بریکنگ نیوز: او آئی سی نے کشمیر کے حوالے سے بڑا اعلان کردیا ، کشمیر کو تر نوالہ سمجھنے والے مودی جی کے خواب چکنا چور کر دینے والی خبر

جدہ(ویب ڈیسک) اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی ) نے مقبوضہ کشمیر کی بگڑتی صورتحال پر فریقین کو مذاکرات سے مسئلہ حل کرنے کی تجویز دے دی ۔ مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورت حال اور بھارتی اقدام کے حوالے سے اسلامی تعاون تنظیم کانٹیکٹ گروپ کا ہنگامی اجلاس جدہ میں ہوا۔ اجلاس سے خطاب میں

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں مزید فورس کی تعیناتی، تعلیمی اداروں کی بندش اور ایمرجنسی کا نفاذ بھارت کے ارادوں کا پتہ دیتے ہیں۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ بھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کا تعین کرنے والے آرٹیکل 370 اور 35 اے کا خاتمہ بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں کئے گئے اقدامات جنوبی ایشیا میں امن و امان کی مخدوش صورتحال کو مزید خراب کرنے کے مترادف ہے۔ مقبوضہ کشمیر کی بگڑتی صورتحال پر او آئی سی نے اپنے تحفظات کا اظہار کیا انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی مذمت کی جبکہ او آئی سی نے اس معاملے پر فریقین کو مذاکرات کر نے کی بھی تجویز دی ۔اجلاس میں پاکستان، سعودی عرب، آذربائیجان، ترکی اور دیگر رکن ممالک کے مندوبین نے شرکت کی۔دیگر مسلم ممالک کے مندو بین نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا اور کشمیر یوں کے حق خود ارادیت کو سپورٹ کیا ۔ یاد رہے کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو سعودی عرب سے واپس بلالیا گیا،شاہ محمود قریشی او آئی سی اجلاس سے متعلق بریفنگ دیں گے ۔تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی فریضہ حج کی ادائیگی کیلئے سعودی عرب میں ہیں جہاں انہوں نے گزشتہ روز او آئی سی اجلاس میں شرکت کی ،وزیر خارجہ نے او آئی سی اجلاس میں بھارتی اقدامات سے متعلق شرکا کو بریف کیا، نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ حکومت نے وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی کو ہنگامی طور پر سعودی عرب سے واپس بلا لیا گیا، شاہ محمود قریشی وطن واپسی پر او آئی سی اجلاس سے متعلق بریفنگ دیں گے ۔