You are here
Home > حسن نثار

عالمی گاؤں کے ’’چوہدری‘‘ کی تبدیلی

کچھ عرصہ سے اِس دنیا کو ’’گلوبل ویلج‘‘ یعنی عالمی گائوں کہا جا رہا ہے جو چند مخصوص حوالوں سے بہت حد تک درست بھی ہے سو میں اِس ’’عالمی گائوں‘‘ کے باسیوں کو اپنے ’’مکھیا‘‘ یعنی چوہدری ڈونلڈ ٹرمپ سے نجات حاصل کرنے پر مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ آپ

مستقل حل کی تلاش

گستاخانہ خاکوں پر عوام سے لے کر سینٹ، اسمبلیوں تک اضطراب و احتجاج۔ مذمتی قراردادیں، دفتر خارجہ میں فرانسیسی سفیر کی طلبی، ارکان اسمبلی کا فرانس سے تعلقات ختم کرنے کا مطالبہ، فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ، OIC کا اجلاس بلانے کی تجویز، اسلاموفوبیا کے خلاف عالمی دن کا خیال و

سرکاری کرپشن تا غیر سرکاری کاروبار

جتنی چاہو ڈنڈ بیٹھکیں لگالو ۔جب تک ننگے، ناقابل تردید تضادات پر توجہ نہیں دو گے، یہ ملک بھمبل بھوسے اور دلدل سے نہیں نکلے گا۔صرف دو حماقتوں کی نشاندہی پر اکتفا کروں گا۔ پہلی یہ کہ کبھی اختیارات VSتنخواہوں پر غور کرو۔ایک ایس ایچ او کے اختیارات دیکھو پھر

سوہنی دھرتی

ذرا فون تو ملائو۔فون تو صبح سے ڈیڈ پڑا ہے۔اچھا لائٹ ہی جلا دو۔لوڈ شیڈنگ کا ٹائم ہے۔چلو چائے پیتے ہیں۔گیس بھی نہیں آ رہی۔شرم کرنی چاہیے۔وہ بھی نہیں آ رہی۔تو پھر آ کیا رہا ہے؟اگلا سال آ رہا ہے؟گھبرائو مت اگلا سال بھی پچھلے سالوں جیسا ہی ہو گا۔تمہارے

پاکستان کہاں ہوتا، یہ خود کہاں ہوتے؟

حکمت اور بصیرت کی انتہا ہیں یہ احکامات جن کا تعلق آخرت ہی نہیں زندگی کے ساتھ بھی بہت گہرا ہے۔ حکمرانوں کیلئے ملکی وسائل، پبلک منی اور خزانے سے ’’ذاتی دوری‘‘ میں نہ صرف قوم و ملک کی فلاح و بہبود، ترقی اور مضبوطی ہوتی ہے بلکہ حکمران خود

Top