’’ہم تو کشمیری بھی نہیں پھر بھی مجھے بھارتی پولیس حوس کا نشانہ کیو ں بناتی رہی؟ ‘‘ اسلام قبول کرنے کی خواہشمند بھارتی خاتون نے ساری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا

چنائی (ویب ڈیسک) بھارتی ریاست مدراس میں 27 سالہ خاتون ڈینٹسٹ کو پولیس نے اس وقت گرفتار کرلیا جب اس نے ہندو مذہب چھوڑ کر اسلام قبول کرنے کا فیصلہ کیا۔ کئی روز کے جبر کے بعد معاملہ عدالت پہنچا تو مدراس ہائیکورٹ نے لڑکی کو رہا کرنے کا حکم دے دیا اور قرار دیا کہ لڑکی بالغ ہے

اور اسے اپنی پسند کا مذہب اختیار کرنے کا حق حاصل ہے۔وکیل ٹی تمل ملار نے مدراس ہائیکورٹ میں لڑکی کی بازیابی کیلئے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اپنایا تھا کہ 27 سالہ ڈینٹسٹ لڑکی نے اسلام قبول کرنے کیلئے تامل ناڈو کی توحید جماعت سے رابطہ کیا تھا لیکن جب لڑکی کے والدین کو اس واقعے کا پتہ چلا تو انہوں نے اپنی بیٹی کو گھر میں قید کرلیا۔ لڑکی نے بڑی مشکل سے اپنے والدین کے چنگل سے نکل کر جماعت اہل قرآن و حدیث سوسائٹی سے رابطہ کیا اور اپنی جان کے تحفظ کا مطالبہ کیا۔وکیل نے اپنی درخواست میں الزام عائد کیا کہ 19 اگست کو لڑکی کے تحفظ کیلئے پولیس سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بجائے تحفظ فراہم کرنے کے الٹا لڑکی کو پکڑ کرنظر بند کردیا۔ وکیل نے بتایا کہ 21 اگست کو وہ اپنی موکلہ سے ملنے کیلئے گئے تو پولیس نے انہیں ملاقات کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔درخواست کی سماعت کے دوران عدالت نے حکم دیا کہ لڑکی کو فوری طور پر رہا کیا جائے۔ جسٹس ایم ستیہ نارائن اور جسٹس بی پوگلیندھی پر مشتمل بینچ نے قرار دیا کہ لڑکی بالغ ہے اور مذہب اختیارکرنا اس کا بنیادی حق ہے، یہ لڑکی کی مرضی ہے کہ وہ کون سا مذہب اختیار کرنا چاہتی ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا ہے کہ یقین ہے کہ مودی پاکستان پر حملہ نہیں کر سکتا ،اگرپاکستان پر حملہ ہواتو یہ آخری جنگ ہو گی ،جنگ ہوئی تو بھارت میں مندروں میں گھنٹیاں نہیں بجیں گی،جنگ ہوئی تو بھارت کی زمین پرگھاس اگے گی نہ چڑیاں چہکیں گی،مودی نے حملہ کیا تو منہ توڑجواب دیا جائے گا۔وزیر ریلوے شیخ رشید نے دھیر کوٹ میں ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کی سیاست مجھ سے زیادہ کوئی نہیں جانتا،سری نگر کی گلی گلی جانتا ہوں،جانتا ہوں مودی حملہ نہیں کرسکتا،ہٹلرمودی نے بہت بڑی غلطی کردی ہے،آج نہ لائن آف کنٹرول ہے اور نہ ہی شملہ معاہدہ،انہوں نے کہا کہ 11ماہ تک پاک فوج ایل او سی پر بھارتی فوج کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بیٹھی رہی،اللہ تعالیٰ نے کشمیر کوپاکستان سے ملانے کا فیصلہ کرلیا ہے،شیخ رشید نے کہا کہ اس مقام سے کشمیر کی آزادی کی تحریک کاآغاز ہوا،وقت بتائے گالال حویلی کارشتہ سری نگرکے لال چوک سے ہے،میرے آباوَاجدادکی قبریں کشمیرمیں شہداکے قبرستان میں ہیں،پاکستان کی جیت پر مقبوضہ کشمیر میں6کشمیری شہید ہوجاتے ہیں،پاکستان میں مسلم کانفرنس سے بڑھ کر ورکر کسی کے پاس نہیں تھا، وزیر ریلوے نے کہاکہ 72سال سے ہماری فوج آج کے دن کےلئے تیار ہوئی،72سال سے ہماری فوج آج کے دن کی منتظر تھی،پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں،کشمیر پرسلامتی کونسل کی قراردادتو ختم ہوچکی،آج نہ لائن آف کنٹرول ہے اور نہ ہی شملہ معاہدہ،ہماری نظراللہ کی مدد پرہونی چاہیے،ہمیں دھوکے میں نہیں آنا، ساری دنیا کا میڈیاہٹلر مودی کےخلاف ہوتا جارہا ہے،مقبوضہ کشمیر میں اشیائے خوردونوش ہے نہ ہی ادویات۔