اچھا تو یہ بات تھی : پٹرول کی قیمت میں 25 روپے کا اچانک اضافہ خود عمران خان نے کیوں کیا ؟ اس دن انہیں کون بلیک میل کر رہا تھا ؟ ارشاد بھٹی نے اندر کی بڑی خبر دے دی

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار ارشاد بھٹی اپنے ایک کالم میں انکشاف کرتے ہیں ۔۔۔۔تیل مہنگا کرتے وقت محبوب وزیراعظم نے اوگرا تک سے مشورہ نہ کیا، یہ بتا دوں جب آئل مہنگا کیا جا رہا تھا تب کراچی کیماڑی ٹرمینل پر 3 کمپنیوں اور پورٹ قاسم پر ایک کمپنی کے پاس مجموعی طور

پر 80ہزار میٹرک ٹن تیل موجود تھا اور ان کمپنیوں نے پٹرول پمپوں کو تیل کی سپلائی روک رکھی تھی۔یہ بھی ذہنوں میں رہے کہ تیل کی قیمتیں بڑھانے سے 3سو ارب کا فائدہ ہوا آئل کمپنیوں کو، 3سو ارب نکل گئے عوام کی جیب سے، مطلب جن آئل کمپنیوں کو ساڑھے 6کروڑ جرمانے کئے گئے، یہی کمپنیاں اربوں کما گئیں۔یہ بھی سنتے جائیے، پٹرول 74روپے 52پیسے فی لیٹر تھا، تب فی لیٹر ٹیکس 41روپے، جس میں 30روپے لیوی، 14روپے 55پیسے جی ایس ٹی، 2روپے 44پیسے کسٹم ڈیوٹی، پھر فی لیٹر پٹرول خرچہ 9روپے 70پیسے، اب قیمت 100روپے فی لیٹر، ٹیکس 44روپے 55پیسے، خرچہ 9روپے 70پیسے، مطلب پٹرول کی baseپرائس ہوئی 45روپے 75پیسے یعنی baseپرائس 90فیصد بڑھ گئی۔اب عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہوا 17فیصد، لیکن ہمارے ہاں baseپرائس بڑھی 90فیصد، سب فائدہ پہنچا آئل کمپنیوں کو، خیر اس لڑائی کا نتیجہ نکلا، محبوب وزیراعظم ہارگیا، تیل مافیا جیت گیا۔اب 22ماہ بعد زمینی حقائق یہ، میر امحبوب وزیراعظم چینی مافیا سے لڑا، چینی 55روپے فی کلو سے 85روپے فی کلو تک جا پہنچی، محبوب وزیراعظم آٹا مافیا سے لڑا، آٹے کا 6سوکا تھیلا 11سو روپے کا ہوا، محبوب وزیراعظم پٹرول مافیا سے لڑا، پٹرول 74روپے فی لیٹر سے 100روپے فی لیٹر ہوگیا، محبوب وزیراعظم ادویات مافیا سے لڑا۔ادویات کی قیمتوں میں 2سو سے 4سو فیصد اضافہ ہوگیا، محبوب وزیراعظم بجلی مافیا سے لڑا، بجلی کی قیمت ہزاروں گنا بڑھ گئی، محبوب وزیراعظم گیس مافیا سے لڑا، گیس کی قیمتیں آسمان کو چھورہیں، محبوب وزیراعظم ڈالر مافیا سے لڑا، ڈالر 122سے 165روپے تک جا پہنچا، محبوب وزیراعظم گاڈ فادروں، سسلین مافیا سے لڑا، سب چھوٹ گئے، محبوب وزیراعظم کورونا سے لڑا، کورونا گھر گھر پہنچ گیا۔محبوب وزیراعظم ٹڈی دل سے لڑا، ٹڈی دل 50سے زیادہ ضلعوں میں تباہی مچا چکی، محبوب وزیراعظم معاشی محاذ پر لڑا، معیشت کا جو حال، وہ سب کے سامنے، یہ ہے محبوب وزیراعظم کی 22ماہ کی مافیا سے لڑائیاں، نتیجہ آپ کے سامنے، فیصلہ آپ کا، لیکن اس وقت جب تبدیلی سرکار تبدیلی قصے، مائنس ون فارمولا کہانیاں عروج، جب محبوب وزیراعظم کہہ چکا ’’کرسی نہیں اللہ پھر بھروسہ، میں مائنس بھی ہو گیا تب بھی کسی مافیا کو نو این آر او‘‘ تب یہ ضرور کہنا، کاش محبوب وزیراعظم 22ماہ ضائع نہ کرتے۔