مریم نواز کی پاسپورٹ واپسی کی درخواست !!!(ن)لیگ کو ایک اور بڑا جھٹکا لگ گیا

لاہور(نیوز ڈیسک)لاہور ہائیکورٹ کے جج نے مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز کا پاسپورٹ واپس کرنے کی درخواست پر سماعت سے معذرت کر لی۔لاہور ہائیکورٹ میں مریم نواز کی پاسپورٹ واپسی کی درخواست پر سماعت جسٹس علی باقر نجفی اور جسٹس انوارالحق پنوں پر مشتمل بینچ نے کی۔دو رکنی بینچ کے جسٹس انوارالحق پنوں

Almarah Advertisement

نے مریم نواز کا کیس سننے سے معذرت کر لی۔جسٹس انواز الحق پنوں کی جانب سے کیس سننے سے معذرت کے بعد مریم نواز کی درخواست چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کو بھجوادی گئی۔یاد رہے کہ رمضان شوگر ملز کیس میں عدالت نے مریم نواز کا پاسپورٹ ضبط کرنے کا حکم دیا تھا جس کے خلاف مریم نواز نے عدالت سے رجوع کرتے ہوئے کہا تھا کہ جب والدہ بستر مرگ پر تھیں تو اس وقت بھی وطن واپس آگئی تھی، عمرے کی ادائیگی کے لیے پاسپورٹ واپس کیا جائے۔دوسری جانب خاتون جج زیبا چوہدری کو دھمکیاں دینے پر توہین عدالت کیس میں عمران خان نے نئی درخواست اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر کر دی۔عمران خان کی جانب سے اسلام آباد ہائیکورٹ میں تحریری دلائل جمع کرانے کی متفرق درخواست دائر کی گئی ہے۔چیئرمین پی ٹی آئی کی جانب سے دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ سو موٹو ہائیکورٹ کا اختیار نہیں ہے، توہین عدالت کیس ناقابل سماعت ہونے پر دلائل کو ریکارڈ پر رکھا جائے۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ تحریری دلائل کی وضاحت سماعت میں زبانی دلائل میں بھی کی جائیں گی۔یاد رہے کہ خاتون جج کو دھمکیاں دینے سے متعلق کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان کی جانب سے جمع کرائے گئے معافی نامے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انہیں ایک اور موقع فراہم کیا تھا۔عمران خان کی جانب سے گزشتہ روز دوبارہ تحریری جواب عدالت میں جمع کرایا گیا تھا تاہم چیئرمین پی ٹی آئی کی جانب سے دوبارہ جمع کرائے گئے جواب میں بھی معافی کا ذکر نہیں کیا گیا بلکہ اپنے بیان پر صرف افسوس کا اظہار کیا گیا تھا۔