پاکستانی کرنسی کی تگڑی واپسی۔۔۔!!!روپے نے ڈالر کو پچھاڑ دیا، ایک ہی روز میں امریکی کرنسی کی قیمت میں بڑی کمی واقع ہوگئی

کراچی (نیوز ڈیسک) ڈالر کی قیمت بڑھنے کے بعد دوبارہ کم ہونا شروع ہوگئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق آج اوپن مارکیٹ میں ڈالر 10پیسے سستا ہوگیا جبکہ انٹربینک مارکیٹ میں ڈالرکی قیمت میں8پیسے کی کمی ہوگئی ہے۔ فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق بدھ کوانٹربینک مارکیٹ میں روپے کے

مقابلے میں امریکی ڈالرکی قیمت میں8پیسے کی کمی ریکارڈ کی گئی ،جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید155.50روپے سے گھٹ کر155.42روپے اورقیمت فروخت155.60روپے سے گھٹ کر155.52روپے ہوگئی۔اوپن مارکیٹ میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید155.20روپے اورقیمت فروخت155.50روپے پرمستحکم رہی ۔یوروکی قیمت میں20پیسی کی کمی جبکہ برطانوی پائونڈ کی قیمت میں50پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا،جس کے نتیجے میں باالترتیب یوروکی قیمت خرید170.50روپے سے گھٹ کر170.30روپے اورقیمت فروخت172.00روپے سے گھٹ کر171.80روپے جبکہ برطانوی پائونڈکی قیمت خرید198.50روپے سے بڑھ کر199.00روپے اورقیمت فروخت 200.00روپے سے بڑھ کر200.50روپے ہوگئی۔فاریکس رپورٹ کے مطابق سعودی ریال کی قیمت خریدمیںاستحکام اورقیمت فروخت میں5پیسے کمی جبکہ یواے ای درہم کی قیمت خریدمیںبھی استحکام اورفروخت میں5پیسے کی کمی ریکارڈ کی گئی،جس کے نتیجے میں باالترتیب سعودی ریال کی قیمت خرید41.20روپے پرمستحکم اورقیمت فروخت41.50روپے سے گھٹ کر41.45روپے جبکہ یواے ای درہم کی قیمت خرید42.20روپے پرمستحکم اورقیمت فروخت42.50روپے سے گھٹ کر42.45روپے ہوگئی ۔بدھ کوچینی یوآن کی قیمت میں استحکام رہا،جس کے نتیجے میں چینی یوآن کی قیمت خرید21.80روپے اور قیمت فروخت23.00روپے پرمستحکم رہی۔گزشتہ روز انٹربینک مارکیٹ میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالرکی قیمت میں مزید5پیسے کا اضافہ ہوا تھا جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میںاستحکام رہا تھا۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان سٹاک مارکیٹ میں رواں ہفتے کے تیسرے کاروباری روز زبردست تیزی دیکھنے کو ملی، 8 ماہ بعد 37 ہزار کی نفسیاتی حد بحال ہو گئی۔ کاروباری حجم رواں برس کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا، کاروباری حجم 10 ارب 75 کروڑ روپے ریکارڈ کیا گیا سٹاک مارکیٹ میں رواں ہفتے کے دوران دوسری مرتبہ تیزی دیکھنے کو ملی، 100 انڈیکس میں 401.40 پوائنٹس کی تیزی دیکھی گئی، تیزی کے باعث کاروبار میں 1.08 فیصد بہتری دیکھی گئی۔یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے میں ٹریڈنگ کے دوران زبردست تیزی دیکھی گئی، اسی کا تسلسل رواں ہفتے کے پہلے روز بھی دیکھا گیا، پہلے کاروباری روز انڈیکس 824.94 پوائنٹس بڑھ گیا تھا ، تاہم دوسرے روز غیر یقینی سیاسی حالات کے باعث انڈیکس 37.54 پوائنٹس گر گیا تھا۔آج کاروبار کے دوران شروع سے ہی تیزی ریکارڈ کی گئی، تیزی کے باعث 30 اپریل 2019ء کے بعد 37 ہزار کی حد بحال ہوئی، کاروباری حجم رواں برس کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا، کاروباری حجم 10 ارب 75 کروڑ روپے ریکارڈ کیا گیا۔ایک موقع پر ٹریڈنگ کے دوران پاکستان سٹاک مارکیٹ کا 100 انڈیکس 37200 کی حد بھی عبور کر گیا تھا تاہم یہ تسلسل برقرار نہ رہ سکا اور آج کاروبار کے اختتام پر حصص مارکیٹ کا 100 انڈیکس 401.40 پوائنٹس کی تیزی کے بعد 37166.96 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ کر بند ہوا۔معاشی ماہرین کے مطابق پاکستان سٹاک مارکیٹ میں تیزی کی سب سے بڑی وجہ عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کی طرف سے قسط کی بحالی، شرح سود میں متوقع کمی اور ملک میں چھائے غیر یقینی سیاسی حالات کے بادل چھٹنے کے باعث سرمایہ کار ٹریڈنگ میں زبردست دلچسپی لے رہے ہیں۔ قوی امکان ہے کہ یہی تیزی آئندہ دو روز تک بھی برقرار رہے۔