نواز شریف ، زرداری ، اسحاق ڈار ، مریم اور فضل الرحمٰن سب ڈرائی کلین ہونے والے ہیں ۔۔۔۔عمران خان نے پاکستانیوں کو اندر کی خبر دے دی

اسلا م آباد(ویب ڈیسک)تحریک انصاف کے چیئر مین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ وزیراعظم ہائوس کی آڈیولیک ہونا بڑا حفاظتی بریچ ہے، ہماری ایجنسیز کو کسی سے تو پوچھنا ہو گا، کون ذمہ دار ہے، ہماری انٹیلی جنس ایجنسیز لوگوں کو سوشل میڈیا پر وارننگز دے رہی ہیں‘

Almarah Advertisement

انٹیلی جنس ایجنسیوں کا کام سیاسی انجینئرنگ نہیں ملک کا تحفظ ہے‘ ایک صحافی نے تو آڈیو لیکس کے بارے میں پہلےہی بتا دیا تھا‘ جس نے بھی ہمیں ٹیپ کیا تھا اس نے یہ پہلے نکال دی تھی‘میرے گھر کی سکیورلائن سے بشریٰ بیگم کسی کوکال کررہی تھیں وہ بھی لیک کی گئی تھی‘وزیراعظم آفس کی سکیور لائن کی خلاف ورزی ہوئی ہے ۔ہم نے آخری اجلاس میں سائفر کو ڈی کلاسیفائی کردیا تھا ‘اب اس پر کچھ نہیں ہوسکتا ۔پیر کو ایک انٹرویومیںسابق وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان کا قانون وائٹ کالر کرائم پکڑ ہی نہیں سکتا، لندن کے سب سے مہنگے علاقے میں شریف فیملی کے چار فلیٹس ہیں، نواز شریف آج تک منی ٹریل نہیں دے سکے‘شریفوں سے اس لیے نہیں ملتا کیوں کہ یہ چورہیں‘نیب ترمیم کر کے بڑے چوروں کو لائسنس دے دیا گیا ہے، نواز شریف ، زرداری، مریم، اسحاق ڈارسب ڈرائی کلین ہوجائیں گے، کسی معاشرے میں ایسے چوری کرنے کا لائسنس ملتے نہیں دیکھا۔ شہباز شریف کے خلاف 16 ارب کا کیس معاف کرالیا ہے، پہلے دن سے کہہ رہا تھا این آر او نہیں دونگا ۔سابق وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا انسانوں کا سمندر باہر نکلنے والا ہے، یہ بات خفیہ رکھی ہوئی ہے، ہماری ہربات لیک ہو جاتی ہے، ہمارے فون ٹیپ ہو رہے ہیں، ایسے لگ رہا ہے جیسے میں کوئی غدار ہوں ہر چیز میری ٹیپ ہو رہی ہے جو ہماری پلاننگ ہے وہ ان کو نہیں پتا۔عمران خان نے مزیدکہاکہ اسحاق ڈار اعداد و شمار میں ہیر پھیر کرتا تھا‘اب ڈار پھر واپس آ گیا ہے۔