ایک اور ملک نے کرونا وائرس کو شکست دے دی، 100 دنوں کے دوران ایک بھی کیس سامنے نہیں آیا

بنکاک(ویب ڈیسک) ایشیائی ملک تھائی لینڈ میں گزشتہ 100 دنوں کے دوران کروناوائرس کا ایک بھی کیس سامنے نہیں آیا، ملکی محکمہ صحت نے وبا سے متعلق تازہ رپورٹ شایع کردی۔ غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق تھائی لینڈ میں گزشتہ 100 روز کے دوران کرونا کے ایک بھی کیس

رپورٹ نہ ہونے کو وبا کے خلاف بڑی کامیابی قرار دی گئی اور ملک سے کرونا کا خاتمہ تصور کیا جارہا ہے۔ محکمہ صحت نے اپنی کرونا رپورٹ میں بتایا کہ رواں سال 26 مئی کے بعد سے تھائی لینڈ میں مہلک وائرس سے کوئی بھی شخص متاثر نہیں ہوا، کرونا ٹیسٹنگ کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ تھائی محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ خصوصی طور پر مسافروں پر کڑی نظر رکھی جارہی ہے، ملک میں داخل ہونے والے سیاحوں کو قرنطینہ کردیا جاتا ہے، اگر کوئی غیرملکی کرونا متاثر ہوا تو اس کی صحت یابی تک قرنطینہ سے نکلنے کی اجازت نہیں ہوتی، وبا کے خلاف کامیابی ملی ہے۔ خیال رہے کہ تھائی لینڈ کی طرح نیوزی لینڈ کو بھی کرونا کے خلاف بڑی کامیابی مل چکی ہے لیکن سو دنوں بعد نیوزی لینڈ میں بھی کرونا کے چند کیسز رپورٹ ہوئے تھے جس کے بعد یہ کہنا قبل از وقت ہوگا کہ کرونا مکمل طور پر ختم ہوگیا۔ تھائی لینڈ کے ایک سینئر عہدیدار نے غیر ملکی خبررساں ایجنسی کو بتایا کہ کرونا ویکسین کی چوہوں پر آزمائش کی گئی جس کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں اور توقع کی جا رہی ہے کہ اگلے سال تک کرونا وائرس کی ویکسین تیار کر لی جائے گی۔ کرونا وائرس کے حوالے سے بنائے گئے حکومتی سینٹر کے ترجمان تویسن وسانیوتین کے مطابق ویکسین کی چوہوں پر کامیاب آزمائش کے بعد اگلے ہفتے سے بندروں پر ایم آر این اے ویکسین کی آزمائش شروع کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ توقع ہے کہ تھائی ویکسین اگلے برس استعمال کی جائے گی۔ تھائی ویکسین نیشنل ویکسین انسٹیٹیوٹ، محکمہ میڈیکل سائنس اور چولا لون کورن یونیورسٹی کے ویکسین ریسرچ سینٹر کے ذریعے تیار کی جا رہی ہے۔