آڈیو لیکس پر ہنگامہ لیکن یہ دراصل کب سے ڈارک ویب پر موجود ہیں؟ فواد چودھری نے تہلکہ خیز دعویٰ کردیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک انصاف نے آڈیو لیکس کی جامع تحقیقات کا مطالبہ کر دیا۔فواد چوہدری نے دعویٰ کیا ہے کہ ڈارک ویب یو فائل ڈاٹ آئی او پر وزیراعظم کی تقریباً140گھنٹے کی گفتگو 20اگست سے فروخت پر لگی ہوئی ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ہیکر نے اس گفتگو کی 3لاکھ 45ہزار ڈالر کی بولی لگائی تھی۔ جب ڈارک ویب پر گفتگو فروخت نہیں ہوئی تو ہیکر نے ٹوئٹر اکاﺅنٹ بنا کر اس گفتگو کی چند جھلکیاں ریلیز کر دیں۔ ڈیلی ڈان کے مطابق تحریک انصاف کے رہنماءفواد چوہدری نے کہا ہے کہ آڈیو لیک ہوئے کئی دن گزر گئے ہیں اور وزیراعظم آفس کی طرف سے تاحال کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا۔ حیرت کی بات ہے کہ 140گھنٹے کی آڈیو لیک ہو گئی اور پاکستان کے کسی ادارے کو کچھ معلوم ہی نہیں ہے۔ پاکستان کو انٹرنیشنل سکیورٹی بحران کا سامنا ہے۔ وزیراعظم کا دفتر بھی سائبر سکیورٹی کے لحاظ سے اتنا کمزور ہے کہ کوئی بھی گفتگو لیک ہو سکتی ہے۔فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ہیکرز نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کے پاس پاکستان کے سکیورٹی اداروں کے درمیان اور سربراہان کے درمیان ہونے والی گفتگو بھی ہے۔ خدشہ ہے کہ ان کی گفتگو بھی لیک ہو سکتی ہے۔ انہوں نے حکومت سے آڈیو لیک اور وزیراعظم آفس کی سکیورٹی پر تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس میں ملوث عناصر کو سامنے لانا چاہیے اور آئندہ کے لیے جدید ڈی بگنگ سسٹم لاگو کیا جانا چاہیے۔

Almarah Advertisement