں آپ کو بتاتا ہوں کہ آر ایس ایس کیا ہے؟نریندر مودی اس کا لائف ٹائم ممبر ہے…آر ایس ایس ہٹلر کی پیروی میں قائم کی گئی جو کہ دوسرے مذاہب بالخصوص مسلمانوں کو اپنی سرزمین سے ختم کرنا چاہتی ہے… آر ایس ایس کا مقصد ہندو برتری قائم کرنا ہے اور مسلمانوں اور عیسائیوں کو ختم کرنا ہے… یہ سب کچھ گوگل پر موجود ہے…. آپ خود سرچ کرکے تصدیق کرسکتے ہیں……بھارت کی کانگریس پارٹی کی حکومت میں ان کے ہوم منسٹر نے رپورٹ جاری کرتے ہوئے بتایا کہ آر ایس ایس کے کیمپوں میں دو ہزار مسلمانوں کو ذبح کیا گیا…. مودی کی انہی حرکتوں کی بنیاد پر امریکہ میں اس کے داخلے پر پابندی لگا دی گئی تھی….بھارت نے تیس سال میں ایک لاکھ کشمیریوں کو شہید کیا…. اا ہزار عورتوں کو ریپ کیا…اب کرفیو لگا کر کنٹرول کرنے کی کوشش کررہا ہے … مودی کیا سمجھتا ہے… جب وہ کرفیو اٹھائے گا تو حالات نارمل رہیں گے؟کشمیر میں خون کا غسل ہوگا… کشمیری بدلہ لیں گے… تمہارا جینا مشکل کرکے رکھ دیں گے ….انڈیا میں ایک اور پلوامہ ہونے جارہا ہے… اور انڈیا ایک مرتبہ پھر ہم پر ہی الزام عائد کرے گا…. پھر اگر وہ جنگ شروع کرے گا تو ہم بھی جواب دیں گے… پھر وہی کچھ ہوگا جو اس سال فروری میں ہوا….ہالی ووڈ کی فلم آئی تھی جس کا نام تھا ڈیتھ وِش….. اس فلم میں ہیرو کو کچھ لوگ لوٹتے ہیں اور اسکی بیوی قتل کردیتے ہیں…. ہیرو کو انصاف نہیں ملتا تو وہ بندوق اٹھا کر سب کریمنلز کو مارنا شروع کردیتا ہے…. سینما میں بیٹھے لوگ کھڑے ہو کر اسے داد دینا شروع کردیتے ہیں….اگر یہی کچھ کشمیری بھی کریں تو پھر انہیں دہشتگرد مت کہیں، انہیں بھی ہیرو ہی کہنا ہوگا …اگر پاکستان پر جنگ مسلط کی گئی…. اور پاکستان جو کہ انڈیا سے سات گنا چھوٹا ملک ہے… اگر ایسا ہوتا ہے تو میرا یقین ہے لا الہ الا اللہ…یعنی اللہ کے سوا کوئی حاکم نہیں…. تو پھر ہم نیوکلئیر آپشن استعمال کریں گے….اقوام متحدہ کے پاس موقع ہے کچھ کرنے کا… نہ کیا تو پھر ہمیں کوئی کچھ نہ کہے….تھینکس یو…. اور حال تالیوں سے گونج اٹھا#PMIK #Pakistan 🇵🇰 #UnitedNations 🇺🇳 #UNGA #UNGA74 #ImranKhanVoiceOfKashmir

Gepostet von ‎مدنظر Mad-e-Nazar‎ am Freitag, 27. September 2019