شہباز گل کا فوجی عدالت میں ٹرائل اور 30 سال قید بامشقت ۔۔۔۔۔کپتان کے کزن حفیظ اللہ نیازی نے خوفناک بات کہہ ڈالی

لاہور (ویب ڈیسک) اصلی اور نسلی ‘‘مائی کے لال’’ کی ایک تاریخ ہے، بھولتا ہے اور نہ ہی معاف کرتا ہے،ہے کوئی مائی کا لال جو عمران خان کو ہاتھ بھی لگا سکے(فواد چوہدری)۔ظاہر ہے اشارہ شہبازشریف کی طرف ہرگز نہیں۔ وزیراعظم تو ‘‘مائی’’کی گڈری نہیں پھر‘‘مائی کالال’’ کون؟سب کچھ معلوم۔

Almarah Advertisement

نامور کالم نگار حفیظ اللہ نیازی اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔فواد چوہدری کا اشارہ جس ’’مائی کے لال’’ کی طرف، گونگے کی رمزیں کوئی اور سمجھے نہ سمجھے، گونگے کی ماں نہ سمجھے، یہ کیسے ممکن ہے۔ عمران خان کا کوئی اور بطلِ حریت سامنے آیا تو شہباز گل کی مثال میں ایک سبق ، مائی غیض و غضب میں اور لال تو اس وقت لال بھبوکا۔چوہدری فواد کی محتاط زباں اب مزید گْل کھلانے کو نہ ہی گِل کھِلانے کو۔ تحریک انصاف کا احتیاطی واویلا شروع، عمران خان بظاہر اکیلا، چوہدری پرویز الٰہی نے بلا توقف وبلا تکلف علیحدگی کا اعلان اور شہباز گل کی مذمت کر کے، شہباز گِل کے خلاف کیس کو مزید مضبوط بنا دیا ہے۔ مونس الٰہی کی ناپختگی، گرفتاری کی خبرملتے ہی اعلان ، ’’پنجاب پولیس کی بنی گالہ کی طرف پیش قدمی جاری ہے‘‘، لفظ‘‘ پیش قدمی’’ لڑائی کا سماں پیدا کرنے کو تھا کہ جہاندیدہ باپ کی شہباز گل سے بروقت لاتعلقی اور پرزور الفاظ میں مذمت نے نقصان کا ازالہ کیا۔ کیا عمران خان کو بھی پارٹی سے ایسی ہی توقع رکھنی ہو گی ؟ بالا خراکیلے تن تنہا نپٹنا ہو گا۔قرین از قیاس کہ شہبازگِل کا ٹرائل فوجی عدالتوں میں یعنی کورٹ مارشل یعنی کہ 30 سال قید با مشقت ،بقیہ زندگی بھارتی جاسوسوں کی بیرک میں۔ اللہ تعالیٰ گِل صاحب کو لمبی عمر دے، انشاء اللہ پچھلی عمر میں آزاد پاکستان نصیب بنے گا۔