ملکی تاریخ میں پہلی بار ڈالر سستا ہوتے ہی اسٹاک مارکیٹ کریش کر گئی، سرمایہ کار سر پکڑ کر بیٹھ گئے،120 ارب روپے کا نقصان

کراچی (نیوز ڈیسک) اسٹاک مارکیٹ 4 سال 4 ماہ کی کم ترین سطح پر پہنچ گئی جبکہ کاروبار کے اختتام پر انٹربینک میں ڈالر کی قیمت میں 40 پیسے کمی واقع ہوئی ہے جس کے بعد ڈالر 158 روپے 25 پیسے پر بند ہو گیاہے جبکہ دوسر ی جانب اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر کی قدر میں20 پیسے

کمی واقع ہوئی ہے جس کے بعد ڈالر 158 روپے 60 پیسے پر فروخت ہو رہاہے ۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ اسٹاک ایکسچینج میں 723 پوائنٹ سکی کمی دیکھنے میں آئی ہے۔ 100 انڈیکس 30ہزار 277 پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا تھا۔سرمایہ کاروں کے 120 ارب روپے سے زائد ڈوب گئے ہیں۔انڈیکس میں 2.2 فیصد گراوٹ ریکارڈ کی گئی۔اس سے قبل اسد عمر کا وزارت خزانہ چھوڑنے کا فیصلہ سامنے آتے ہی اسٹاک ایکسچینج کریش کر گئی تھی۔وزیر خزانہ اسد عمر کے استعفے کی خبر کے بعد اسٹاک مارکیٹ میں مزید مندی دیکھنے میں آئی تھی۔کاروبار کے دوران 100 انڈیکس میں 320پوائنٹس کی کمی ہوئی تھی۔100 انڈیکس 36ہزار 450 کی سطح سے نیچے آ گیا تھا۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروباری ہفتے کے پہلے روز پیرکواتارچڑھاؤ کے بعد مندی رہی اورکے ایس ای100انڈیکس31600 ،31500،31400،31300اور31200پوائنٹس کی نفسیاتی حدوں سے بھی گرگیا،مندی کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کے 65ارب74کروڑ روپے سے زائدڈوب گئے ،کاروباری حجم گذشتہ روزکی نسبت11.95فیصدزائدجبکہ72.29فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔پیرکوکاروبار کا آغاز ملے جلے رجحان سے ہوا کشمیر کے حوالے سے پاک بھارت کشیدگی،فروخت کے دبائو اور پرافٹ ٹیکنگ کے سبب مقامی سرمایہ کار گروپ تذبذب کا شکار نظرآئے اور اپنے حصص فروخت کرنے کوترجیح دی جس کے نتیجے میں مارکیٹ میں مندی کے بادل چھاگئے اورکے ایس ای100انڈیکس دوران ٹریڈنگ30900پوائنٹس کی نچلی سطح پر بھی دیکھا گیاتاہم ملکی کرنسی مارکیٹوں میں ڈالر کی قدر بڑھنے کے سبب غیرملکی سرمایہ کاروں نے سرمایہ کاری کی ، جس کے نتیجے میں مارکیٹ میں ریکوری آئی اور کے ایس ای100انڈیکس کی 31100کی حد بحال ہوگئی ہوگئی تاہم اتارچڑھائو کا سلسلہ سارادن جاری رہا۔مارکیٹ کے اختتام پرکے ایس ای100انڈیکس 485.61پوائنٹس کمی سی31180.80پوائنٹس پر بندہوا۔پیرکومجموعی طورپر314کمپنیوں کے حصص کا کاروبارہوا،جن میں سی66کمپنیوں کے حصص کے بھاؤمیں اضافہ،227کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں کمی جبکہ21کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔سرمایہ کاری مالیت میں65ارب74کروڑ 15لاکھ99ہزار659روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت گھٹ کر62کھرب79ارب22کروڑ97لاکھ95ہزار754روپے ہوگئی۔