Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

سپین میں کس پاکستانی کو اور کیوں گرفتار کر لیا گیا؟ پوری قوم حیران

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )سپین پولیس نے کم تنخواہ دینے پر پاکستانی دکان مالک کو گرفتار کر لیا ۔ تفصیلات کے مطابق سپین نیشنل پولیس نے گزشتہ دنوں تراسا کی ایک سپر مارکیٹ میں دکان پر چھاپہ مارا جس کے بارے میں اطلاعات تھیں کہ وہ ہم وطنوں سے کام زیادہ جبکہ تنخواہ کم دیتا ہے ۔ سپین پولیس نے

پاکستانی دکاندار کو گرفتار کرلیا۔پولیس کے مطابق متاثرہ شخص ہفتے کے 7روز کام کرتا تھا جبکہ اسے ماہانہ تنخواہ 200سے 400یورو ملتی تھی ۔ سپین میں کام کرنے والا شخص غیر قانونی طور پر رہائش پذیر تھا ۔ جب پولیس نے دکان پر چھاپہ مارا تو ملازم نے صاف انکار کر دیا کہ وہ یہاں پر کام نہیں کرتا جبکہ وہ وہاں موجود تمام گاہکوں سے پیسے وصول کر رہا تھا ۔ متاثرہ شخص گزشتہ 9 ماہ سے سپر مارکیٹ میں کام کر رہا تھا ۔ عدالت نے گرفتار دکاندار کو بیان کے بعد رہاں کر دیا تھا ۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

میٹرو میں لڑکی نے لڑکے کی سرعام پٹائی کر دی!! وجہ چھیڑ چھاڑ نہیں بلکہ کیا نکلی؟

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کی میٹروٹرین میں ایک لڑکی نے اپنی معروف برانڈ ’زارا‘ کی شرٹ کو نقلی کہنے پر لڑکے کی پٹائی کر دی۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق مائیکروبلاگنگ پلیٹ فارم ٹوئٹر پر اس واقعے کی ایک ویڈیو پوسٹ کی گئی ہے جس میں لڑکے لڑکی کی گفتگو سے

ظاہر ہوتا ہے کہ شاید وہ باہم تعلق میں ہیں۔ لڑکی نے زارا کی ٹی شرٹ پہن رکھی ہوتی ہے جسے لڑکا نقلی کہہ دیتا ہے۔لڑکی کہتی ہے کہ ’میں نے 1ہزار روپے کی زارا سے لی ہے۔‘ تاہم لڑکا کہتا ہے کہ ’ڈیڑھ سو روپے والی لگ رہی ہے۔‘اس پر لڑکی غصے میں آ جاتی ہے اور اسے مکے اور گھونسے مارنے لگتی ہے۔ لڑکی نے ہاتھ میں کچھ شاپنگ بیگ اٹھا رکھے ہوتے ہیں، ان سے بھی لڑکے کو مارتی ہے۔درمیان میں ایک دوبار لڑکا بھی لڑکی کو تھپڑ رسید کر دیتا ہے ۔ لڑکی لڑکے سے ایک موقع پر کہتی ہے کہ ”تم گھر پہنچ لو، پھر دیکھتی ہوں تمہیں۔“یہ کہتے ہوئے 49سیکنڈ کی اس ویڈیو میں لڑکا لڑکی کا سٹیشن آ جاتا ہے اور دونوں ٹرین سے اتر جاتے ہیں۔دونوں کی یہ ویڈیو کسی ساتھی مسافر نے بنا کر پوسٹ کی جس پر ذیلی ٹویٹس میں لوگ بھانت بھانت کے جملے چست کر رہے ہیں۔ مانیا ورما نے لکھا ہے کہ ”سنگل رہیں، سیف رہیں۔“ راجن بروسلی نامی صارف نے لکھا ہے کہ ”جب لڑکا مارے تو قومی خبر اور جب لڑکی مارے تو انٹرٹینمنٹ۔“

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

مچھیروں نے نایاب نسل کی16 فٹ لمبی مچھلی پکڑ لی،مچھلی کی قیمت جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

چلی(ویب ڈیسک) جنوبی امریکا کے ملک چلی میں مچھیروں کے ایک گروپ نے 16 فٹ لمبی مچھلی پکڑی جس کی ویڈیو وائرل ہو رہی ہے۔ ویڈیو کلپ میں دیکھا جاسکتا ہے کہ لمبی سی مچھلی کانٹے میں پھنسی ہوئی ہے اور ملازمین اسے زمین پر منتقل کر رہے ہیں۔ ڈیلی اسٹار اخبار

کے مطابق اس مچھلی کا نام Oarfish ہے جو 5 میٹر سے زیادہ لمبی ہے۔ غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق یہ مچھلی سمندر کی گہرائیوں میں رہتی ہے اور اگر یہ سطح پر نظر آنا شروع ہوجائے تو اس کا مطلب ہوتا ہے کہ زمین کی ٹیکٹونک پلیٹیں اپنی جگہ تبدیل کر رہی ہیں۔ چلی کی مقامی روایت کے مطابق Oarfish طوفان اور زلزلے لاتی ہے، یہ مچھلی گہرے پانی میں رہتی ہے لیکن سطح پر صرف اس صورت میں نظر آتی ہے کہ جب یہ بیمار ہو، مر رہی ہو یا افزائش نسل کرنا ہو۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

100 بیگمات رکھنے والے بہاولپور کے نواب، جن کی بیویوں کو طلاق کے بعد بھی حرم سے نکلنے کی اجازت نہیں ہوتی تھی،مگر کیوں؟؟جانیے اس رپورٹ میں

بہاولپور(ویب ڈیسک) آج کے زمانے میں ایک سے زائد شادی کرنا آبیل مجھے مار کے مترادف ہے لیکن ایک وقت ایسا بھی تھا جب نہ صرف ایک سے زائد شادیوں کا رواج عام تھا بلکہ اس کی حوصلہ افزائی بھی کی جاتی تھی، عام لوگ ایک سے زائد شادیاں کرتے تھے لیکن بادشاہ سینکڑوں شادیاں بھی کرتے رہے ہیں،

آج ہم پاکستان کے ایک ایسے ہی شاہی خاندان کے بارے میں بات کریں گے جس کے بادشاہ کی ایک وقت میں 100 سے زائد بیگمات ہوتی تھیں اور ان بیگمات کو حرم سے نکلنے تک کی اجازت نہیں ہوتی تھی، یہ خواتین ساری زندگی حرم کی خوبصورت قید میں گزار دیتی تھیں۔ یہاں تک کہ شوہر سے علیحدگی یا بیوگی کی صورت میں بھی یہ باقی زندگی محل میں گزارا کرتی تھیں۔ یہ کہانی ہے ریاست بہاولپور کے شاہی خاندان کی جس کی بنیاد نواب صادق خان اول نے سنہ 1733 میں رکھی تھی۔ متحدہ ہندوستان کی خود مختار ریاست بہالپور کے حکمران خود کو نواب کہلاتے تھے، یہ ریاست تقسیمِ ہند کے بعد پانچ اکتوبر 1947 کو پاکستان میں ضم ہوگئی ، اس سے پہلے تک اس خطے پر 12 نوابوں نے حکومت کی۔ یہ ایک انتہائی خوش حال ریاست تھی جس کے محلات آج بھی لوگوں کو حیرت میں ڈال دیتے ہیں، بالخصوص بہاولپور میں موجود نور محل آج بھی دیکھنے کے قابل ہے، ہر سال لاکھوں لوگ یہ محل دیکھنے آتے ہیں۔ شاید یہ خوشحالی اور مال و دولت کی فراوانی ہی تھی کہ بہاولپور کے نواب بڑے بڑے حرم رکھتے تھے، سنہ 1866 سے 1899 تک اس ریاست پر حکومت کرنے والے نواب صادق خان رابع کے بارے میں مشہور ہے کہ ان کی 100 بیویاں تھیں، ان کے انتقال کے بعد ان کے صاحبزادے بہاول خان خامس ریاست کے نواب مقرر ہوئے تو انہوں نے اپنے والد کو بھی مات دے دی۔ بہاول خان کی بیویوں کی تعداد 100 سے بھی تجاوز کرگئی تھی،

ان میں سے چار خاندانی، دو اینگلو انڈین، ایک انگریز اور ایک عراقی خاتون تھیں۔ کہا جاتا ہے کہ ان کی ایک بیوی نچلی ذات کی ہندو ظہراں کٹانی تھی جس سے انہیں عشق ہو گیا تھا۔ اس سے ان کے دو بیٹے ہوئے تھے جو انہوں نے درگاہ خواجہ غلام فرید کی خدمت گزاری پر مامور کر دیے تھے۔ بڑے بڑے حرم رکھنے والے یہ نواب خواتین کے پردے کے معاملے میں انتہائی سخت مزاج واقع ہوئے تھے یہی وجہ تھی کہ حرم میں کسی پرندے کو بھی پر مارنے کی اجازت نہیں ہوتی تھی، حرم کی سیکیورٹی اتنی سخت ہوتی تھی کہ دہری فصیل قائم کی گئی تھی، یعنی حرم کے آگے ڈبل دیوار بنائی گئی تھی تاکہ کوئی بھی غیر شخص اندر داخل نہ ہوسکے۔ حرم کے اندر خدمت کیلئے کنیزوں کے ساتھ ساتھ خواجہ سرا بھی تعینات ہوتے تھے، حرم کے پردے کا یہ عالم تھا کہ نوابوں کے اپنے شہزادے بھی آٹھ سال کی عمر میں باہر منتقل کردیے جاتے تھے۔ حرم میں رہنے والی بیگمات کو سال میں صرف ایک بار میکے جانے کی اجازت دی جاتی اور وہ بھی انتہائی سخت سیکیورٹی کے ساتھ، ان کی گاڑیوں پر پردے ڈال دیے جاتے تاکہ راستے میں لوگوں کو پتا چل جائے کہ معزز خواتین آرہی ہیں اور وہ اس طرف سے منہ موڑ کر کھڑے ہوجائیں۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

مرغیوں کی آواز سے اضطراب نوٹ کرنے والا سافٹ ویئر متعارف کروا دیا گیا

ہانگ کانگ (ویب ڈیسک) ڈیپ لرننگ الگورتھم پولٹری فارم میں جانوروں کی بہتری اور نگہداشت میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے، مصنوعی ذہانت پروگرام کے ذریعے مرغیوں کی آوازوں میں اضطراب یا کسی مرض کا پتہ لگایا جا سکتا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق مذکورہ تحقیق سٹی یونیورسٹی آف ہانگ کانگ کے ایلمن مک ایلیگوٹ اور ان کے ساتھیوں نے کی ہے۔ تجارتی فارموں میں تنصیب کے بعد سافٹ ویئر ماڈل نہ صرف جانوروں کی صدا سنے گا بلکہ خود سے سیکھتے ہوئے اپنے آپ کو بہتر بناتا ہے۔ مصنوعی ذہانت پر مبنی پروگرام نہ صرف مرغیوں کی تکلیف میں کی گئی چیخ و پکار سنے گا بلکہ یہ بھی شمار کر ے گا کہ کس سمت سے کتنی مرغیاں کرب سے چیخ رہی ہیں۔ اس تحقیق کی وجہ مغربی ممالک میں جانوروں کے حقوق کی تنظیموں کی کوششوں سے پنجرے سے آزاد مرغیوں اور بطخوں والے فارم کی تحریک کامیاب ہو چکی ہے۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

امریکی ماہی گیر نے انتہائی نایاب نیلا لابسٹر پکڑ لیا

نیویارک (ویب ڈیسک) امریکی ماہی گیر نے انتہائی نایاب نیلے رنگ کا لابسٹر پکڑ لیا۔ غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاستہائے متحدہ میں ایک ماہی گیر لارس جوہن لارسن نے حال ہی میں ایک انتہائی نایاب نیلے رنگ کا لابسٹر پکڑا ہے، جو کہ 20 لاکھ میں سے ایک ایک ہوتا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر نیلے لابسٹر کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لارس جوہن لارسن نے لکھا کہ یہ نیلے رنگ کا لابسٹر کل پورٹ لینڈ کے ساحل سے پکڑا گیا تھا جبکہ پوسٹ نے انٹرنیٹ صارفین کو حیران کر دیا۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

پبلک ٹوائلٹ میں دروازہ نیچے سے خالی کیوں ہوتا ہے؟ حیران کن وجہ نے سب کو پریشان کر دیا

لاہور(ویب ڈیسک) آپ نے اکثر فلموں یا ڈراموں میں اکثر دیکھا ہوگا کہ کسی بھی پبلک ٹوئلٹ کے دروازوں کے نیچے سے جگہ خالی ہوتی ہے، یعنی دروازے پورے نہیں لگائے ہوتے، بلکہ آدھے دروازے لگائے جاتے ہیں جوکہ بھارتی فلموں اور بیرون ممالک میں ہوتے ہیں۔ دراصل اس خالی جگہ کو چھوڑے

کی کیا وجہ ہے؟وجہ:یہ جگہ اس لئے خالی چھوڑی جاتی ہے، تاکہ باتھ روم کے اندر موجود شخص کسی کو باہر سے گزرتا ہوا دیکھے تو اسے احساس ہو جائے کہ باہر موجود شخص کو بھی باتھ روم جانا ہے اور وہ اس وجہ سے جلد از جلد باتھ روم سے نکل جائے اور پبلک ٹوئلٹ، پبلک کے لئے زیادہ سے زیادہ استعمال میں آ سکے

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

دنیا کا سب سے بڑا تیرنے والا شہر کس ملک میں ہے؟

مالدیپ(ویب ڈیسک) مالدیپ کے دارالحکومت مالے میں دنیا کا سب سے بڑا تیرنے والا شہر ابھر رہا ہے۔ اس شہر میں 5 ہزار تعمیراتی یونٹس بشمول گھر، ریسٹورنٹس، دکانیں اور اسکول وغیرہ موجود ہوں گے۔ مالدیپ کی جانب سے اولین تعمیراتی یونٹس جون 2022 کے آخر تک متعارف کرائے جائیں گے

جبکہ 2024 میں وہاں لوگ رہنا شروع کریں گے۔ مالدیپ کا منصوبہ اب تک کا سب سے بڑا ہے یعنی 5 سال کے اندر 20 ہزار افراد کے شہر کی تعمیر جس کی مثال دنیا میں کہیں نہیں ملتی۔ اس شہر میں رہنے والے کہیں جانے کے لیے کشتیوں، سائیکل یا الیکٹرک اسکوٹرز کا سہارا لیں گے یا پیدل بھی گھوم سکتے ہیں۔ اس شہر میں ایک گھر کی قیمت ڈیڑھ لاکھ ڈالرز سے شروع ہوگی جبکہ یہ پورا شہر 2027 تک مکمل تعمیر کیا جائے گا۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

کیا آپ سال کے طویل ترین دن کے بارے میں یہ دلچسپ حقائق جانتے ہیں؟

لاہور(ویب ڈیسک) کیا آپ کو معلوم ہے کہ پاکستان سمیت شمالی نصف کرے میں آج سال کا طویل ترین دن اور مختصر ترین رات ہے؟ سال کے طویل ترین دن کو خط سرطان یا Summer Solstice کہا جاتا ہے اور مانا جاتا ہے کہ اس کے بعد موسم گرما کا حقیقی آغاز ہوتا ہے اور اس حوالے سے مختلف رسومات بھی ادا کی جاتی ہیں۔ خط سرطان سے مراد زمین کی وہ کیفیت ہے جب قطب شمالی سورج کی جانب جھکا ہوتا ہے اور سورج خط استوا سے سب سے زیادہ دور ہوتا ہے۔ اس کے نتیجے میں زمین پر شمالی نصف کرے میں سال کا طویل ترین دن (وہ دن جب سورج کی روشنی کا دورانیہ سب سے زیادہ ہوتا ہے) اور مختصر ترین رات ہوتی ہے۔ پاکستان میں سورج کی خط استوا سے سب سے زیادہ دوری کا وقت دوپہر 2 بج کر 14 منٹ ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ سال کا طویل ترین دن بدلتا رہتا ہے، جیسے 2023 تک 21 جون کو ایسا ہوگا مگر 2024 اور 2024 میں 22 جون طویل ترین دن ہوگا۔ 22 جون کے بعد دن کے دورانیے میں بتدریج کمی آنا شروع ہوگی اور دسمبر کے تیسرے عشرے میں شمالی نصف کرے میں سال کا مختصر ترین دن اور طویل ترین رات ہوگی۔ سال کے طویل ترین دن کے موقع پر پاکستان میں دن کا دورانیہ مقامات کے لحاظ سے 14 سے 15 گھنٹے کے درمیان ہوگا۔ دنیا میں سب سے طویل دن امریکی ریاست الاسکا کے وسطی حصے میں ہوگا جہاں دن کی روشنی کا دورانیہ 21 گھنٹے 41 منٹ تک ہوگا۔ اس کے مقابلے میں ایکواڈور کے دارالحکومت Quito میں لوگوں کو کوئی خاص فرق محسوس نہیں ہوگا کیونکہ دن کی روشنی میں محض 7 منٹ کا اضافہ ہوگا۔ دوسری جانب جنوبی نصف کرے میں آج سال کا مختصر ترین دن اور طویل ترین رات ہوگی اور وہاں موسم سرما کا باقاعدہ آغاز ہوگا۔ قطب جنوبی کے مرکزی مقام یعنی براعظم انٹار کٹیکا میں آج کل24 گھنٹے تاریکی کا راج ہے۔ جیسے یورپی ملک سوئیڈن میں اسے مڈ سمر کہا جاتا ہے اور ہمیشہ جمعے کو منایا جاتا ہے یعنی وہاں سال کا طویل ترین دن 24 جون کو قرار دیا جائے گا۔ اس موقع پر وہاں میلوں کا انعقاد ہوتا ہے۔ برطانیہ کے تاریخی مقام اسٹون ہینج میں بھی اس موقع پر لوگ جمع ہوتے ہیں اور مختلف سرگرمیوں کا حصہ بنتے ہیں۔ خط سرطان کو زرخیری سے بھی منسلک کیا جاتا ہے کیونکہ اس عرصے میں فصلوں کی کاشت میں اضافہ ہوتا ہے۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

سگریٹ نوشی پھیپڑوں ہی نہیں آنکھوں کے لیے بھی خطرناک ہے، طبی ماہرین نے خطرے کی گھنٹی بجا دی

لندن(ویب ڈیسک) دنیا بھر میں لاکھوں افراد سگریٹ نوشی کرتے ہیں یا ویپ اشیاء کا استعمال کرتے ہیں اور اس کے نتیجے میں ان کی بڑی تعداد صحت کے متعدد مسائل کا سامنا کرتی ہے۔ ایک اندازے کے مطابق دنیا میں 1.3 ارب لوگ سگریٹ نوشی کرتے ہیں اور بچھلے کچھ سالوں میں لوگوں میں سگریٹ نوشی

کے رجحان میں کمی آئی ہے جبکہ ویپنگ کا رجحان بڑھا ہے۔ مطالعوں میں یہ بات بتائی گئی ہے کہ ویپنگ سگریٹ نوشی سے کم نقصان دہ ہے لیکن کچھ ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ یہ اشیاء دماغ کو نقصان پہنچا سکتی ہیں۔ ان اشیاء کی تشہیر بچوں کو ان کی جانب راغب کرتی ہے اور ان کی صحت خطرے میں ڈالتی ہے۔ اکثر لوگوں کو یہ علم ہوتا ہے کہ تمباکو کی یہ اشیاء ہماری صحت کے لیے خطرناک ہوتی ہیں، جیسے کہ یہ ہمارے پھیپھڑوں یا گلے کے لیے مسائل پیدا کرتی ہیں۔ لیکن ایک ماہر نے خبردار کیا ہے کہ ان اشیاء کے ہماری آنکھوں پر بھی خطرناک اثرات ہوسکتے ہیں۔کانٹیکٹ لینس آپٹیشین سُجاتا پال کا کہنا ہے کہ کئی لوگ یہ نہیں سمجھتے کہ ان اشیاء کا ہماری نظر پر منفی اثر ہوسکتا ہے۔سُجاتا نے بتایا کہ سگریٹ نوشی آپ کی آنکھوں کے لیے سنجیدہ نوعیت کے مسائل میں اضافہ کر سکتی ہے اور ان مسائل میں بصارت سے مستقل محرومی، موتیا اور کالا موتیا شامل ہوسکتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ قلیل مدتی نظریے سے دیکھا جائے تو تمباکو نوشی ڈرائی آئی سِنڈروم کا سبب بھی ہوسکتا ہے جس کی وجہ سے آنکھوں میں خارش اور تکلیف ہوسکتی ہے۔ماہرِ چشم کا کہنا تھا کہ جہاں سگریٹ نوشی خطرناک ہے، وہیں ویپنگ بھی آنکھوں میں تکسیدی دباؤ کا سبب بن سکتی ہے۔ تکسیدی دباؤ تب ہوتا ہے جب آپ میں آکسیجن کی سطح غیر مساوی ہوجاتی ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ جسم میں کسی بھی جگہ کی طرح اضافی دباؤ ہماری صحت پر منفی اثرات مرتب کرسکتا ہے۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

حیران کن خبر! دوکروڑ سال پُرانے دیو ہیکل مگرمچھوں کی اقسام دریافت

نیروبی(ویب ڈیسک) محققین نے دیو ہیکل مگرمچھوں کی دو نئی اقسام دریافت کیں ہیں جو زمین پر 1 کروڑ 80 لاکھ سال قبل زندہ تھیں۔موجودہ مگرمچھ کی قسم بمشکل چار سے پانچ فِٹ لمبی ہوتی ہے لیکن دریافت ہونے مگرمچھوں کی اقسام کے حوالے سے خیال کیا جا رہا ہے کہ ان کی لمبائی 12 فِٹ تک تھی۔

امریکا کی یونیورسٹی آف آئیووا کے سائنس دان 2007 سے نیروبی میں میوزیم آف کینیا میں متعدد قدیم مگرمچھوں کی اقسام کا معائنہ کر رہے ہیں۔ تحقیق کے مصنف پروفیسر کرسٹوفر بروشو کا کہنا تھا کہ یہ وہ بڑے شکاری جانور ہیں جن سامنا ہمارے آبا و اجداد نے کیا۔ محققین کی جانب سے ان دونوں اقسام کی دریافت کا اعلان نے اس ماہ کے شروع میں جرنل انیٹمِکل ریکارڈ میں کیا۔پروفیسر بروشو نے بتایا کہ دریافت ہونے والی اقسام آج کے مگرمچھوں کی طرح موقع پرست شکاری تھی۔ قدیم انسانوں کے لیے دریا میں جھک کر پانی پینا انتہائی خطرناک ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ان کے جبڑے سے ایسا محسوس ہوتا تھا کہ وہ بڑی مسکراہٹ رکھتے ہیں لیکن اگر انہیں موقع ملتا تو آپ کا پورا چہرہ نوچ ڈالتے۔کِن یینگ قسم مشرقی افریقا کے وادی کے علاقے میں ابتدائی سے وسطی مائیوسین دور میں آباد ہوگی۔ یہ علاقہ آج کے دور کا کینیا ہے۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

اس تصویر میں کون سی مشہور شخصیت کا چہرہ چھپا ہے؟

لاہور(ویب ڈیسک) بصری یا تصویر میں چھپے دھوکے انسانی دماغ کو اچانک چوکنا کر کے اسے محنت کرنے پر اکساتے ہیں جس سے دماغ اپنی صلاحیتوں کو کام میں لاتا ہے۔ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ ہمارا دماغ ایک خاص ترتیب میں معلومات کو محفوظ کرتا ہے، جیسے ہمارے دماغ کو معلوم ہے

کہ بہت سارے درختوں کا مجموعہ جنگل کہلاتا ہے۔لیکن اگر اس ترتیب کو بدلا جائے اور نئے طریقے سے وہی چیز دماغ کے سامنے پیش کی جائے تو وہ اسے پہچاننے کے لیے نئے طریقے اپناتا ہے اور اسی سے ہمارے دماغ کی استعداد بڑھتی ہے۔آج ہم ایسی ہی دو تصویریں آپ کو دکھا رہے ہیں جن میں سے ایک تصویر میں ایک مشہور شخصیت، اور دوسری تصویر میں ایک جانور چھپا ہوا ہے۔سیاہ اور سفید دائروں اور لکیروں کے مجموعے پر مشتمل ان تصاویر میں چھپی شکلیں آپ کی جانی پہچانی ہیں، لیکن انہیں پہچاننے کے لیے آپ کے دماغ کو ذرا سی محنت کرنی ہوگی۔اگر نہیں، تو اس کا آسان طریقہ یہ ہے کہ اپنی اسکرین کو ذرا سا دور کرلیں، یا پھر آنکھوں کو ذرا سا بند کر کے ان تصاویر کو دیکھیں۔اب تو آپ کو پتہ چل ہی گیا ہوگا کہ پہلی تصویر میں معروف گلوکار مائیکل جیکسن، اور دوسری تصویر میں پانڈا چھپا ہوا ہے۔آپ نے کتنی دیر میں انہیں ڈھونڈ لیا تھا؟

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

60 ہزار کے سکے دے کر لاکھوں کی کار خرید لی

ممبئی (ویب ڈیسک)بھارت میں کار کا مالک بننے کے خواہشمند غریب شخص کی خواہش بالآخر پوری ہوگئی، 60 ہزار کے سکے جمع کرکے کار خرید ہی لی۔دنیا میں آنکھ کھولنے والا ہر انسان اپنی زندگی کو بہتر بنانے کیلیے خواہشات دل میں رکھتا ہے اور ان خواہشات کی تکمیل کے لیے جستجو کرتا بھی رہتا ہے،

کسی غریب کی خواہشات بھی محدود ہوتی ہیں ذاتی گھر بنانا یا چار پہیوں والی گاڑی کار خریدنا اس کی اولین خواہشات ہوتی ہیں۔بھارتی ریاست تامل ناڈو میں بھی ایک غریب شخص کار کا مالک بننے کا خواب دیکھتا تھا اور جب مطلوبہ رقم جمع ہوئی اور وہ کار خریدنے گیا تو شوروم مالک و عملہ رقم کے ساتھ 10 روپے والی سکوں کی بڑا اور بھاری تھیلا دیکھ کر حیران رہ گیا۔جی ہاں مذکورہ شخص نے کار خریدنے کیلیے اپنے روزمرہ کے اخراجات میں سے روپے اور سکے جمع کرنا شروع کیے اور بالآخر کار خریدنے کے قابل ہوا۔بھارتی میڈیا کے مطابق کار خریدنے والا شخص کار خریدنے دھرم پوری میں ایک کار شوروم پر گیا اور اس نے 6 لاکھ روپے مالیت کی کار پسند کرکے کار ڈیلر کو 5 لاکھ 40 ہزار روپے کرنسی نوٹ اور بقیہ 60 ہزار روپے 10 روپے مالیت کے سکوں کی صورت میں ادا کیے۔کار خریدار نے بتایا کہ اسکی والدہ ایک دکان چلاتی ہیں جہاں انہوں نے کئی مرتبہ سکوں کو کرنسی نوٹوں میں تبدیل کرنے کے لیے گاہکوں کو سکے دینے کی پیشکش کی لیکن کسی گاہک نے سکے قبول نہیں کیے، یہاں تک بینک والوں نے بھی یہ کہہ کر معذرت کرلی کہ انکے پاس سکے گننے کے لیے اتنے لوگ نہیں ہیں۔کار ڈیلر کے مطابق وہ بھی شروع میں سکے لینے سے ہچکچا رہا تھا لیکن پھر کار کے خریدار کے عزم کو دیکھتے ہوئے اس نے سکے لینے کا فیصلہ کیا اور سکے گننے کے بعد گاڑی دے دی۔ مذکورہ خریدار اپنے اہلخانہ کے ساتھ کار خریدنے شوروم آیا تھا اور جب وہ رقم ادا کرکے کار کا مالک بن گیا تو اس کی اور اہلخانہ کی خوشی دیدنی تھیاس موقع پر کار ڈیلر نے خصوصی طور پر کار کو ربن سے سجایا اور چابی حوالے کرتے وقت اس کے اہلخانہ کے ہمراہ ایک یادگاری تصویر بھی لی۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

آکاس بیل کے پودے سے زخم بھرنے والی گوند کی تیاری میں پیشرفت

مانٹریال(ویب ڈیسک) کاس بیل کی نسل کے پودے پر گوند بردار بیریوں میں موجود گوند کے متعلق انکشاف ہوا ہے کہ ان سے زخموں کو مندمل کرنے والا قدرتی مرہم بنایا جاسکتا ہے۔اس پودے کو مسلٹو کہا جاتا ہے جو درختوں پر بطور طفیلیہ (پیراسائٹ) پیدا ہوتے ہیں اور اس چھوٹے سفید بیر اگتے ہیں۔

اس کے پھول کرسمس آرائش پر بھی کام آتے ہیں لیکن بیریوں میں موجود خاص گوند ’وِسکِن‘ کے نئے خواص دریافت ہوئے ہیں۔جب پرندے یہ بیریاں کھاتے ہیں تو ان کے جسم پر بیج چپک جاتے ہیں جو مشکل سے ہی ہٹتے ہیں۔ اب مِک گِل یونیورسٹٰی کے پروفیسر میتھیو ہیرنگٹن نے جرمن ماہرین کے تعاون سے اس پر غور کیا تو اس میں باریک سہ ابعادی (تھری ڈائمینشنل) ساخت دکھائی دی۔ ماہرین نے اس کے ریشوں کو دھات، شیشے اور پلاسٹک پر لگایا تو وہ مضبوطی سے چپکے۔ پھرانکشاف ہوا کہ اگر اس گوند میں تھوڑٰی نمی بڑھائی جائے تو یہ پھیل جاتا ہے اور کمزورہوکر چپکنے کی صلاحیت کھودیتا ہے۔ ایک جانب تو اس کے چپکنے کی صلاحیت سامنے آئی تو دوسری جانب اس سے چھٹکارا پانے کا طریقہ بھی معلوم ہوا تو دوسری جانب یہ ہرطرح سے حیاتیاتی طور پر موزوں (بایو کمپیٹیبل) بھی ہے۔ اگلے مرحلے میں مسلٹو بیریوں کی گوند کو کچھ بدل کر جانوروں کے زخموں پر آزمایا گیا اور اس کی پتلی پرت کسی پٹی کی طرح زخم کے دونوں کناروں سے جڑگئی جس کے بہترین نتائج سامنے آئے ہیں۔ اگلے مرحلے میں اس پر مزید تحقیق کرکے اسے انسانوں پر آزمایا جائے گا۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

آسٹریلوی شہری نے 1 گھنٹے میں 3182 پش اپس لگاکر نیا عالمی ریکارڈ بنالیا

سڈنی(ویب ڈیسک) آسٹریلوی ایتھلیٹ نے ایک گھنٹے میں 3100 سے زائد پش اپس لگاکر دوسری مرتبہ عالمی ریکارڈ قائم کرلیا۔جسمانی کثرت کرنے والے افراد وزن اٹھانے سے قبل پش اپس لازمی لگاتے ہیں تاکہ جسم کو وارم اپ کیا جاسکے لیکن کچھ لوگ جسمانی طاقت اور مسلسل پریکٹس کی

بدولت اتنے ماہر ہوجاتے ہیں کہ لگاتار سیکڑوں پش اپس لگالیتے ہیں۔ایسے ہی ایک شخص سے متعلق آج اپنے قارئین کو بتارہے ہیں جنہوں نے ایک گھنٹے میں 3182 پش اپس لگاکر اپنا ہی عالمی ریکارڈ توڑا ہے۔ آسٹریلوی ایتھلیٹ ڈینئل اسکیلی گزشتہ بھی پش اپس لگانے کا ورلڈ ریکارڈ بناچکے ہیں، 2021 میں انہوں نے 3054 پش اپس ایک گھنٹے میں لگائی تھی۔اسکیلی نے گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ کو انٹرویو دیتے ہوئے بتایا کہ 12 برس کی عمر میں میرا بازو ٹوٹ گیا تھا جس کے بعد میں کمپلکس پین سینڈروم میں مبتلا ہوں یعنی متاثرہ حصّے مسلسل درد رہتا ہے۔انہوں نے بتایا کہ متاثرہ حصّے کو کئی ہلکا سا بھی چھو لے تو شدید درد اٹھتا ہے حتیٰ کہ ہوا اور پانی اگر بازو پر لگے تو بھی تکلیف کا احساس ہوتا ہے۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

مریخی پتھر پر تحقیق نے سیاروں کی تشکیل پر سوالات اٹھا دیے

فرانس(ویب ڈیسک) زمین تک پہنچنے والے ایک مریخی پتھر پر تحقیق سے خود مریخ کی تشکیل، ارتقا اور دیگر پتھریلے سیاروں کے متعلق مفروضہ نظریات پر سوال اٹھے ہیں۔ہمارے نظامِ شمسی میں سورج کے قریب موجود سیارے مثلاً عطارد، زہرہ، زمین اور مریخ قدرے پتھریلے اور ٹھوس ہیں جبکہ اس کے پیچھے والے سیارے

گیسوں پر مشتمل ہیں اور ان دونوں کے ارتقا کے اپنے اپنے مروجہ نظریات ہیں۔1815 میں فرانس سے ملنے والے ایک مریخی پتھر ’شیسینی شہابئے‘ پر ایک عرصے سے تحقیق جاری تھی تاہم اب نئی ٹیکنالوجی سے معلوم ہوا ہے کہ اگرچہ سیارہ مریخ 40 لاکھ سال میں تشکیل پا چکا تھا لیکن اس میں بعض گیسوں مثلاً کرپٹون کی موجودگی ایک معمہ ہے۔ دوسری جانب ہماری اپنی زمین پانچ سے دس کروڑ سال میں بنی تھی۔ ماہرین کے مطابق شیسینی پتھر ایک غیرمعمولی شہابیہ ہے۔ خیال ہے کہ مریخ سے ایک بڑی چٹان ٹکرائی تھی اور اس سے بہت گہرائی میں مریخی پتھر ٹوٹ کر زمین پر پہنچا تھا۔ اس سے قبل مریخ کے جتنے بھی شہابئے ہمیں ملے ہیں وہ اس کی اوپری سطح سے تعلق رکھتے تھے لیکن شیسنی قدرے گہرائی کا پتھر ہے کیونکہ اس کی کیمیائی ترکیب بہت مختلف ہے۔جامعہ کیلیفورنیا کے پروفیسر سیندرائن پائرن اور ان کے ساتھیوں نے کرپٹون 84 اور کرپٹون 86 کا باہم موازنہ کیا ہے۔ اس سے پتا چلا ہے کہ نظامِ شمسی کے اولین دور کے واقعات کو جس طرح مرحلہ وار بیان کیا جاتا ہے ان کا دورانیہ یا تو غلط ہے یا پھر کوئی خامی ہے۔ہمارے جوان سورج کے گرد گھومتے ہوئے گیسی نیبولہ کی طشتری سے ہی تمام سیارے تشکیل پائے تھے اور یہی وجہ ہے کہ اس کے آثار اب بھی پائے جاتے ہیں۔ لیکن تیزی سے اڑنے والی گیسوں کا معاملہ پیچیدہ ہوتا ہے جن میں آکسیجن، ہائیڈروجن اور دیگر نایاب گیسیں شامل ہیں، جو ابتدائی سیاروی تشکیل میں فرار ہوسکتی تھیں۔ اب اگر کسی سیارے کے پتھر سے نایاب گیس ملتی ہے تو دو باتیں ہوسکتی ہیں

یا تو گیس فرار ہونے سے بچ رہیں یا پھر وہاں دیگر شہابی پتھروں سے پہنچیں اور اب کس بات کو مانا جائے اور کسے رد کیا جائے؟چونکہ مریخ صرف 40 لاکھ برس میں تشکیل پا گیا تھا اور وہاں کرپٹون گیسوں کی موجودگی کا مطلب یہ ہے کہ مریخ نے نیبولہ مراحل کے دوران ہی اسے حاصل کیا تھا۔ اس سے خود مریخ کی تشکیل اور اس کے ادوار کی طوالت پر سوالات اٹھتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ اس تحقیق کو غیر معمولی قرار دیا جا رہا ہے۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

ترک شہری کے پیٹ سے متعدد سکوں سمیت 233 عجیب و غریب اشیاء برآمد

انقرہ (ویب ڈیسک) ڈاکٹروں نے ترک شہری کے پیٹ سے 233 سکے، بیٹریاں، شیشے کے ٹکڑے اور ناخن نکال لیے۔بین الاقوامی میڈیا کے مطابق یہ عجیب و غریب واقعہ ترکی کے شہر ایپی کیولو میں پیش آیا جہاں شدید تکلیف میں مبتلا مریض کی ایکسرے اور الٹرا ساؤنڈ رپورٹ سامنے آئی، جس میں مریض

کے پیٹ میں 233 سکے، بیٹریاں اور کئی دیگر چیزیں موجود تھیں۔ترک شہری برحان دومیر اپنے چھوٹے بھائی پیٹ میں شدید درد ہونے کی صورت میں اسپتال لیکر پہنچے تھے، جن کی میڈیکل رپورٹ دیکھ کر ڈاکٹر اور اہل خانہ دنگ رہ گئے۔ڈاکٹروں نے کئی گھنٹوں تک آپریشن کے بعد 35 سالہ شخص کے پیٹ سے 233 اشیاء نکالی ہیں جس میں 1 لیرا کے سکے، بیٹریاں، ناخن، مقناطیس، شیشے کے ٹکڑے، پتھر اور اسکرو شامل ہیں

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

چینی صدر کے والد کون ہیں؟ صدر شی جن پنگ کی اپنے والد سے محبت کی لازوال داستان

بیجنگ (نیوز ڈیسک)چینی صدر شی جن پھنگ اور ان کے والدشی چونگ شون کے درمیان محبت کی ایک زبردست کہانی ہے۔ شی جن پھنگ کے دفتر میں اْن کے اپنے خاندان کے ہمراہ مختلف ادوار میں لی گئی کئی تصاویر موجود ہیں۔ ایک تصویر میں شی جن پھنگ اپنے بوڑھے والد کواپنی اہلیہ اور بیٹی کے ہمراہ سیر کے لیے لے کر

جا رہے ہیں۔اتوار کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق شی جن پھنگ کی زندگی، کام اور دوسروں کے ساتھ برتاؤ میں ان کے والد شی چونگ شون کی تربیت کی گہری جھلک ملتی ہے ، جس کا ثبوت شی جن پھنگ کے اپنے والد کو لکھے گئے خط سے ملتا ہے۔ یہ 15 اکتوبر 2001 کو شی چونگ شون کی 88ویں سالگرہ تھی۔ اْس وقت شی جن پھنگ صوبہ فوجیان کے گورنر تھے اور اپنے مصروف شیڈول کی وجہ سے والد کی سالگرہ کی تقریب میں شریک نہ ہو سکے۔ اپنے خط میں انہوں نے والد کی درازی عمر کے لیے نیک تمنائیں ظاہر کرتے ہوئے اْن کے لیے اپنی دیرپا محبت کا اظہار کیا۔ شی جن پھنگ نے والد کی جانب سے وراثت میں ملے متعدد اوصاف کا خصوصی ذکر کیا اور کہا کہ آپ نے اپنی عظیم محبت کے جذبے سے بے شمار لوگوں کو متاثر کیا ہے۔ آپ نے خاموشی سے کام کرتے ہوئے اپنی پوری زندگی چینی عوام کی بہبود کے لیے وقف کر دی اور مجھے بھی عوام کی خدمت کرنے کی تحریک دی ہے۔ شی جن پھنگ نے اپنے خط میں والد صاحب کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ شی چونگ شون ایک “عوامی لیڈر ہے جو عوام سے نکلا ہے۔ وہ اکثر کہا کرتے تھے کہ ایک کسان کا بیٹا ہونے کے ناطے وہ ہمیشہ خود کو محنت کش طبقے کا رکن سمجھتے ہیں۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

دنیا کے سب سے بڑے ہوائی جہاز نے بلندی کا نیا ریکارڈ قائم کردیا

کیلیفورنیا(ویب ڈیسک) دنیا کے سب سے بڑے آزمائشی طیارے نے بلندی کا نیا ریکارڈ قائم کیا ہے، اس بار ساتویں آزمائشی پرواز میں ایک نئے نصب شدہ سہارے کی جانچ بھی تھی جسے انجن سے جوڑا گیا تھا۔ اس نئے پائلن یا سہارے سے جڑا ایک چھوٹا طیارہ چھوڑا جائے گا جو آواز سے پانچ گنا رفتار

پر اڑان بھرے گا تاہم یہ آزمائش اگلے مراحل میں کی جائے گی۔ اسٹریٹولانچ نامی اس جناتی مشین کو انسانوں کی بجائے راکٹ اور سیٹلائٹ کو اسٹریٹوسفیئر میں چھوڑنے میں استعمال کیا جائے گا۔ اس کی قوت کا اندازہ یوں لگائیے کہ اس میں بوئنگ کے چھ انجن نصب ہیں اور اسے ہائپرسونک چھوٹے طیاروں کو آگے بڑھانے کے لیے تیار کیا گیا ہے۔ اس کا پہلا ورژن 2020 میں سامنے آیا تھا جسے ٹیلون ون کا نام دیا گیا تھا جو فوری طور پر آواز سے تیزرفتار بار بار فلائٹس کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ یہ معمول کے رن وے سے اڑ اور اترسکتا ہے۔ اب اس میں ٹا او نام کا ایک چھوٹا طیارہ لگایا گیا ہے جس کا وزن 3600 کلوگرام اور لمبائی 14 فٹ ہے۔ اس طرح بڑا طیارہ چھوٹے طیارے کو چپکا کر ایک خاص بلندی اور رفتار تک جائے گا اور اس کے بعد وہاں سے چھوٹے طیارے کو لانچ کیا جائے گا۔ ساتویں آزمائشی پرواز میں اسے امریکا کے مشہور موحاوے صحرا سے اڑایا گیا اور وہ 8200 میٹر کی بلندی تک جاپہنچا۔

Categories
دلچسپ اور حیران کن معلومات

خاتون صداکار، جو چیخ کر روزگار کماتی ہیں

کیلی فورنی(ویب ڈیسک) آپ کو یہ جان کر حریت ہوگی کہ ہالی ووڈ کی ایک خاتون صرف چیخنے اور چلانے کا کام کرتی ہیں جس کے بدلے انہیں خطیر معاوضہ دیا جاتا۔ ان کی چیخوں کو ڈراؤنی اور سسپنس فلموں میں استعمال کیا جاتا ہے۔ایشلے پیلڈن کو ’چیختی فنکار‘ کہا جاتا ہے جو حساس مائیکروفون
کے سامنے روتی، پکارتی اور چیختی دکھائی دیتی ہیں۔ اس سے معلوم ہوتا ہے کہ جس طرح ایکشن مناظر اسٹنٹ فنکار کی مدد سے فلمائے جاتے ہیں عین اسی طرح آوازوں کے بھی اسٹنٹ صداکار ہوتے ہیں۔ایشلے کو خطرناک مناظر اور ڈراؤنی فلموں میں ہولناک واقعات کے صوتی ردِ عمل ظاہر کرنے کے لیے بلایا جاتا ہے۔ وہ سامنے چلتے ہوئے منظر کو دیکھ کر مختلف تاثرات کے ساتھ تیز آوازیں اور چیخیں بلند کرتی ہیں۔ پھر اس ریکارڈ شدہ چیخ و پکار کو فلم میں بڑی مہارت سے شامل کیا جاتا ہے اور پردہ سیمیں پر وہ فلمی صورتحال کو حقیقت سے قریب تر دکھاتی ہے۔ ’ میں ایک اسٹنٹ کی طرح کام کرتی ہوں جو اپنی صوتی حدود سے آگے ہوکر چیختی ہوں، یہاں تک کہ صوتی تار جھجھنا اٹھتے ہیں۔ اس طرح چیخنے سے آواز کو عارضی یا مستقل طور پر نقصان بھی ہوسکتا ہے۔ آواز میں معمولی تبدیلی بھی چیخ کا انداز بدل سکتی ہے،‘ ایشلے نے اخباری نمائیندوں کو بتایا۔ ’ میں ایک اسٹنٹ کی طرح کام کرتی ہوں جو اپنی صوتی حدود سے آگے ہوکر چیختی ہوں، یہاں تک کہ صوتی تار جھجھنا اٹھتے ہیں۔ اس طرح چیخنے سے آواز کو عارضی یا مستقل طور پر نقصان بھی ہوسکتا ہے۔ آواز میں معمولی تبدیلی بھی چیخ کا انداز بدل سکتی ہے،‘ ایشلے نے اخباری نمائیندوں کو بتایا۔