مبینہ آڈیو لیک میں عمران خان بار بار سائفر بھیجنے والے ملک کا نام لینے سے کیوں منع کرتے رہے؟ سلیم صافی کا بڑا دعویٰ

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) معروف صحافی سلیم صافی سے جیو نیوز کے پروگرام میں سوال کیا گیا کہ آخر کیوں عمران خان مبینہ کال کے دوران بار بار سائفر بھیجنے والے ملک کا نام لینے سے منع کرتے رہے، دوسری طرف وہ جلسوں میں کھل کر پکارتے رہے، معروف صحافی نے جواب میں کہا کہ

Almarah Advertisement

عمران خان مبینہ آڈیو لیک میں بار بار اپنے ساتھیوں کو اس لئے سائفر بھیجنے والے ملک کا منع کرتے رہے کیوں کہ وہ امریکی نیو کونس سے منسلک ہیں اور دوسری طرف وہ امریکہ سے ڈرتے بھی ہیں۔دوسری جانب امریکی سائفر وزیراعظم ہاؤس سے غائب ہے البتہ اس کی اصل وزارت خارجہ کے دفتر میں موجود ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق وفاقی کابینہ نے اجلاس میں وزیر اعظم ہاوس سے غائب ہونے والی سائفر کی کاپی کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے اور میٹنگ کے دوران یہ بھی انکشاف ہوا کہ سائفر کی کاپی وزیراعظم ہاؤس کے ریکارڈ سے غائب ہوگئی ہے۔اجلاس میں کابینہ اراکین کو دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ وزیراعظم ہاؤس میں سائفر موصول ہوا مگر پھر وہ کہیں غائب ہوگیا۔ذرائع کے مطابق سائفر کی کاپی اس وقت کے پرنسپل سیکرٹری اعظم خان نے وصول کی تھی اور قانون کے مطابق اس مراسلے کو وزیر اعظم ہاؤس کے ریکارڈ کا حصہ ہونا چاہیے تھا۔ذرائع کے مطابق سائفرکی اصل کاپی دفتر خارجہ میں موجود اور ریکارڈ کا حصہ ہے۔