خان صاحب : خدارا اپنے انتخاب پر یوٹرن لے لو اور اپنے بغیر دانتوں والے ٹائیگر سے ہماری جان چھڑاؤ ۔۔۔۔ عثمان بزدار کے طوفانی دورہ ساہیوال اور خصوصی میڈیا ٹاک کے بعد سوشل میڈیا صارفین نے بڑا مطالبہ کر ڈالا

لاہور (ویب ڈیسک) سانحہ ساہیوال کو کئی گھنٹے گزر چکے تھے ، سی ٹی ڈی کے ہاتھوں بے جرم مارے جانیوالے لاہور کے بدقسمت خاندان کے پوسٹ مارٹم مکمل ہو چکے تھے ، لواحقین اپنے پیاروں کی لاشیں وصول کرنے کے لیے ہسپتال کے دورازوں پر ٹکریں مار رہے تھے ، اسی اثنا میں شور بلند ہوا ،
عمران خان کا خصوصی انتخاب ، بلوچوں کی شان ، پنجاب کا مان وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار تشریف لا رہے ہیں ، ویسا ہی پروٹوکول ، آگے پیچھے کمانڈوؤں کا گھیرا اور وہی شان و شوکت اور بے نیازی جو سابقہ حکمرانوں کا خاصہ رہی ہے ، خیر موصوف بڑی عجلت میں ہسپتال میں داخل بچے کے سر پر جا پہنچے اور فخریہ اعلان کیا بیٹا آپ میرے بچے ہو بالکل فکر نہ کرو اب آپ سرکار بے کار پنجاب کے ذمہ ہو ، جو ہونا تھا ہو گیا ، آپ کو پالنے ، پڑھانے لکھانے اور نوکری دلانے کی ذمہ داری اسی بیکار حکومت کی ہو گی ، زخمی اور دکھ سے سکتے میں آئے بچے کو اپنے جملوں سے مالا مال کرکے سیدھے میڈیا کے سامنے جا کھڑے ہوئے ، اس حال میں کہ فرط جذبات سے جناب وزیراعلیٰ کی آواز نہیں نکل رہی تھے ، جب پیچھے کھڑے لوگوں نے شاید دلاسے کے طور پر پشت پر ہاتھ پھیرا تو گویا بزبان پرچی فوراً بولے ، ہم نے ایک جے آئی ٹی تشکیل دے دی ہے ،جو سارے معاملے کا پتہ چلائے گی ، قاتلوں کو ہم پورا موقع دیں گے ،مقتولین کے بچے ہمارے اپنے بچے ہیں ، اور ہم اس کیس کی خود نگرانی کریں گے ۔ اور میڈیا ٹاک ختم ۔۔۔۔۔۔۔
ان چند جملوں میں سب سے اہم بات لفظ ہم تھا جس پر سب سے زیادہ زور دیا گیا اور جسکے ذریعے عمران خان کے خصوصی انتخاب عثمان بزدار نے اپنے جملوں کو وزنی اور پر اثر بنانے کی ناکام کوشش کی ۔ صاف پتہ چل رہا تھا کہ میانوالی سے ساہیوال کے زبردستی صادر کیے گئے دورے میں دوران سفر یہ پرچی انکے کسی مہربان نے انہیں تھمائی کہ جناب بزدار صاحب پریشان نہ ہوں آپ کو اور کچھ نہیں کرنا ، صرف اس پرچی پر لکھے جملے میڈیا کے سامنے کھڑے ہو کر کہہ دیجیے گا ، البتہ وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کی اس فراست کی داد دینا پڑے گی کہ انہوں نے صحیح جملے صحیح لوگوں کے سامنے ادا کیے ورنہ اگر وہ زخمی بچے کی عیادت کے دوران کہے گئے جملے میڈیا کے سامنے کہہ دیتے اور میڈیا کے لیے مخصوص جملے بچے کے سامنے ادا کردیتے تو کیا مذاق اڑتا ، اسکا تصور آپ سب بخوبی کر سکتے ہیں ۔ عثمان بزدار کے ساہیوال کے اس بامقصد دورے اور خصوصی میڈیا ٹاک کے بعد پاکستانی عوام صرف اس سوچ میں غرق ہیں کہ آخر عمران خان کی نگاہ کرم عثمان بزدار پر کس خوبی کی وجہ سے جا کر ٹھہر گئی ؟ آخر انہیں کس مقصد کے لیے وزیر اعلیٰ پنجاب بنایا گیا ؟ کیوں ؟ کیوں ؟ آخر کیوں ؟ (ش س م)