امریکی کرنسی آپے سے باہر۔۔!! ڈالر کی قیمت میں بڑا اضافہ، روپے کی قدر میں کمی

کراچی (نیوز ڈیسک) روپے کی قدر میں کمی ، ڈالر کی قیمت میں 25 پیسے اضافہ ہو گیا ۔ تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں کاروباری ہفتے کے چوتھے روز روپے کی قدر میں کمی دیکھنے میں آئی جبکہ امریکی ڈالر 25 پیسہ مہنگا ہو گیا ۔ جس کے بعد ڈالر کی قیمت 160 روپے 30 پیسے ہو گئی ہے۔

گزشتہ تین روز سے ڈالر کی قیمت میں کمی ہوئی تھی ، تاہم کورونا وائرس سے پیدا ہونے والی صورتحال کو ڈالر کی قیمت میں اضافے کی وجہ قرار دیا جا رہا ہے۔اس سےقبل ایک ماہ کے دوران ڈالر کی قیمت میں 6 روپے سے زائد کی کمی ہوئی تھی ، گزشتہ ماہ اپریل کے دوران انٹر بینک مارکیٹ میں امریکی کرنی کی قدر میں مجموعی طور پر 6.53 روپے کی کمی ہوئی ۔ پاکستانی روپے کی قدر میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جبکہ غیر ملکی کرنسیوں کی قدر میں کمی ہوئی ۔6.53روپے کی کمی سےایک ماہ میں انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 166.70 سے گھٹ کر 160.17 روپے ہو گیا تھا ۔ڈالرکی قدر گھٹنے سے دیگر غیر ملکی کرنسیوں کی قیمت میں بھی کمی ہوئی۔ تاہم گزشتہ ایک ہفتے کے دوران روپے کے مقابلے ڈالر کی قدر میں اضافے کا رجحان دیکھا گیا۔ فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کی ہفتہ وار رپورٹ کے مطابق گذشتہ ایک ہفتے کے دوران مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ روپے کے مقابلے ڈالر1.50رو پے مہنگا ہو گیا جس سے ڈالر کی قیمت خرید 158.50روپے سے بڑھ کر159.50روپے اور قیمت فروخت 159روپے سے بڑھ کر160.50روپے ہو گئی۔ تاہم آج ڈالر مزید سستا ہوا اور 51 پیسے کمی کے بعد 40۔159 پر ٹریڈ کر رہا ہے ۔ تاہم اب کورونا کے باعث ڈالر کی قیمت میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور ڈالر مزید 25 پیسے مہنگا ہو گیا ہے۔دوسری جانب امریکہ کی جانب سے احساس کیش پروگرام کے تحت 50 لاکھ ڈالر ( تقریباً 80 کرو ڑ روپے )کی امداد مہیا کی جا رہی ہے اور اس کا اعلان سفیر نے کیا۔پاکستان میں امریکا کے سفیر پال جانز نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہاہے کہ پاکستان اور امریکا مل کر کورونا وائرس کو شکست دیں گے۔ دونوں ممالک کی شراکت داری وائرس کی روک تھام کے لیے پاکستان کی کوششوں کو مستحکم بنا رہی ہے۔ امریکا کی جانب سے احساس کیش پروگرام کے تحت 50 لاکھ ڈالر کی امداد مہیا کی جا رہی ہے۔ان کا کہنا تھاکہ یونیسف کے تعاون سے پچاس اداروں کو آلات کی فراہمی کا اعلان کرتا ہوں۔ وبا کی روک تھام کے مشترکہ اقدامات کے لیے ڈیڑھ کروڑ ڈالر دینے کا اعلان کیا ہے جس میں سے 25 لاکھ ڈالرامریکی عوام نے فراہم کیے ہیں۔بچوں کے لیے 336 میٹرک ٹن تیار شدہ خوراک مہیا کر یں گے۔ معاشی طور پر کمزور افراد کو محفوظ بنا رہے ہیں.پناہ گزینوں اور مقامی لوگوں کو معاونت فراہم کی جائے گی.