بریکنگ نیوز: لاہور: وکلاء کا گڑھ سمجھی جانیوالی عمارت میں خوفناک آگ بھڑک اٹھی ، تشویشناک اطلاعات

لاہور (ویب ڈیسک) پنجاب بار کونسل میں آگ لگ گئی۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب بار کونسل میں آگ لگ گئی ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق آگ پنجاب بار کونسل کی بیسمنٹ میں لگی ہیں۔ آگ لگنے کے بعد عمارت کو خالی کرایا جا رہا ہے جب کہ ریسکیو 1122 کی ٹیمیں تاحال نہیں پہنچیں۔

عمارت میں آگ لگنے کی وجہ تاحال سامنے نہیں آئی۔واضح رہے کہ گذشتہ روز پی آئی سی میں پیش آئے واقعے کے بعد : پنجاب بار کونسل نے آج صوبہ بھر میں ہڑتال کا اعلان کیا تھا۔یا ہے۔ پنجاب بار کونسل کا کہنا ہے کہ پنجاب بھر کے وکلا حضرات جمعرات کے روز عدالتوں کا مکمل بائیکاٹ کریں گے اور واقعے کے خلاف احتجاجی ریلیاں لکالیں گے ۔ پنجاب بار کونسل نے واقعے پر کل ہنگامی اجلاس بھی طلب کیا ہے جس میں موجودہ صورتحال اور آئندہ کا لائحہ عمل طے ہو گا۔ بار کونسل کے مطابق وکلا ڈاکٹرز کے رویے کے خلاف پرامن احتجاج کے لیے پی آئی سی پہنچے تھے لیکن پرامن وکلا کو پولیس اور ڈاکٹرز کی جانب سے تشدد کا نشانہ بنایا گیاتھا۔ پنجاب بار کونسل کے رہنماؤں نے کہاتھا کہ پولیس اور ڈاکٹروں کے تشدد سے کئی وکلا زخمی ہوئے جبکہ وکلا پر کیے جانے والے تشدد اور آنسو گیس شیلنگ کی مذمت کرتے ہیں۔ یاد رہے کہ فاقی وزیر قانون راجہ بشارت نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھاکہ قانون ہاتھ میں لینے کی جو روایت شروع ہوئی ہے اسے ختم کیا جائیگا۔ انکا کہنا تھا کہ ہنگامہ آرائی میں ملوث کچھ افراد کی شناخت کی جا چکی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جو لوگ ذمہ دار ہیں ان کے خلاف بھر پور کاروائی کی جائیگی، وزیرا علیٰ نے واضع پیغام دیا ہے کہ ملزمان کے خلاف سخت کاروائی کی جائیگی۔انکامزید کہنا تھا کہ یاسمین راشد اور فیاض الحسن چوہان نہ ہوتے تو زیادہ نقصان کا خدشہ تھا۔ یاد رہے کہ پی آئی سی واقعے پر ینگ کنسلٹنٹس ایسوسی ایشن پاکستان اور ینگ ڈاکٹرز نے مشترکہ طور پر کل بروز ( جمعرات ) کو صوبے بھر میں ہڑتال کا اعلان کردیا تھا۔