بریکنگ نیوز: شریفوں کا ایک اور پلان بے نقاب ۔۔۔۔ جیل کی دیواروں سے نکلنے کے لیے نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کس طرح سے کم کیے گئے ؟ تہلکہ خیز حقیقت منظر عام پر

لاہور (ویب ڈیسک) نیب کے ترجمان کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کے پلیٹ لیٹس ڈاکٹر عدنان کی دواؤں کی وجہ سے کم ہوئے ہیں۔ ترجمان نیب نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کم ہوئے تھے لیکن اب ان کی حالت خطرے سے باہر اور بہتر ہے،

نواز شریف کا ڈینگی ٹیسٹ نیگیٹو آیا ہے۔ ترجمان نیب نے کہا کہ ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کی دواؤں کی وجہ سے نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کم ہوئے، ڈاکٹر عدنان میاں نواز شریف کے ساتھ پیر کے روز تین گھنٹے سے زائد وقت تک موجود رہے اور انہوں نے ہی خون پتلا کرنے والی ادویات تجویز کی تھیں۔ خیال رہے کہ نواز شریف ہسپتال منتقلی کے لئے رضامند نہیں تھے لیکن شہباز شریف کے اصرار پر ہسپتال منتقل ہونے کے لئے رضا مند ہوگئے ۔ دنیا نیوز کے مطابق ترجمان نیب نے بتایا کہ نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان تین گھنٹے سے ان کے ساتھ تھے ۔ پلیٹ لیٹس کم ہونے کے باوجود نواز شریف ہسپتال منتقل نہیں ہونا چاہتے تھے ۔ نواز شریف کی طبیعت خرابی پر شہباز شریف کی درخواست پر ان کو نواز شریف سے ملاقات کی اجازت دی گئی جس پر شہباز شریف نے نواز شریف کو ہسپتال منتقلی کیلئے اصرار کیا ۔ شہباز شریف کے اصرار پر نواز شریف ہسپتال منتقلی کے لئے روانہ ہوئے ۔ یاد رہے کہ نواز شریف کے معالج ڈاکٹر عدنان کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم کی پلیٹ لیٹس کی رپورٹ غیر تسلی بخش آئی ہے۔ نواز شریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹ آنے کے بعد نیب نے انہیں فوری بنیادوں پر علاج کیلئے ہسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کیا۔ بتایا گیا ہے کہ نیب نے نواز شریف کو لاہور کے سروسز ہسپتال میں علاج کیلئے منتقل کر دیا ہے۔سروسز ہسپتال میں نواز شریف کے مزید ٹیسٹ کیے جائیں گے۔ نواز شریف کے لئے تشکیل دیے گئے میڈیکل بورڈ کے ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم کے پلیٹ لیٹس کاونٹس کی کمی کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں۔